Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

معارفِ نبوی (کلام ہادی عالم) 694

معارفِ نبوی

کلام ہادیٔ عالمﷺ (شمارہ 694)

تشریح:اس حدیث پاک میں ایک مسلمان کودوسرے مسلمان کے لئے آئینہ قرار دیاگیاہے اور آئینے میں دو خوبیاں پائی جاتی ہیں: ایک یہ کہ وہ آئینہ دیکھنے والے سے خیانت نہیں کرتا بلکہ اس کے چہرے میں کوئی عیب اور داغ دھبہ ہو تو اس کونمایاں کردیتا ہے،دوسری خوبی یہ ہے کہ آئینہ صرف اپنے دیکھنے والے کے سامنے چپکے سے اس کے عیب کا اظہار کردیتا ہے، دوسروں کے سامنے اظہارنہیں کرتااور اس کے اس عیب کی کسی کو خبر نہیں ہونے دیتا، گویا یہ فرمایا گیا ہے کہ جس طرح آئینہ اپنے دیکھنے والے کے حق میں مخلص ہوتا ہے اسی طرح ایک مومن کو چاہئے کہ وہ اپنے بھائی کے حق میں نہایت مخلص ہو کہ اگر اس میں کوئی عیب پایاجاتا ہے توچپکے سے اس کی اصلاح کی طرف اسے متوجہ کردے، مگر لوگوں کے سامنے اس کا اظہار نہ کرے۔

 اس میں اس طرف بھی اشارہ ہے کہ جس طرح آئینہ دیکھنے والا آئینے پر اعتماد کرتاہے اور آئینہ جس داغ دھبے ، عیب کی نشاندہی کرتا ہے اس کی اصلاح کرلیتا ہے، آئینے میں اپنے عیب کو دیکھ کر حبشی کی طرح شیشہ توڑنے کی کوشش نہیں کرتا، اسی طرح مسلمان کو چاہئے کہ اس کا جو بھائی اس کے عیب کی نشاندہی کرے اس کے اخلاص پر اعتماد کرتے ہوئے اپنے اس عیب کی فوراً اصلاح کرلے، اپنے بھائی کی نشاندہی کا برانہ منائے۔

بعض عارفین نے اس حدیث پاک کی یہ شرح فرمائی ہے کہ’’مسلمان کو چاہئے کہ دوسرے اہل ایمان کوآئینہ سمجھے، اور اس کے اندر جوعیوب نظر آئیں ان کے بارے میں یوں سمجھے کہ یہ میرے چہرے کا عکس ہے، اس لئے اپنے اندر ان عیوب کا جائزہ لے اور جوعیوب اپنے اندر نظر آئیں ان کی اصلاح کرے،کیونکہ آدمی کو خوداپناچہرہ نظر نہیں آیاکرتا، اس لئے دوسرے کے عیوب سے اپنے عیوب پر تنبہ ہوتا ہے اور عقل مند آدمی متنبہ ہو کر اپنی اصلاح کی طرف متوجہ ہوتا ہے۔‘‘

مسلمان کی پردہ پوشی

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ آنحضرتﷺ سے روایت کرتے ہیں کہ جوشخص کسی مسلمان کے غم کودور کرے، اللہ تعالیٰ قیامت کے دن اس کے رنج و غم کو دور فرمادیں گے اور جوشخص کسی مسلمان کی دنیاکی مشکل کو حل کرے، اللہ تعالیٰ اس کی دنیا و آخرت کی مشکل کو حل فرمادیں گے اور جو شخص کسی مسلمان کی پردہ پوشی کرے، اللہ تعالیٰ دنیا و آخرت میں اس کی پردہ پوشی فرمادیں گے اور اللہ تعالیٰ اپنے بندے کی مدد کرتا رہتا ہے،جب تک کہ وہ اپنے مسلمان بھائی کی مدد کرتا رہتا ہے۔

مسلمان کی عزت و آبرو کا دِفاع

حضرت ابو الدرداء رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ آنحضرتﷺ نے ارشاد فرمایا :’’جس شخص نے اپنے بھائی کی عزت و آبرو کادِفاع کیا، اللہ تعالیٰ قیامت کے دن اس کے چہرے سے دوزخ کی آگ ہٹادیں گے۔‘‘

تشریح:یعنی کسی جگہ کسی مسلمان بھائی کی برائی کی جارہی تھی، ایک مسلمان نے اس کی جانب سے دفاع کیااور اس کی جواب دہی کی تواس کے بدلے میں اللہ تعالیٰ اپنے لطف و کرم سے دوزخ کی آگ اس سے ہٹادیں گے اور دوزخ کی آگ سے اس کا دِفاع کریں گے۔

 ایک مسلمان کی دوسرے مسلمان سے قطع تعلقی کا وبال

حضرت ابوایوب انصاری رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہﷺ نے فرمایا:’’کسی مسلمان کے لئے حلال نہیں کہ اپنے بھائی( سے سلام و کلام) کو تین دن سے زیادہ چھوڑے رکھے کہ دونوں کی ملاقات ہو تو وہ ادھر منہ پھیرلے اور یہ ادھر منہ پھیرلے اور ان دونوں میں سے اچھا وہ شخص ہے جو سلام کرنے میں ابتداء کرے۔‘‘

تشریح:اس حدیث میں چند امورلائق ِ توجہ ہیں:

اول…دومسلمانوں کا آپس میں قطع تعلق اور سلام و کلام بند کردینا اللہ تعالیٰ کی نظر میں نہایت ناپسندیدہ ہے، اس کو کبیرہ گناہوں میں شمار کیا گیا ہے اور احادیث شریفہ میں اس پر بڑی سخت وعیدیں آئی ہیں۔

ایک حدیث میں ہے کہ پیراور جمعرات کے دن جنت کے دروازے کھولے جاتے ہیں، پس ہر ایسے بندے کی جو اللہ تعالیٰ کے ساتھ شریک نہ ٹھہراتا ہو ، بخشش کردی جاتی ہے سوائے اس شخص کے کہ اس کے درمیان اور اس کے مسلمان بھائی کے درمیان کینہ و عداوت ہو، ان کے بارے میں کہاجاتا ہے کہ ان کوچھوڑ دو، یہاں تک کہ آپس میں صلح کرلیں۔

ایک اور حدیث میں ہے کہ کسی مسلمان کے لئے حلال نہیں کہ اپنے مسلمان بھائی کو تین دن سے زیادہ چھوڑے رکھے پس جس شخص نے اپنے مسلمان بھائی سے تین دن سے زیادہ قطع تعلق کیا وہ دوزخ میں داخل ہوگا۔

 ایک اور حدیث میں ہے کہ جس شخص نے اپنے مسلمان بھائی سے ایک سال تک قطع تعلق رکھا، اس کو ایساگناہ ہوگا گویااس کو قتل کردیا۔( تینوں احادیث مشکوٰۃ میں ہیں)

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor