Bismillah

672

۶تا۱۲ربیع الثانی۱۴۴۰ھ  بمطابق       ۱۴تا۲۰دسمبر۲۰۱۸ء

ماسکو اَمن کانفرنس ( آخری قسط ) (سعود عبدالمالک)

ماسکو اَمن کانفرنس ( آخری قسط )

سعود عبدالمالک (شمارہ 671)

(گزشتہ سے پیوستہ)

خواتین حقوق:

افغانستان کے اسلامی امارت کو مسلم معاشرے کی تعمیر کے لئے عورت کو اول ترجیح دی جاتی ہے  اور وہ خواتین کے تمام حقوق پر عمل کرتا ہے جو اسلام کے مقدس دین کے ذریعہ انہیں دیا گیا ہے.

اسلام نے خواتین کو تمام بنیادی حقوق، جیسے کاروبار اور ملکیت، میراث، تعلیم، کام، اپنے شوہر کا انتخاب، سیکورٹی، صحت، اور اچھی زندگی کا حق دیا ہے. اسی طرح، نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنی زندگی کے آخری لمحے میں عورتوں کے ساتھ اچھے رویہ کو مشورہ دیا. یہ سب ایسے مثال ہیں جنہیں عورت نے علم و اخلاقیات، اخلاقیات اور وقار کی بلند ترین سطحوں میں جہالت کی روایات کے خوفناک گندوں سے نکال لیا.

اس میں کوئی شک نہیں ہے کہ افغانستان میں، قبضے کی وجہ سے، خواتین کے حقوق کے خلاف بہت سے چیلنج ہیں. خواتین بہت سی آفتوں کا سامنا کرتے ہیں. افغانستان میں نام نہاد خواتین کے حقوق کارکن 17 سال تک رہ رہے ہیں، اس عرصے میں اربوں ڈالر افغانستان میں آئے، لیکن اب تک افغانستان صحت مند سہولیات کی کمی کے باعث بہت سے خواتین کی ترسیل کے دوران مرتے ہیں. کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کے باعث اب بھی خراب اور معذور بچے ہمارے ملک میں (دوسری دنیا میں) سے کہیں زیادہ ہیں. افغانستان اب بھی دنیا کے سب سے اوپر ممالک میں ہے جہاں خواتین کی اوسط زندگی کی توقع کی شرح صرف 45 ہے. یہ دنیا کے سب سے اول ممالک میں سے ہے جہاں ایک ملین سے زیادہ بیوہ ہیں. بدعنوان کی وجہ سے، خواتین کے حقوق کے عنوان کے تحت اخراجات اور اخراجات ان لوگوں کی جیبوں میں چلے گئے ہیں جو خواتین کے حقوق کے نعرے بلند کرتے ہیں.

خواتین کے حقوق کے تحت، غیر اسلامی ثقافتوں کی غیر اخلاقی، بے گناہ اور گردش کے لئے کام کر رہا ہے. مغربی اور غیر افغانی اور غیر اسلامی ڈرامہ سیریلوں کی تقسیم، غیر اخلاقی جرائم کے لئے راستہ بنانا، اور افغان رواجوں کی خلاف ورزی کرنے کے لئے خواتین کو حوصلہ افزائی کرنے والے دیگر ایسے مثالیں ہیں جن میں خواتین کے حقوق کے نام سے افغان سماج پر عائد کیا گیا ہے.

ابتدا سے، خواتین کے حقوق کی افغانستان میں اسلامی امارت بہت جامع اور واضح نقطہ نظر ہے. جیسا کہ اسلام اور پھر افغانستان کی روایت افغان مجاہد قوم کے دو اہم اقدار ہیں، لہذا اسلامی امارت اس فریم ورک کے اندر خواتین کے تمام حقوق پر بھی پابند ہیں. اسلامی امارت کی پالیسی یہ ہے کہ خواتین کے حقوق کی حفاظت کی جائے تاکہ نہ ہی ان کے جائز حقوق کی خلاف ورزی کی جائے اور نہ ہی ان کے انسانی وقار اور افغان اقدار کو دھمکی دی جائے. اسی طرح، اسلامی امارت پر ان تمام برائی رواجوں اور روایات کو ختم کرنے کے لئے عزم ہے جو خواتین کے حقوق کی خلاف ورزی کرتے ہیں اور اسلامی اصولوں کی تعمیل نہیں کریں گے اور انہیں محفوظ ماحول فراہم کرتے ہیں .

صحت:

افغانستان میں اسلامی امارت ایک مخصوص صحت کمیشن ہے جو ملک بھر میں کام کرتا ہے. یہ کمیشن ہر صوبے میں اپنے نمائندوں اور ہر ضلع ہے، جو ایک طرف سے امارت کے اندرونی صحت کے معاملات کا انتظام کرتے ہے اور دوسری طرف صحت مند خدمات فراہم کرنے اور تنظیموں کو فراہم کرنے کے لئے سیکورٹی فراہم کرتا ہے.

افغانستان میں اسلامی امارت نے یہ پیغام دنیا بھر میں اجلاسوں اور ذرائع ابلاغ کے ذریعہ سامنا کرنے کا اعلان کیا ہے جو صحت کے اہلکاروں کو غیر جانبدار قرار دیتا ہے. متضاد جماعتوں کے زخمی افراد اور زخمی افراد کو بھی ہسپتالوں کو لے جانا چاہئے اور کسی بھی تبعیض کے بغیر علاج کرنا چاہئے. اس سلسلے میں اسلامی امارت بین الاقوامی ہیلتھ اداروں جیسے آئی سی آر سی، ایمرجنسی اور ڈاکٹروں کے بغیر سرحدوں کے ساتھ معاہدے ہیں. اسلامی امارت افغانستان نے ہمیشہ انسانی حقوق کے اداروں اور انسانی حقوق کے اداروں کو ہمیشہ کے لئے کابل انتظامیہ اور غیر ملکی افواج کو زخمی کرنے اور قیدیوں کو علاج کرنے کے لئے اسلامی امارت کے طور پر کرنے کا مطالبہ کیا ہے.

اسلامی امارت نے اپنے علاقوں میں کلینک اور ہسپتالوں کی تعمیر اور اس کے لئے صحت کے اہلکاروں کو تربیت دینے کے لئے وسیع کوششیں  شروع کردی ہیں، لیکن بدقسمتی سے قبائلی باشندوں کو یہ خود کے لئے ایک قانونی ہدف سمجھا جاتا ہے اور اسے اس پر بمباری کرنے کا ہمیشہ محتاج ہے. اس وجہ سے، کئی بار ہمارے ہسپتالوں پر سوار اور بمباری ہوئی ہے، یہاں تک کہ ایسے کلینک اور ہسپتال جو ہمارے دیگر علاقوں میں دیگر غیر سرکاری تنظیموں کے تعاون سے چل رہے تھے بمباری بھی کی ہے. کندوز میں ڈاکٹروں کے بغیر بغداد (ایم ایس ایف) کے ہسپتال کے خلاف بم دھماکے کیے گئے اور وردک کے ایک ہسپتال پر چھاپے واضح مثال ہیں.

افغانستان کے اسلامی امارت نے ہر طرف سے صحت اور تعلیم کے اہلکاروں کی سلامتی کے حوالے سے بیانات شائع کیے ہیں اور مجاہدین نے ان لوگوں کو نشانہ نہ بنانے کی ہدایت کی ہے، لیکن ان کی حفاظت یقینی بنائیں تاکہ وہ اپنے کام کو بہترین طریقے سے کرسکیں.

بدقسمتی سے، قبائلیوں نے اپنے ہسپتالوں اور ایمبولینسوں کو نشانہ بنایا. ہمارے زخمی افراد کو دوسرے صحتمند تنظیموں کے امبولانسوں میں منتقل کیا جارہا ہے، ہمارے اراکین پر تشدد کے مختلف طریقوں کو استعمال کرنے کے باوجود، وہ اپنی عام بیماریوں کا علاج نہیں کرتے.

اسلامی امارت، ایک بار پھر، اس فورم سے اعلان کرتے ہیں کہ صحت کے شعبے میں امیر ہمیشہ خود کو شہریوں کے تمام حقوق کے مطابق انجام دیتا ہے اور وہ سب سے بہتر کوشش کرتا ہے کہ وہ تمام صحت کی خدمات فراہم کرسکیں. یہ انسانی حقوق کے اداروں سے مطالبہ کرتا ہے کہ وہ کابل انتظامیہ اور اشغال پسندوں کو انسانی حقوق کا احترام کرنے کی کوشش کرے اور ہسپتالوں کو نشانہ بنانا جو افغانستان کے اسلامی امارت کے زیر انتظام علاقوں میں نہیں ہے. ہم غیر ملکی اداروں سے امید رکھتے ہیں کہ تمام افغانوں کو مساوات کے طور پر مساوات اور اس طرح کی خدمات فراہم کریں، خاص طور پر ہم ایسے علاقوں پر توجہ دیں گے جو اسلامی امارت کے تحت ہیں، کیونکہ شہری علاقوں کے مقابلے میں، دیہی علاقوں میں لوگوں کی ضروریات سخت اور زیادہ ہیں .

افغانستان کے اسلامی امارت نے اقوام متحدہ، ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن اور دیگر صحت سے متعلق تنظیموں کے ساتھ مکمل تعاون کیا ہے اور اس تعاون نے ان کے کاموں کو افغانستان کے تمام حصوں میں بہترین طریقے سے لے جانے کے لئے سہولت فراہم کی ہے. اس سلسلے میں، ملک کے بہت سے حصوں میں پولیو اور دیگر ویکسین پروگرامز جو متعلقہ تنظیموں کے ذریعہ اسلامی امارت کے براہ راست حمایت کی طرف سے کئے جاتے ہیں، وہ قابل ذکر ہیں.

افغانستان کے اسلامی امارت، ایک مرتبہ پھر، اس کے تعاون کے بارے میں صحت سے متعلق تنظیموں کو مکمل طور پر یقین دلاتا ہے.

افغانستان کے موجودہ مصیبتوں کے بارے میں ہماری پوزیشن اور خیالات پر توجہ مرکوز کرنے کے لئے تمام شرکاء کا شکریہ

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online