Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

الادب والادیب ۔ 546

الادب والادیب

(شمارہ 546)

دروازہ خاور پہ اُجالا سا ہوا ہے

 لگتا ہے اندھیرے کا فسوں ٹوٹ رہا ہے

 آنگن میں مرے ایک نیا پھول کھلا ہے

آجا مرے بابرؒ کہ تجھے ڈھونڈرہا ہے

آندھی ہے وہی اور وہی تیز ہوا ہے

ایسے میں بھی چلتا ہوا چھوٹا سا دیا ہے

یہ کنج قفسی اور یہ پائوں میں سلاسل

زنجیر عدل آج ہلانے کی سزا ہے

 زنداں میں اندھیرا ہی اندھیرا ہے میرے دوست

بجلی کی چمک ہے نہ ستاروں کی ضیا ہے

انسان ہی انسان کا دشمن ہے ازل سے

 انسان ہی انسان کا لہوچوس رہا ہے

 تقدیر میں لکھے تھے اسیری کے یہ ایام

شکوہ ہے کسی سے نہ شکایت نہ گلہ ہے

 قاتل کی رہائی کا سبب اور ہی کچھ ہے

منصف ہے برا اور نہ قانون برا ہے

 

(ہمشیرہ بابر آفریدی شہیدؒ)

 

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor