Bismillah

645

۸تا۱۴رمضان المبارک ۱۴۳۹ھ  بمطابق ۲۵تا۳۱مئی۲۰۱۸ء

گوشۂ مکتوب خادم۔ 644

gosha e maktoob e khadim

گوشۂ مکتوب خادم

(شمارہ 644)

مکتوبِ خادم    (9.5.2018)

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ..

اللہ تعالی"اہلِ زمین"پر رحم فرمائے..اہل زمین کو اچھے حکمران عطاء فرمائے..دین اسلام عطاء فرمائے .. زمین بیمارہوچکی ہے..فساد سے بھر چکی ہے..اب کوئی بڑا آپریشن ہی اسے صحت مند بنا سکتا ہے..حالات تیزی سے تبدیل ہو کر ایک بڑی اور اندھی جنگ کی طرف بڑھ رہے ہیں..ہر ملک کی کئی کئی پالیسیاں ہیں .. امریکی صدر نے ایران کے ساتھ معاہدہ ختم کر دیا ہے مگر اصل معاہدے ملکوں کی خفیہ ایجنسیوں کے درمیان ہوتے ہیں..اس لئے معلوم نہیں ہوتا کہ کون کس کا اتحادی ہے..افسوس کہ دنیا میں طاغوت کا انسان دشمنی قانون چل رہا ہے..اے مسلمانو!ہمیں اس نظام اور قانون کے ساتھ نہیں چلنا..ہم نے ظلم کا ساتھ نہیں دینا ..یہ نظام بظاہر بہت طاقتور نظر آرہا ہے..مگریہ حقیقت میں بہت کمزور ہے..ہم اگر اللہ تعالیٰ کے لئے جان لٹانے کا عزم کر لیں..ہم اگر اسلام کی خاطر مرمٹنے کا عہد کرلیں..ہم اگر دنیا اور اس کی زندگی کی محبت اپنے دلوں سے نکال پھینکیں تو..زمین اور سمندر سب آزاد ہو سکتے ہیں..آئیے جہاد کو سمجھئے، جہاد کو مانئے، جہاد کو اپنائیے..آزادی انتظار کر رہی ہے..

والسلام

مکتوبِ خادم    (10,5,2018)

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ..

اللہ تعالیٰ کی نعمتوں میں سے ایک نعمت "مسکراہٹ" ہے..مسکرانا حضرت آقا مدنیﷺ کی "مبارک" سنت ہے..چلئے مسکرائیے! ناشکری والے شیطان کو بھگائیے..میں ایک بار ایک شہید کے والد محترم سے چکوال میں ملنے گیا..وہ کینسر کے مرض میں مبتلا تھے .. ایک بستر تک محدود تھے..بیٹھ تک نہیں سکتے تھے..مگر ملاقات کے وقت وہ..ایسا گہرا مسکرائے کہ اُن کی مسکراہٹ میرے دل میں ٹھنڈک کی طرح اُتر گئی ..پھر میں نے حال پوچھا تو پہلے سے زیادہ دلکش اور حقیقی مسکراہٹ کے ساتھ فرمایا الحمدللہ خیریت ہے..پھر اسی مسکراہٹ کے ساتھ اپنے بیٹے کی تعزیت اور مبارک باد قبول کی..ان کی شکر گزاری کا وہ منظر آج تک آنکھوں میں ہے..جبکہ ہم اکثر مسکراہٹ سے محروم رہتے ہیں .. حالانکہ مسلمانوں سے مسکرا کر ملنا"صدقہ" ہے اور میاں بیوی کا ایک دوسرے کے لئے مسکرانا..اور مسکرا کر استقبال کرنا مستقل نیکی ہے..دراصل دل اگر پاک ہو، صاف ہو..شکر گزار ہو..اور تنہائی میں آنسو بہا چکا ہو تو ..وہ مسکراتا ہے..نیکی کے بعد خوشی سے مسکرانا کہ مالک نے کتنا فضل فرمایا..دعوت دیتے ہوئے مسکرانا کہ سامنے والے کو محبت کا احساس ہواور جب دل پر ناشکری کا حملہ ہو تو شیطان کا منہ چڑانے کے لئے مسکرانا ..یہ سب ہمیں اختیار کرنا چاہیے..انفاق فی سبیل اللہ کی مہم تنہائی میں آنسوؤں اور لوگوں میں مسکراہٹ کے ساتھ چلائیں..مغرب سے جمعہ شریف، مقابلہ حسن مبارک

والسلام

مکتوبِ خادم    (11.5.2018)

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ..

اللہ تعالیٰ ہمیں"عبادت" میں اور"دین کے کام" میں"اُکتاہٹ" سے بچائے..اور اس میں جو "تھکاوٹ" آئے..وہ ہمارے"اجر" کا ذریعہ بن جائے..نشاط اور چستی لانے اور تھکاوٹ کو مٹانے کا ایک بہترین نسخہ’’مسواک‘‘ہے’’محبوب سنت مسواک ‘‘منہ میں جب بدبو ہوجائے، میل جمع ہو جائے..تو انسان کے پورے بدن پر اس کے منفی اثرات پڑتے ہیں .. سنت کی نیت سے اچھی طرح مسواک کریں تو طبیعت ہشاش بشاش ہوجاتی ہے .. رمضان المبارک تشریف لا رہا ہے..مسواک سے دوبارہ مضبوط دوستی لگائیں .. رمضان میں لوگ اور نیکیاں تو بہت کرتے ہیں مگر مسواک سے دور ہوجاتے ہیں..یہ ٹھیک ہے کہ روزے کی حالت میں بس سرسری مسواک کرنی چاہئے..زیادہ نہیں..مگر راتوں کو تو اچھی طرح یہ سنت ادا کر سکتے ہیں ..اور روزے کی حالت میں بھی اَحناف کے نزدیک ہر وضو کے ساتھ سنت ہے..مگر اس میں مبالغہ نہ کریں..اب الحمد للہ "مسکراہٹ" کی دعوت پر بھی عمل شروع ہو چکا ہے .. ایسے میں مسواک کی ضرورت اور بڑھ گئی ہے.. خوشبو دار منہ اور چمکتے دانتوں والی مسکراہٹ..حضرت آقا مدنیﷺ کی سنت ہے .. اِنفاق فی سبیل اللہ مہم میں"مِسواک شریف" کو اچھی طرح ساتھ لے لیجئے..

والسلام

مکتوبِ خادم    (12.5.2018)

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ..

اللہ تعالیٰ"خَنَّاس" کے شر سے ہم سب کی حفاظت فرمائے..قرآن مجید کی آخری سورت میں"خناس"کا تذکرہ ہے..اور اس بات کی طرف واضح اشارہ ہے کہ ..ایک مسلمان کے لئے’’خناس‘‘کا وسوسہ..ساری مخلوق کے شر سے زیادہ خطرناک ہے..یعنی ساری مخلوق مل کر آپ کو وہ نقصان نہیں پہنچا سکتی جو ایک "خناس" آپ کو پہنچا سکتا ہے..ساتھ فرمایا کہ "خناس" دو طرح کے ہیں..ایک جناتی..اور دوسرے "انسانی"یعنی بعض جنات بھی"خناس" ہوتے ہیں اور بعض انسان بھی "خناس".."خناس" کو وسوسہ ڈالنے میں مہارت ہوتی ہے..وہ منٹوں میں کسی کے دل میں "وسوسہ" بھر دیتا ہے..اور شکر کو ناشکری سے..محبت کو نفرت سے..اور اطمینان کو بے چینی سے بدل دیتا ہے ..آپ کے دل میں جذبہ ہوگا کہ کام کریں مگر "خناس"آیااس نے ایسا وسوسہ ڈالا کہ..دل بدل گیا .. جذبہ ختم ہوگیا..آپ کے دل میں کسی کے لئے محبت ہے"خناس" آیا اور ایسا وسوسہ ڈالا کہ..دل نفرت سے بھر گیا..آپ کچھ کرنے کے لئے بے تاب تھے "خناس" آیا اور اس نے ایک منٹ میں"بے ہمت" کر دیا..آپ بہت کچھ اللہ تعالی کے لئے خرچ کرنا چاہتے تھے..خناس آیا اور اس نے بخل اور کنجوسی کا ٹیکہ دل میں لگا دیا اب ایک روپیہ دینا بھی مشکل..اللہ تعالیٰ جو رب الناس ہے، مَلِک الناس ہے، اِلٰہ الناس ہے وہی ہمیں"خناس" کے وسوسے سے بچا سکتا ہے..مہم کے موقع پر"خناس" سرگرم ہو جاتے ہیں..جو ساتھی وَساوِس، کم ہمتی، تھکاوٹ، بے چینی محسوس کر رہے ہیں ..سورہ"الناس" کی کثرت سے تلاوت کریں..دل کھل جائے گا ان شاء اللہ..

والسلام

مکتوبِ خادم    (13.5.2018)

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ..

اللہ تعالیٰ نے"معوذتین" کی شکل میں..اس امت کو حفاظت کا ناقابل تسخیر حِصَار عطاء فرمایا ہے .. افسوس کہ مسلمان ان دو عظیم الشان سورتوں کے فضائل سے غافل اور نا واقف ہیں..حالانکہ سورہ فلق میں ہر جسمانی شر اور آفت سے حفاظت کا نظام موجود ہے .. اور یہ سورت رزق کی برکت اور کثرت کے لئے اکسیر ہے..جبکہ سورہ ناس میں ہر قلبی، دینی، روحانی شر اور آفت سے حفاظت کا مکمل نظام موجود ہے.."سورہ فلق" دنیاوی نقصانات سے بچانے کا ذریعہ ہے.. جبکہ"سورہ الناس" دینی نقصانات سے حفاظت کا سامان کرتی ہے..دنیا کا کوئی شر، کوئی اندھیرا، کوئی کالی سفلی، کوئی جادو، کوئی حسد، کوئی خناس، کوئی وسوسہ، کوئی شبہ اور کوئی آفت ان دو سورتوں کے سامنے نہیں ٹِک سکتی..آپ صرف بیس منٹ وقت نکال کر ان دو سورتوں کا ترجمہ یاد کر لیں..ان کے الفاظ درست کر لیں..اور پھر اپنے حالات اور اپنی سہولت کے مطابق ان کا وِرد کریں..کبھی زیادہ ، کبھی کم..مگر صبح شام تین تین بار سے کبھی بھی کم نہ..یہ دو سورتیں اللہ تعالیٰ کی عظیم کتاب کا اِختتام ہیں..کتاب اللہ کا اختتام کتنا اونچا ہوگا آپ اور ہم اندازہ نہیں لگا سکتے..ہم بھی اگر اپنا اچھا اِختتام چاہتے ہیں تو عاملوں کو چھوڑ کر کتاب اللہ کے اختتام سے اپنے اَمراض اور مسائل کا اِختتام کریں .. مہم میں شریک ساتھی ان سورتوں سے خوب نفع اُٹھائیں..

والسلام

مکتوبِ خادم    (14.5.2018)

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ..

اللہ تعالیٰ"مجاہدین"سے"محبت" فرماتے ہیں .. کیونکہ"مجاہدین" اللہ تعالیٰ کے لئے"جہاد" کرتے ہیں..اور"جہاد" اللہ تعالیٰ کا فرض حکم ہے..پس جو جہاد کا دشمن ہوگا وہ اللہ تعالیٰ کا دشمن ہوگا..کوئی مسلمان"جہاد" کا دشمن نہیں ہوسکتا..اور یہ جو اسلامی نام رکھنے والے اَفراد..جہاد کے ساتھ دشمنی کر رہے ہیں ..دراصل ان میں ہندوؤں اور مشرکوں کے جراثیم داخل ہو چکے ہیں..نواز شریف شروع دن سے مشرکوں اور ہندؤوں کا حامی اور جہاد کا دشمن ہے ، معلوم نہیں کیوں مسلمان اسے ووٹ دیتے ہیں..کسی نے درست کہا کہ نواز شریف کے ہوتے ہوئے پاکستان کو کسی اور اندرونی یا بیرونی دشمن کی ضرورت نہیں ہے..ابھی جبکہ انڈیا نے کشمیر کے مسلمانوں کو ذبح کرنے کا نیا سلسلہ شروع کیا ہے..اور کشمیر میں جناب پروفیسر رفیع بھٹ شہید جیسے جانباز قربانیاں دے رہے ہیں..اُسی وقت کشمیری نواز شریف نے"پنڈتانہ" بیان جاری کر کے انڈیا میں ہر طرف اپنے ڈھول بجوا دیئے ہیں..مگر یہ بھی سچ ہے کہ جس کے ڈھول دشمنوں کے ہاں بجیں اس کی"بینڈ"بجنے کا وقت بھی قریب ہوتا ہے..اللہ تعالیٰ اس شخص کے شر سے مسلمانوں کی، مجاہدین کی اور پاکستان کی حفاظت فرمائے..حضرت آقا مدنی صلی اللہ علیہ وسلم نے جہاد کے قیامت تک جاری رہنے کی خبر دے دی ہے.. اس لئے جہاد کو مٹانے کا خواب دیکھنے والے مایوس ہو جائیں..پکے مایوس..

والسلام

خادم

لا الہ الااللہ محمدرسول اللہ

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online