Bismillah

672

۶تا۱۲ربیع الثانی۱۴۴۰ھ  بمطابق       ۱۴تا۲۰دسمبر۲۰۱۸ء

پاکستان کی ریاستی حیثیت اور بھارتی آرمی چیف کی مداخلت انہیں اتنی جرأت کیوں کر ہوئی!! (اداریہ)

پاکستان کی ریاستی حیثیت اور بھارتی آرمی چیف کی مداخلت انہیں اتنی جرأت کیوں کر ہوئی!!

اداریہ (شمارہ 671)

اس بات میں کوئی شک نہیں ہندوستان اور تمام دنیا کی کفریہ طاقتوں کو پاکستان کے اسلامی تشخص اور بنیاد سے شدید اختلاف اور بغض ہے، اور بھارت کی طرف سے مختلف طریقوں سے پاکستان کو توڑنے کے لیے کئی گئی مختلف مذموم کوششیں بھی تاریخ کاحصہ ہیں، اور اب تو خیر سے ایک ایسا بھارتی حکومت کے سنگھاسن پر بیٹھا ہے جو پاکستان توڑنے کے جرم میں شرکت کا کھلے عام مدعی ہے اور اس پر فخر کرتا ہے۔

یہ سب کچھ ایک تاریخی حقیقت ہے جس سے کوئی انکار نہیں کرسکتا مگر اب نوبت یہاں تک آپہنچی ہے کہ بھارتی آرمی چیف پاکستان کی ریاستی حیثیت متعین کرنے کے بارے میں اپنی رائے زنی کرنے پر اُتر آئے ہیں ، گویا کہ وہ بھارتی آرمی چیف نہیں بلکہ پاکستان کے کسی ریاستی ستون کا اہم ترین حصہ ہو۔ موصوف بھارتی آرمی چیف کا بیان ہے کہ اگر پاکستان بھارت کیساتھ بہتر تعلقات چاہتا ہے تو اُسے پہلے سیکولر ہونا پڑے گا۔ بھارتی آرمی چیف کہتے ہیں بھارت چونکہ ایک سیکولر ریاست ہے اور اُس سے ملنے کیلئے پاکستان کو بھی سیکولر بننا پڑے گا۔ ویسے یہ دعویٰ ہی کتنا مضحکہ خیز ہے کہ بھارت ایک سیکولر ملک ہے جب کہ اس ملک کا حکمران ایک ایساشخص ہے جو مسلمانوں کے اجتماعی قتل عام کا مجرم ہے، اور ہندو دہشت تنظیموں کا اہم ترین فرد ہے۔ حالانکہ موصوف کو علم ہے کہ پاکستان دو قومی نظریہ کی بنیاد پر ہی معرض وجود میں آیا تھا۔ایسا محسوس ہوتا ہے کہ پاکستانی وزیراعظم عمران خان نے انڈیا کیساتھ اچھے تعلقات کی بات جس انداز سے کی ہے، وہ انداز بھارت جیسوں سے خطاب کے بالکل بھی لائق نہیں ہے، اور اسی لیے ان کا آرمی چیف پاکستان کا مامابننے کی کوشش کرنے لگاہے۔ جب کہ دوسری جانب نام نہاد بھارتی سیکولرازم کے چہرے کے پیچھے در حقیقت ہندو راج قائم ہے، کشمیر سے لیکر منی پور اور ناگا لینڈ تک ریاستی دہشت گردی جاری ہے،وہاں گائے کی زندگی تو اہم ہے لیکن انسانوں کو سنگسار کیا جاتا ہے۔ایسے بھارت کی طرف سے پاکستان کو سیکولر کرنے کا کہنا بھونڈا مذاق ہے۔

پاکستانی حکمرانوں کو چاہیے کہ وہ اپنے بیانات اور سوچ پر اس درجہ ضرور نظر ثانی کریں کہ آخر ہماری اس سوچ میں کیا ایسی کمزوری ہے کہ بھارتی سرکار کا ایک اہم ترین فرد اس قدر بے باکی اور پاکستانی سالمیت کے اہم ترین معاملے میں اس طرح گائیڈ لائن دینے کی جرات کرنے اُتر آیا ہے۔ اگر بھارت جیسا دشمن اتنی ہمت کرنے پر اُتر آیا ہے تو یہ بات پاکستان کے لیے  باعث شرم ہے اور اسے چاہیے کہ وہ دشمن کے سامنے اپنی کمزوری کے بجائے مضبوطی دکھائیں، یہی زندہ قوموں کی علامت  بھی ہے اور یہی قرآن کا پیغام بھی ہے۔

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online