Bismillah

618

۲۷صفرتا۳ربیع الاول۱۴۳۸ھ   بمطابق ۱۷تا۲۳نومبر۲۰۱۷ء

حقوق الوالدین(قسط۱۰)

حقوق الوالدین(قسط۱۰)

شفیق الرحمن

(شمارہ 617)

(۱)… وہ شخص جو غیر اللہ کے لئے ذبح کرے… یعنی جس طرح اللہ کی خوشنودی کے لیے قربانی کرتے ہیں یا حج میں جانور ذبح کرتے ہیں، اسی طرح بت یا قبر یا پیر فقیر کے نام پر ذبح کرنا تاکہ وہ خوش ہو، یہ لعنت والا عمل اور شرکِ جلی ہے۔

(۲)… ایسے شخص پر لعنت بھیجی جو زمین کی نشانی چرالے… ’’صحیح مسلم‘‘ میں لفظ’’ غَیَّرَ‘‘ بھی وارد ہوا ہے یعنی اللہ تعالیٰ اس پر لعنت کرے جو زمین کی نشانی کو بدل دے… یہ کام زیادہ تر دیہاتی کاشت کا ر کیاکرتے ہیں، کھیتوں کے درمیان جو مینڈھ بنادی جاتی ہے اس کوکاٹ کر دوسرے کاکھیت اپنے کھیت میں ملانے کی کوشش کرتے ہیں اورکھیتوں اور زمینوں کے درمیان فاصلہ قائم کرنے کے لیے جو نشانیاں مقرر کردی جاتی ہیں ان کو چرا کر ضائع کر دیتے ہیں، یا ان کی جگہ سے ہٹا دیتے ہیں، تاکہ پتہ نہ چلے کہ کس کی زمین کہاں تک ہے، پھر مواقع پاکر راتوں رات دوسرے کی زمین اپنی زمین میں ملا لیتے ہیں، کاشت کی زمینوں کے علاوہ شہری اور سکنائی جائیدادوں میں خورد بُرد کرنے کے لیے غلط نقشے بنوا کر پاس کر لینا، پٹواری کو کچھ کو دے کر دوسرے کی زمین اپنے نام کروا لینا، یہ سب اسی لعنت کے کام میں شامل ہے۔

(۳)… اس پر لعنت کی جو والدین پر لعنت کرے، اس کا مطلب بالکل واضح ہے، جہاں’’اف‘‘ کہنے کی کنجائش نہ ہو وہاں گالی دینے اور لعنت کرنے کی کہاں اجازت ہو سکتی ہے، بہت سے بے پڑھے بلکہ پڑھے لکھے مہذب لوگ اس گناہ عظیم میں مبتلاء ہوتے ہیں۔

’’درمنثور‘‘ جلد چہارم صفحہ: ۱۷۵میں بھی یہ حدیث’’ مستدرک حاکم‘‘ کے حوالے سے نقل کی گئی ہے، اس میں یہ الفاظ ہیں کہ

’’لعن اللہ العاق لوالدیہ۔‘‘

’’یعنی جو اپنے ماں باپ کو ستائے اللہ اس پر لعنت کرے۔‘‘

(۴)… اس پر لعنت فرمائی جو کسی ایسے شخص کو پناہ دے جس نے دین اسلام میں کوئی نئی بات اپنے پاس سے نکالی ہو۔

جو چیز اپنے پاس سے تجویزکرکے دینِ اسلام میں داخل کی جائے اسے بدعت کہتے ہیں…  بدعت اعتقادی بھی ہوتی ہے اور عملی بھی، دونون قسم کی بدعت شریعتِ اسلامیہ میں مردود ہے… جو شخص کسی شخص کو ٹھکانا دے جس نے بدعت ایجاد کی ہو اس پر اس لیے لعنت کی کہ وہ بدعتی کا مدد گار بن رہا ہے اور بدعت کو تقویت پہنچارہا ہے۔

حضرت علی رضی اللہ عنہ نے یہ جو فرمایا: کہ ہم کو کسی ایسی چیز کے ساتھ حضور اقدس صلی اللہ علیہ والہ و سلم نے مخصوص نہیں فرمایا: جو دوسروں کو نہ بتائی ہو سوائے چند چیزوں کے، یہ ان کے اپنے علم کے مطابق ہے، ورنہ وہ چند چیزیں بھی ان کے ساتھ مخصوص نہیں ہیں۔

چونکہ یہ باتیں حضور اقدس صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے ان کو اہمیت کے ساتھ بتائی تھیں اور انھوں نے ان کا پرچہ بڑی اہمیت کے ساتھ محفوظ رکھا تھا، اس لیے یہ فرمایا: کہ حضور اقدس صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے ہمیں ان کے ساتھ مخصوص کیا۔

ایک گمراہ فرقہ یہ کہتا ہے کہ حضرت علی رضی اللہ عنہ حضور اقدس صلی اللہ علیہ والہ وسلم کے وصی تھے اور ان کو خاص خاص باتیں بتائی تھیں، اس حدیث سے ان کی تردید ظاہر ہے… اگر یہ باتیں ان کے ساتھ اس طرح  بتائی ہوتیں کہ دوسروں سے پوشیدہ کرنا مقصود ہوتا تو وہ خود کسی کو نہ بتاتے، پھر ان باتوں کو دیکھ لو، ان میں وصیت اور خلافت کا ذکر نہیں ہے۔

 ماں باپ کو قتل کرنے والا سب سے زیادہ سخت عذاب میں ہوگا

عن ابن عباس رضی اللہ عنہما قال:’’ قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ والہ وسلم ان اشد الناس عذاباً یوم القیامۃ من قتل نبیا او قتلہ نبی، او قتل احد والدیہ، والمصورون، وعالم لم ینتفع بعلمہ۔‘‘ (درمنثور)

حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہما سے روایت ہے کہ حضور اقدس صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے ارشاد فرمایا: ’’کہ بلاشبہ قیامت کے دن سب سے زیادہ  عذاب والا وہ شخص ہوگا جس نے کسی نبی کو قتل کر دیا، یا جس کو کسی نبی نے قتل کر دیا، یا جس نے اپنے والدین میں سے کسی کو قتل کیا اور تصویر کھینچنے والوں کو اور اس عالم کو بھی سب سے زیادہ  عذاب ہوگا جس نے اپنے علم سے نفع حاصل نہ کیا۔‘‘

فائدہ: جن لوگوں کو سب سے زیادہ  عذاب ہوگا اس حدیث پاک میں ان کا ذکر ہے، ان لوگوں میں وہ بھی ہے جو اپنے والدین میں سے کسی کو قتل کردے۔

پہلے زمانے میں صدیوں پہلے تو شاید اس کا تصور بھی نہ ہو سکتا ہوگا کہ کوئی شخص اپنے والدین میں سے کسی کو قتل کردے، لیکن آج کل تو ایسے لوگ موجود ہوگئے ہیں جن کے لیے زمین وجائیداد کے جھگڑوں میں باپ کو موت کے گھاٹ اتار دینا معمولی سی بات ہوگئی ہے… چونکہ ماں باپ اولاد کے وجود میں آنے کا ذریعہ ہیں، اور اللہ تعالیٰ نے اپنی عبادت کے بعد ماں باپ کے ساتھ حُسن سلوک کا حکم دیا ہے، اس لیے ان کے قاتل کو ان لوگوں میں شمار فرمایا جو سب سے زیادہ سخت عذاب میں مبتلاء ہوں گے۔

(جاری ہے)

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online