Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

نعت (جس سمت نظر جائے)

 

جس سمت نظر جائے

اِس شان سے ہو کاش تماشائے مدینہ

جس سمت نظر جائے ، نظر آئے مدینہ

سودا ہو اگر دل میں تو سودائے مدینہ

ہو دِل میں تمنا تو تمنائے مدینہ

ہر وقت تصور میں مدینے کی فضا ہو

اس طرح مرے دِل میں سما جائے مدینہ

ہر خار مدینے کا گل تر سے حسیں ہے

اور غیرتِ فردوس ہے صحرائے مدینہ

ہے شافعِ محشر کا کرم اس کا مقدر

اللہ رے خوش بختیِٔ شیدائے مدینہ

تخلیقِ دو عالم کا سبب ذات ہے ان کی

شہنشاہِ کونین ہیں آقائے مدینہ

خاکِ قدمِ پاک نبی خاکِ شفاء ہے

ہر دَرد کا دَرماں ہیں مسیحائے مدینہ

وہ کوثر و تسنیم کا محتاج نہیں ہے

ہو جس کو عطاء جُرعۂ صہبائے مدینہ

یاد آتے ہیں جس وقت مدینے کے شب و روز

اِقباؔل پکار اُٹھتا ہوں میں ہائے مدینہ

(پروفیسر سیّد اقباؔل عظیم)

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor