Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

ہلمند فوجی بیس تباہ،137 امریکی واصل جہنم

(شمارہ 684)

ہلمند فوجی بیس تباہ،137 امریکی واصل جہنم

9 فدائین نے امریکہ اوراتحادیوں کو دھول چٹا دی،  فوجی تنصیبات کا 40 فی صد حصہ تباہ ،350 سے زائد ہلاکتیں، 15 پائلٹ اور 18 طیاروں کے میکینک شامل،وسیع نقصان پر نام نہاد سپر پاور حواس باختہ
فدائین حکمت عملی سے شوراب ایئربیس میں 3 اطراف سے داخل ہونے میں کامیاب ہوئے،پھر غیرملکی افواج کی قیام گاہوں، کمانڈوز کے دفاتر اور بیرکوں میں پہنچ کر دشمن پر اچانک فائرنگ کی بوچھاڑ کردی
ہلکے و بھاری ہتھیاروں، لیزر وسائل، فوجی سازوسامان، آتش گیر مادوں اور دستی بموں  سے لیس مجاہدین 48 گھنٹے مسلسل لڑتے رہے، فوجی وسائل اور تنصیبات تباہ،بچے کھچے کمانڈوز کو لیزر گنوں کا نشانہ بنایا گیا
 ناوہ، نادعلی، گرشک وسنگین اضلاع بھی مجاہدین کی تباہ کن کارروائیاں،درجنوں چوکیاں فتح، ہرات اورفراہ میں طالبان نے 8 ٹینک تباہ کردیئے، 20 کمانڈوز ہلاک،سرپل میں دشمن پسپا، بھاری سامان غنیمت
غزنی میں فرینڈلی بمباری سے9 اہلکار ہلاک،طالبان اور امریکا کے درمیان دوحا مذاکرات میں پیشرفت، معاہدے کا مسودہ تیار کرلیا گیا ،پینٹا گان نے انخلا 5 برس تک لٹکانے کا منصوبہ بنا دیا ،نیو یارک ٹائمز

کابل(نیٹ نیوز)ہلمند میں مجاہدین کا تاریخی حملہ،9 فدائین نے فوجی بیس میں گھس کر تباہی پھیلا دی137 امریکی واصل جہنم کردیئے ،، 15 پائلٹ اور 18 طیاروں کے میکینک شامل ہیں جبکہ حملے میں300 سے زائد ہلاکتیں ہوئیں،کئی جنگی جہاز، ہیلی کاپٹر، 32  ٹینک ملبے کا ڈھیر بن گئے،وسیع نقصان پر نام نہاد سپر پاور حواس باختہ ہوگیا، بڑے پیمانے پر جانی و مالی نقصان  پر امریکی ایوان ہل گئے،ہلکے و بھاری ہتھیاروں، لیزر وسائل، فوجی سازوسامان، آتش گیر مادوں اور دستی بموں  سے لیس مجاہدین 48 گھنٹے مسلسل لڑتے رہے، فوجی وسائل اور تنصیبات تباہی کے بعد بچے کھچے کمانڈوز کو لیزر گنوں کا نشانہ بنایا گیا، ناوہ، نادعلی، گرشک وسنگین اضلاع بھی مجاہدین کی تباہ کن کارروائیاں،درجنوں چوکیاں فتح، ہرات اورفراہ میں طالبان نے 8 ٹینک تباہ کردیئے، 20 کمانڈوز ہلاک،سرپل میں دشمن پسپا، بھاری سامان غنیمت،غزنی میں فرینڈلی بمباری سے9 اہلکار ہلاک،طالبان اور امریکا کے درمیان دوحا مذاکرات میں پیشرفت، معاہدے کا مسودہ تیار کرلیا گیا ،نیویارک ٹائمز نے نے دعویٰ کیا کہ پینٹا گان نے انخلا 5 برس تک لٹکانے کا منصوبہ بنا دیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق الخندق آپریشن کے سلسلے میں امارت اسلامیہ کے فدائین نے صوبہ ہلمند ضلع واشیر کے شوراب  میں  امریکی اڈے (بیسٹن امریکی بیس) اور کابل انتظامیہ کے میوند کور کمانڈ نمبر215 پر چھاپہ مارا اور وسیع کاروائی  کا آغاز کیا۔آپریشن میں امارت اسلامیہ کے 9 فدائین مولوی متوکل باللہ صوبہ ہلمند ، حافظ حامد، منتقم، نوید اور عبدالرحمن صوبہ قندہار ، بدرالدین اور عمرمنصور صوبہ غزنی ، بدری اور ہلال صوبہ زابل کے باشندوں  نے حصہ لیا، جو ہلکے و بھاری ہتھیاروں، لیزر وسائل، فوجی سازوسامان، آتش گیر مادوں اور دستی بموں  سے لیس تھے۔سب سے پہلے فدائین نہایت عملی کے تحت شوراب ایئربیس میں تین اطراف سے داخل ہونے میں کامیاب ہوئے۔ ابتداء میں بیرونی افواج کے قیام گاہوں، ملکی افواج کے کمانڈنگ آفس اور کمانڈو اہلکاروں کے بیرکوں تک پہنچ گئے اور دشمن پر اچانک گولیوں کی بوچھاڑ شروع کردی، شدید دھماکے اور دشمن پر تابڑتوڑ حملوں کا آغاز کیا، کاروائیکا یہ سلسلہ 48 گھنٹے تک مسلسل جاری رہا، فوجی وسائل اور تنصیبات کی تباہی کے بعد مجاہدین  نے  دشمن کے بچے کھچے کمانڈو زکو لیزرگنوں سے نشانہ بنایا۔ترجمان طالبان کے مطابق کامیاب کارروائیوں کے دوران 137 امریکی غاصب فوجی ، جن میں 15 پائلٹ اور 18 طیاروں کے میکینک تھے، مارے گئے، جب کہ 19 زخمی ہوئے۔ااسی طرح کٹھ پتلی کمانڈ  کمانڈر سراج اور کمانڈو کمانڈر منصور سمیت 260 کٹھ پتلی فوجی ہلاک ہوئے، جن میں 142 کمانڈو اور 118 عام فوجی شامل ہیں، جب کہ 73 فوجی زخمی ہوئے۔اسی طرح  دو ایئرپورٹس( امریکی و ملکی) کٹھ پتلی انتظامیہ کے دو ہیلی کاپٹر اور بیرونی افواج کے متعدد ہیلی کاپٹر اور جنگی طیارے تباہ، 32 عدد  ہاموی ٹینک، 19 عدد بکتربندٹینک،27 عدد رینجر گاڑیاں ، 21 عدد انٹرنیشنل گاڑیاں،7 عدد فوجی ایمبولینس، 11 عدد آئل بھرے ٹینکر، ایک لاجسٹک ڈپو،ایک اسلحہ کا ڈپو، دو تیل کے ذخیرے، طیاروں کا بڑا ورکشاپ، ٹینک اور رینجر گاڑیوں کا ورکشاپ، متعدد کنٹینرز، اشیاء خوردونوش سے بھرے خیمے، ایک ریڈار اور منصوبہ بندی کے مطابق دیگر فوجی تنصیبات کا چالیس فی صد حصہ تباہ ہوا  ۔یہ عظیم کاروائی اس کے بعد منظم اور مرتب کی گئی ہے کہ وحشی امریکی فوجوں اور ان کے ملکی غلاموں نے اس سال افغانستان کے طول و عرض میں شہریوں پر چھاپے مارکر اکثر خواتین اور بچوں کو شہید اور زخمی کرتے، عوام کے گھروں کو بموں سے تباہ کرتے، مساجد، مدارس، اسکولز، صحت کے مراکز،بازار اور عام شہریوں کے مکانوں کو دھماکوں سے اڑانے کے علاوہ ان پر بمباری بھی کرتے، افغان مظلوم ملت کو جانی و مالی نقصانات پہنچاتے۔امارت اسلامیہ کی قیادت کی جانب سے مجاہدین کو ہدایت دی گئی کہ بیرونی غاصب اور کٹھ پتلی غلام افواج کے فوجی اڈے، اینٹلی جنس مراکز اور ملک کے خلاف مذموم منصوبہ سازوں کے مراکز کو تابڑتوڑ حملوں کا نشانہ بنایا جائے، تاکہ مجرموں کو ان کے مذموم اعمال کی سزا دی جاسکے،مجرم شدید محاسبے سے روبرو ہوجائے اور باقی افراد کی نشاندہی کی جائے، کہ افغان غیور ملت کسی صورت میں بھی اس کے لیے آمادہ نہیں ہے کہ انہیں اپنی مزاحمت سے کوئی پشیمان کریں،ان کی آزادی کے حق کو خراش دے، طاقت کے بل بوتے ان کی گردن کو جھکا دے اور انہیں اسلامی اقدار سے منصرف کردے۔مجاہدی نے حملے سے دشمن کو یہ پیغام دیا کہ  ہمارے گفتار اور کردار میں کوئی فرق نہیں ، اگر ہم افغان غیور ملت کی نمائندگی سے کوئی وعدہ یا بات کرتے ہیں، اسے عملی کرکے دکھاتے ہیں، ہم مجرموں کیساتھ حساب کتاب کرینگے،ان سے اپنی ملت  اور اسلامی اقدار کا انتقام لیں گے۔ افغان فورسز نے فضائی کارروائی میں اپنی ہی چیک پوسٹس کو نشانہ بنا دیا۔ فضائی حملے میں 9 اہلکار ہلاک جبکہ 3 زخمی ہو گئے۔افغان میڈیا کے مطابق صوبے غزنی میں فورسز نے فضائی امداد کی درخواست کی تھی مگر فضائی حملے میں اپنے ہی ٹھکانے کو غلطی سے نشانہ بناڈالا۔افغان حکام کے مطابق فضائی حملے میں نواہلکار ہلاک، تین زخمی ہوئے ہیں جبکہ ضلع جا غوری کے گورنر نے واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ فضائی حملے میں فورسز کی دو چیک پوسٹوں کو نشانہ بنایا گیا۔ادھر امریکی اخبار نیو یارک ٹائمز نے رپورٹ دی ہے کہ امریکی انخلا 5 برس تک لٹکانے کا منصوبہ بنایا گیا ہے۔ پینٹا گان کے نئے پلان کے تحت جو امن مذاکرات میں پیش کیا گیا تمام امریکی افواج3سے 5 سال میں افغانستان سے انخلا کرینگی۔پلان کے تحت امریکی کارروائیاں ٹریننگ سے انسداد دہشت گردی حملوں اور کارروائیوں میں تبدیل ہوجائینگی،پلان کے نتیجے میں کابل میں ایک ایسی حکومت تشکیل دی جائیگی جس میں طالبان کو بھی شراکت دار بنایا جائے گا۔باقی ماندہ بین الاقوامی فوج بھی اسی عرصے میں انخلا کرے گی۔قطر کے دارالحکومت دوحا میں امریکا اور طالبان کے درمیان مذاکرات میں پیشر فت ہو ئی ہے ذرائع نے بتایا کہ فریقین کے درمیان افغانستان سے امریکی افواج کے انخلا اور افغان سرزمین کسی دوسرے ملک کیخلاف استعمال نہ کرنے کی یقین دہانی پر بات چیت میں پیشرفت ہوئی ہے -ذرائع نے بتایا کہ افغان امن مذاکرات کیلئے معاہدے کا ابتدائی مسودہ تیار کر لیا گیا ہے اور مذاکرات میں اس پر مزیدغور ہوگا امید ہے کہ اس کی منظوری دیدی جائے گی۔

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor