Bismillah

614

۲۹محرم الحرام تا۵صفر۱۴۳۸ھ   بمطابق ۲۰تا۲۶اکتوبر۲۰۱۷ء

اعتکاف…ایمان پرور عبادت (اداریہ)

اعتکاف…ایمان پرور عبادت

اداریہ (شمارہ 598)

رمضان المبارک میں اللہ تعالی نے اپنے بندوں کے لیے جو خاص عنایات رکھی ہیں ان میں اعتکاف جیسی عبادت بھی شامل ہے جو رمضان المبارک کی خاص الخاص برکتوں کو حاصل کرنے کا بہترین ذریعہ ہے۔ آپ دیکھ لیں کہ رمضان کے روزوں کا مقصد حصول تقویٰ ہے اور جو بندہ چوبیس گھنٹے کے لیے مسجد میں پابند ہو کر بیٹھ جائے تو وہ خود بخود ہی ان درجنوں اور سینکڑوں گناہ سے کنارہ کش ہوجاتا ہے جو باہر کے ماحول میں اسے گھیرے ہوئے ہوتے ہیں۔

اسی طرح رمضان کا ایک تحفہ قرآن کریم ہے اور اعتکاف وہ عبادت ہے کہ جس میں انسان ہر کام اور ہر دنیوی مشغولیت سے آزاد ہو کر مسجد کے ماحول میں جا بیٹھتا ہے جہاں اسے تلاوت قرآن کا راستہ بالکل ہی صاف مہیا ہوجاتا ہے اور اب وہ جس قدر بھی تلاوت کرنا چاہے اس کے لیے ممکن ہو جاتا ہے۔ پھر یکسوئی کی بدولت وہ قرآن کریم میں جس قدر غور وفکر کرنا چاہے کرسکتا ہے اور وہ غور و فکر موثر بھی ہوتا ہے کیوں کہ جو غور وفکر جس قدر یکسوئی کے ساتھ کیا جائے اور اس میں دیگر فکروں اور پریشانیوں کاعمل دخل نہ ہو تو وہ اسی قدر دل میں راسخ ہوتا ہے۔ اس طرح قرآن کریم کے انوارات سے بھرپور فائدہ اٹھانے اور انہیں دل میں راسخ کرنے کا بہترین ذریعہ بھی اعتکاف ہے۔

پھر ہمارے زمانے میں ٹی وی جیسی لعنت نے گھروں کا ماحول جس طرح تباہ کر رکھا ہے وہ کسی سے مخفی نہیں اور اس نحوست کی وجہ سے مسلمانوں کا رمضان اور روزہ بھی سلامت نہیں رہے ۔ ان حالات میں حقیقت یہ ہے کہ رمضان المبارک کی برکتیں گھر بیٹھے حاصل کرنا بہت مشکل ہوگیا ہے کہ گھروں میں اب وہ سکون اور یکسوئی اور بد نظری سے حفاظت وغیرہ ممکن نہیں رہی، اس لیے بھی اعتکاف کی اہمیت بہت بڑھ جاتی ہے کہ اعمال کا دار و مدار خاتمے پر ہوتا ہے اس لیے رمضان کے آخری عشرے میں مسجد میں معتکف ہو کر اس نقصان کی کسی قدر تلافی کی جاسکتی ہے جو گھروں میں موجودٹی وی کی بدولت ہمارے ایمان اور اعمال کو دیمک کی طرح چاٹ رہا تھا۔

اس آزمائش کا سلسلہ ابھی پوری طرح رکا نہیں کیوں کہ ہمارے زمانے میں موبائل اور اس پر انٹر نیٹ پیکجز نے تو مسجد اور اعتکاف کا ماحول بھی آلودہ کررکھا ہے، اور اعتکاف کا مقصد بالکل ہی فوت کردیا ہے، اس کی وجہ سے نہ یکسوئی باقی رہی ہے اور نہ ہی اللہ تعالی کی خالص یاد۔ اس لیے ضروری ہے کہ اعتکاف کرنے والے موبائل اور انٹر نیٹ پیکجز سے اس طرح بچ کر رہیں جس طرح ہم سانپ سے بچنے کا اہتمام کرتے ہیں۔

یوں تو کوئی بھی مسلمان کسی بھی جگہ ان باتوں کا اہتمام کرکے اپنے اعتکاف کو قیمتی بنا سکتا ہے مگر جامع مسجد سبحان اللہ ، بہاولپور میں ہونے والے اعتکاف کی یہ خصوصیت ہے کہ وہاں کا ماحول آپ کو ان آلودگیوں سے دور کر دیتا ہے اور نیکیوں کا ایک ایسا اجتماعی ماحول مہیا کرتا ہے جس کی بدولت وہ خاص الخاص برکات باا ٓسانی حاصل ہوجاتی ہیں جو رمضان اور اعتکاف کا اصل مقصد ہیں۔ اس اعتکاف میں یومیہ چالیس مسنون اعمال کا اہتمام کرایاجاتا ہے، باعمل اور باکردار علماء کی نگرانی سے وقت قیمتی بنا رہتا ہے، ایمان کی تجدید ، توبہ کی تجدید اور عہد کی تجدید کے موضوعات پر موثر بیانات سے زندگی میں ایمان پرور انقلاب آتا ہے، رات بھر کی تروایح سے حصول لیلۃ القدر یقینی ہوجاتا ہے ، الغرض ایک ایسا ماحول ہے جس میں اعتکاف اور رمضان کی بہاریں کھلی آنکھوں محسوس ہوتی ہیں۔

کاش کہ مسلمان اس ایمان پرور عبادت کی قدر کریں اور ان تمام اسباب و وسائل سے دور رہیں جو اس حسین عبادت کو آلودہ کردیتے ہیں۔

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online