خاکِ مدینہ

خاکِ مدینہ

مدینے جو چلنے کا وقت آ رہا ہے

گناہوں کے دُھلنے کا وقت آ رہا ہے

چلا ہوں محمد کے روضے کی جانب

کہ قسمت چمکنے کا وقت آ رہا ہے

قدم بہ قدم دِل مچلتا ہے میرا

مدینے میں بسنے کا وقت آ رہا ہے

وہ چھائیں گھٹائیں ، گھٹا ٹوپ سر پر

کہ رحمت برسنے کا وقت آ رہا ہے

شفا مجھ کو خاکِ مدینہ سے ہو گی

شفایاب ہونے کا وقت آ رہا ہے

میں آقا کے دَر سے نہ جاؤں گا خالی

کہ جھولی کے بھرنے کا وقت آ رہا ہے

گدائی ملے گی نصیرؔ اُن کے در کی

مدینے میں رہنے کا وقت آ رہا ہے

(سید نصیر الدین نصیرؔرحمہ اللہ)

 

Photo Madinah Madinah