Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

پولیس مقابلے اور قتل ناحق (اداریہ)

پولیس مقابلے اور قتل ناحق

اداریہ (شمارہ 678)

ناحق قتل ایک بہت بڑا جرم ہے، اور اس کے جرم ہونے پر تمام اقوام عالم متفق ہیں، اور پولیس وغیرہ جیسے ادارے ایسے ہی جرائم کو روکنے کے لیے قائم کیے جاتے ہیں مگر ہمارے ہاں اس ادارے کا کردار ہمیشہ ہی سوالیہ نشان رہا ہے اور عوام اکثر اس سے نالاں رہی ہے ۔ عام معاملات میں تو پھر محض تبصرے کرکے غم و غصہ نکال لیا جاتا ہے مگر جب سے ایسے پولیس مقابلے سامنے آنا شروع ہوئے ہیں جنہیں دیکھتے ہی سب جعلی کہنے لگتے ہیں اس وقت سے ملک کے عوام میں عجیب بے چینی کی فضا ہے اور سب اس پر متفق ہیں کہ یہ صورت حال ملک کو مزید بدامنی کی طرف دھکیلنے کا کردار اداء کر رہی ہے اور اس طرح کبھی بھی امن قائم نہیں کیاجاسکتا اور سچ بھی یہی کہ ظلم سے ظلم ہی جنم لیتا ہے ، امن وانصاف نہیں۔

ان دنوں سانحہ ساہیوال نے ایک بار پھر پوری قوم کو غم و غصے سے نڈھال کردیا ہے اور راؤ انور کے کردار کے بعد اب ملکی اداروں کی کارکردگی پر ایک اور بڑا سوال قائم ہوچکا ہے ۔

ہمارا قومی المیہ یہ ہے جو ہمارا ایک مزاج بھی بن چکا ہ کہ ہم کبھی کوئی پائیدار سبق نہیں سیکھتے اور سانحات کو بار بار رونما ہونے سے روکنے کیلئے بہتری کی کوشش بھی نہیں کرتے۔ ہم سنجیدہ مسائل کیلئے عارضی بلکہ یوں کہیں کہ جان چھڑاؤ، حل تلاش کرتے ہیں اور اُس عارضی حل کو مستقل اور ریاستی پالیسی کا حصہ بنا دیتے ہیں۔ جب ماورائے عدالت قتل ریاستی پالیسی کا حصہ بن جائے اور ریاست اسے چھپانے کی کوشش کرے تو جو کچھ ساہیوال میں ہوا، اس سے صرف قانون نافذ کرنے والے اداروں میں چھپی ظالم بھیڑوں کی ہی حوصلہ افزائی ہوتی ہے۔ ساہیوال کے سانحہ پر بھی اگر میڈیا شور نہ کرتا اور خواتین اور بچے شامل نہ ہوتے توشاید پنجاب پولیس اور حکومت آپریشنل پارٹی کیلئے انعامی رقم کا اعلان کرچکی ہوتی۔

ضرورت اس امر کی ہے کہ جلد از جلد انکوائری مکمل کرذمہ داروں کو سخت سے سخت سزا دی جائے اور ایسے حددرجہ مشکوک اور صاف جعلی نظر آنے والے اِن کاؤنٹرز کو روکنے کے لیے قانون اور اس پر عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے تاکہ آئندہ وطن عزیز میں ایسی جرات نہ ہو ۔ اگر اس واقعہ کو بھی روٹین کا واقعہ قرار دے دیا گیا اوراس میں کوئی فیصلہ نہ کیا گیا تو عوام الناس کا سیکیورٹی اداروں سے رہا سہا اعتماد بھی ختم ہو جائے گا اور ملک مزید بد امنی کی طرف چلا جائے گا، اور اللہ نہ کرے کہ ایسا ہو۔

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor