Bismillah

671

۲۸ربیع الاول تا۴ربیع الثانی۱۴۴۰ھ  بمطابق       ۷تا۱۳دسمبر۲۰۱۸ء

مجاہدین کشمیرنے انڈین آرمی کو تگنی کا ناچ نچا دیا،4 روز میں24 کارروائیاں

(شمارہ 647)

مجاہدین کشمیرنے انڈین آرمی کو تگنی کا ناچ نچا دیا،4 روز میں24 کارروائیاں

تحریک آزادی دبانے کیلئے نئی بھارتی چال،نقاب پو ش فوجی کشمیریوں کو اغواء کرنے لگے،ریاستی دہشت گردی میں مزید6 شہید،پلوامہ میں گھروں کو آگ لگانے کی کوشش،نماز جنازہ پر بھارتی فورسزکا دھاوا
یکم جون کو مجاہدین نے 5 کارروائیاں کیں،سنگھ سٹریٹ میں فوجی بنکر ،سرینگر میںفورسز پر گرنیڈ حملہ،پلوامہ میں سی آر پی ایف 183 کی گاڑی ، ترال ٹاؤن  میں180 بٹالین کے فوجی کیمپ پر گرنیڈ حملے کئے گئے
فتح کدل سرینگر، لال چوک، ہری سنگھ  ہائی سٹریٹ، بٹ مالو میں فورسز پر گرینڈ کے تباہ کن حملوں میں ایک فوجی گاڑی تباہ،2 درجن فوجی شدید زخمی،ترال میں 42آر آر کے کیمپ پر شیلنگ،1فوجی ہلاک ، کئی زخمی
مودی حکومت اور انڈین فورسز مجاہدین کے حملوں سے خوفزدہ،پوری وادی میں ہائی الرٹ جاری ،موبائل و انٹرنیٹ سروس ،ریل گاڑی  بند،سڑکیں ویران، کاروباربند،سڑکوں پر صر ف فوجی گاڑیوں کا گشت
سوپور میں ریموٹ کنٹرول بم دھماکے سے فوجی گاڑی کو اڑا دیا گیا،متعدد ہلاک و زخمی،قابض فورسز نے کپواڑہ میں 2 نوجوانوں کو مجاہد قرار دے کر شہید کردیا،شیراز اور مدثر پلوامہ اور کولگام کے رہائشی نکلے
 سری نگر میں کرفیو جیسی پابندیاں ،بارہمولہ، بانہال میں ٹرین سروس بند،شہید قیصر کی نماز جنازہ لوگوں کی شرکت روکنے کیلئے جگہ جگہ خار دار تاریںنصب،ہزاروں افراد پابندیاں روندتے فتح کدل چوک پہنچ گئے
شوپیاں بارودی سرنگ دھماکے میں2فوجی واصل جہنم،بھارتی فوج کی آبادی پر چڑھائی،گھروں میں گھس کر قیمتی سامان کی توڑ پھوڑ ،جھڑپوں میں متعدد کشمیری زخمی، صلاح الدین کے بیٹے کی ضمانت مسترد

سرینگر(نیٹ نیوز) مجاہدین کشمیر نے البدر آپریشن کے ذریعے انڈین آرمی کو تگنی کا ناچ نچا دیا، یکم جون سے 4 جون تک صرف 4 روز میں 24 کے قریب جہادی کارروائیوں میں دشمن کو شدید جانی و مالی نقصان کا سامنا کرنا پڑا، شدید نقصان کے باعث دشمن حواس باختہ ہوگیا۔ تفصیلات کے مطابق   مجاہدین نے مقبوضہ کشمیر میں یکم جون سے لے کر چار جون تک ’’غزوہ بدر‘‘ کی یاد میں ’’البدر آپریشن‘‘ مشن کے تحت پوری وادی میںانڈین فورسز کے خلاف دو درجن کے قریب جہادی کارروائیاں کیں۔یکم جون کو مجاہدین نے انڈین آرمی پر 5 کاری وار کئے۔ضلع پلوامہ کے علاقہ عید گاہ کراسنک پلوامہ ٹاؤن میں CRPF183کی گاڑی کو اپنے حملے کا نشانہ بنایا،پھر سنگھ سٹریٹ میں دہشتگرد بھارتی فورسز کے بنکر پر گرنیڈ حملہ کیا جس میں متعدد اہلکار زخمی ہوئے،تیسری کاروئی کرتے ہوئے ضلع اسلام آباد کے علاقہ کھنہ بل میں CRPF اور پولیس کے ایک مشترکہ ناکہ پر گرنیڈ حملہ کیا، ترال ٹاؤن کے علاقہ ناؤدل میں وقع  CRPF180 بٹالین کے کیمپ پرحملے میں شدید نقصان کی اطلاعات ہیں۔مجاہدین جیش محمد نے رمضان آپریشن کے تحت 2 جون کو یوم بدر کے طور پر منایا۔مجاہدین کے حملوں سے خوفزدہ بھارتی فورج اور حکومت ہائی الرٹ جاری کرنے کے باوجود حملے روکنے میں ناکام رہی، ہائی الرٹ کے باعث سڑکیں سنسان تھیں ، انٹرنیٹ اور ریل سروس بھی بند کردی گئی ، سڑکوں پر صرف فوجی گاڑیوں کا گشت تک لیکن اس کے باوجود مجاہدین نے زبردست کارروائیاں کرتے ہوئے دشمن کو نانی کی یاد دلادی۔مجاہدین نے پہلی کارروائی فتح کدل سرینگر میں سی آر پی ایف 82 بٹالین پر گرینڈ حملے سے کی پھر بڈشاہ پل لال چوک میں گاڑی کو گرنیڈ کا نشانہ بنایا اس کے  بعد ہری سنگھ ہائی سٹریٹ میں پولیس کنٹرول روم پر حملہ  کیا، مومنہ آباد بٹ مالو میںمجاہدین نے سی  آر پی ایف پر کاری ضرب لگائی جس میں ایک گاڑی تباہ اور دو درجن سے زائد فوجی زخمی ہوئے۔مرنے والوں کی 2 کی اطلاع  ہے لیکن  تاہم آزاد ذرائع سے اس کی تصدیق نہ ہوسکی۔3 جون کو  مجاہدین  نے ضلع پلوامہ کے گاؤں مندورہ میں 42 آر آر کیمپ پر شیلنگ کی جس سے ایک اہلکار واصل جہنم ہوگیا، 4 جون کو نتھی پورہ سوپور میں پولیس گاڑی حملے میں تباہ ہوگئی،مجاہدین نے روڈ پر مائن بچھا رکھی تھی جب فوجی گاڑی گزری تو ریموٹ کنٹرول سے دھماکہ کردیا گیا جس سے گاڑی مکمل طور پر تباہ ہوگئی جس نتیجے میں متعدد فوجی ہلاک و زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔

سرینگر(نیٹ نیوز) مقبوضہ کشمیر میں تحریک آزادی دبانے اور مجاہدین کو بدنام کرنے کیلئے بھارت کی نئی چال، نقاب پوش فوجی کشمیریوں کو اغوا کرنے لگے،پلوامہ میں گھروں کو آگ لگانے کی کوشش،   ریاستی دہشت گردی میں مزید 6 کشمیری شہید، کپواڑہ میں 2 نوجوانوں کو مجاہد قرار دے کر شہید کردیا،شیراز اور مدثر پلوامہ اور کولگام کے رہائشی نکلے،اہل خانہ نے شناخت کرلیادوسری جانب شوپیاں میں بارودی سرنگ دھماکے میں 2 فوجی اہلکار واصل جہنم ہوگئے،حواس باختہ فورسز نے واقعہ کے بعد آبادی پر چڑھائی  کرکے گھروں اور قیمتی سامان  کی توڑ پھوڑ کی ،جھڑپوں میں متعدد افراد زخمی ہوگئے جبکہ مظاہرے کے دوران قابض فورسز نے بکتر بند گاڑی مظاہرین پر چڑھا دی جس سے ایک شخص شہید اور درجنوں زخمی ہوگئے، کپواڑہ میں قابض فورسز نے جنازے پر دھاوا بول دیا ،سخت پابندیوں کے باوجود ہزاروں افراد کی جنازے میں شرکت، پاکستان اور آزادی کے حق میں شدید نعرے بازی۔ تفصیلات کے مطابق  مقبوضہ کشمیر کے کیرن سیکٹر کے کپواڑہ ضلع میں مجاہدین قرار دے کر قابض فورسز نے 3 نوجوانوں کو شہید کردیا جن میں سے 2 کی شناخت ہوگئی، شہید شیراز اور مدثر پلوامہ اور کولگام کے رہائشی نکلے، دونوںکے خاندانوں نے انہیں شناخت کرلیا۔بھارتی فوج نے بدترین ریاستی دہشت گردی کا ارتکاب کرتے ہوئے کپواڑہ میں 2کشمیری نوجوانوں کو شہید کر دیاجس پر ضلع بھر میں زبردست احتجاجی مظاہرے ہوئے ہیں۔ دونوں کشمیریوں کو نام نہاد سرچ آپریشن کے دوران شہید کیا گیا ہے۔ بھارتی فوج نے سری نگر کی جامع مسجد کے گرد بھاری نفری تعینات کر دی ہے اور جگہ جگہ خاردار تاریں لگا دی گئی ہیں۔پلوامہ میں کشمیریوں نے بھارتی فورسز کی جانب سے گھروں میں گھس کر توڑ پھوڑ کی شدید مذمت کی ہے۔شہید کشمیری نوجوانوں کی قبروں کی بے حرمتی کیخلاف پلوامہ کے دربگام علاقہ میں مکمل ہڑتال کی گئی۔ حریت کانفرنس کے مرکزی قائدین سید علی گیلانی، میر واعظ عمر فاروق اور محمد یٰسین ملک نے کشمیری نوجوانوں کو قتل کرنے کی سخت مذمت کی ہے اوربھارتی فوج کی جانب سے کشمیریوں کے بڑھتے ہوئے قتل عام، جامع مسجد سری نگر اور دیگر مساجد کے گرد بھاری تعداد میں اہلکاروں کی تعیناتی اور غیر قانونی طور پر نظربندکشمیریوں کے ساتھ ناروا سلوک کیخلاف ہفتہ 2جون کو مکمل ہڑتال کی  ۔ بھارتی فوج کی 32راشٹریہ رائفلز کے اہلکاروں نے دونوں کشمیری نوجوانوں کو ہندواڑہ کے علاقے قاضی آباد میں نام نہاد سرچ آپریشن کے دوران شہید کیا۔  بھارتی فوج نے سری نگر میں نہتے مظاہرین پر بکتر بند گاڑی چڑھا دی جس کے نتیجے میں نوجوان شہید اور متعدد زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔ مقامی افراد کے مطابق بھارتی سیکورٹی اہلکار نے بکتر بند گاڑی سے کئی مظاہرین کو ٹکر ماری جبکہ ایک شخص کو کچل دیا۔واقعہ میں ملوث بھارتی فوج کے ترجمان سنجے شرما نے ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ہے کہ یہ صورت حال مظاہرین نے خود پیدا کی جبکہ مزاحمت کی۔ سری نگر میں بھارتی قابض کشمیر میں دہلی کے نئے قانون کے خاتمے کے لیے مظاہرے کیے جارہے ہیں۔مقامی شخص ریاض احمد کا کہنا تھا کہ پولیس اور فوج فاصلے پر تھے کہ اچانک گاڑی اچانک مظاہرین میں گھس آئی جس ایک نوجوان شہید ہوگیا جس کے بعد ڈرائیور مشتعل مظاہرین کے نرغے سے بھاگ نکلا۔سرینگر میں بھارتی پیرا ملٹری سینٹرل ریزرو پولیس فورس پر پے در پے تین گرینیڈ حملے کئے گئے جس کے نتیجے میں ایک افسر سمیت کم از کم چار اہلکار زخمی ہوئے ہیں۔ کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق پہلا حملہ سرینگر کے علاقے فتح کدل میں تعینات سی آر پی ایف کی82بٹالین کے اہلکاروں پر کیا گیا۔ جس میں ایک افسر سمیت تین اہلکار زخمی ہوئے۔حملے میں ایک شہری بھی زخمی ہوا۔ادھر بڈشاہ پل کے نزدیک مائسمہ میں سی آر پی ایف کی 132بٹالین کی گاڑی پر گرینیڈ حملے میں ایک اہلکار زخمی ہوگیا جبکہ سرینگر میں ہی پولیس کنٹرول روم کے نزدیک مگرمل باغ میں بھارتی فورسز پر ایک گرینیڈ حملہ ہوا تاہم جانی یا مالی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ملی ہے۔دریں اثناء گزشتہ ہفتے ضلع پلوامہ کے علاقے پوچھل میں نامعلوم حملہ آوروں کی فائرنگ سے زخمی ہونے والاسپیشل پولیس کا افسرسرینگر کے صورہ ہسپتال میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ہلاک ہوگیاہے۔ ہلاک ہونے والے اہلکارکا تعلق ضلع کے علاقے پنج گام سے تھا۔ادھر مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز کی جانب سے کشمیر ی نوجوان کو گاڑی تلے کچل کر شہید کئے جانے اور شہداء کی قبروں کی بے حرمتی کیخلاف مکمل ہڑتال کی گئی اور زبردست احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔ سری نگر میں ہفتہ کے دن شہید قیصر احمد کی نماز جنازہ میں شریک افراد پر بھارتی فوج نے دھاوا بول دیا اور وحشیانہ تشدد کرتے ہوئے درجنوں افراد کو زخمی کر دیا۔ اس دوران کشمیریوں کی جانب سے سبز ہلالی پرچم لہرائے گئے اور اسلام، آزادی اور پاکستان کے حق میں نعرے لگائے جاتے رہے۔ بھارتی فورسز نے نماز جنازہ کے شرکاء کو منتشر کرنے کیلئے پیلٹ گن کے چھرے برسائے اور بدترین لاٹھی چارج کیا جاتا رہا جبکہ جے کے ایل ایف لیڈر یٰسین ملک کو گرفتاراور میر واعظ عمر فاروق کو نظربند کر دیا گیا۔ بھارتی فورسز نے جموں کشمیر سالویشن موومنٹ کے چیئرمین ظفر اکبر بٹ کو نئی دہلی کے ائر پورٹ پر گرفتار کر کے انہیں عمرے کی ادائیگی کے لیے سعودی عرب جانے سے روک دیاگیا ہے۔بھارتی میڈیا کے مطابق ظفر اکبر بٹ کے ساتھ انکی 80سالہ والدہ بھی تھیں۔ ظفر اکبر بٹ وہیل چیئرپر موجود اپنی عمر رسیدہ والدہ کو عمرہ کے لیے لے جار ہے تھے کہ بھارتی پولیس نے انہیں گرفتار کر لیا۔مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فورسز اہلکاروں نے چہروں پر نقاب چڑھا کرشہریوں کو اغواکرنا شروع کر دیا ہے،سازش کے تحت ان وارداتوں کا الزام مجاہدین پر لگایاجارہاہے۔ ایسی ہی ایک کوشش گزشتہ روز بانڈی پورہ ضلع میں بھی کی گئی تاہم مقامی کشمیریوں نے زبردست مزاحمت کرتے ہوئے اس کوشش کو ناکام بنا دیا۔ تفصیلات کے مطابق بھارتی فورسز اہلکاروں کی جانب سے بعض ایسی وارداتیں کی گئیں اور الزام کشمیری مجاہدین پر لگایا گیا تاکہ انہیں بدنام کیا جاسکے تاہم مقامی کشمیریوں کا کہنا ہے کہ چند دن قبل مجاہدین نے عام لوگوں کو بتایا کہ آئندہ اگر کوئی ایسی کاروائی ہو تو ایسے لوگوں کو پکڑا جائے کیونکہ یہ بھارتی فورسز اہلکار چہروں پر نقاب چڑھا کر اس نوعیت کی وارداتیں کر رہے ہیں۔ مقامی کشمیریوں کا کہنا ہے کہ بھارتی اہلکاروں نے پچیس سالہ شاہد احمد خاں کو حاجن علاقہ سے گزشتہ روز اغواء کرنے کی کوشش کی تو انہوں نے شور مچایا اور شدید مزاحمت کی جس پر نقاب پوش فورسز اہلکار وہاں سے بھاگنے پر مجبور ہو گئے۔ مقامی کشمیریوں نے کہاکہ شہری کو اغواء کرنے کی کوشش کرنے والوں کی تعداد تین تھی اور انہوں نے اپنے چہرے چھپا رکھے تھے۔ کشمیری مجاہدین کی لاتعلقی پر بھارتی فوج کی یہ نئی سازش بھی بے نقاب ہو گئی ہے۔ مقامی کشمیریوں میں بھارتی فورسز اہلکاروں کی ان حرکتوں پر سخت اشتعال پایا جاتا ہے۔علاوہ ازیں نئی دہلی کی ایک عدالت نے معروف کشمیری آزادی پسند رہنما سید صلاح الدین کے بیٹے شاہد یوسف کی طرف سے ان کے خلاف درج جھوٹے مقدمے میں دائر کی گئی ضمانت کی درخواست کو مسترد کر دیا ہے۔ ضلع شوپیاں میں بھارتی فوج نے بارودی سرنگ کے دھماکے کے بعد سول آباد ی پر دھاوا بول دیا اور لوگوں کے مکانات اور گھریلو سامان کی توڑ پھوڑ کی جبکہ مجاہد کمانڈر زینت الاسلام کا گھردھماکے سے اڑا دیا جس پر لوگوں نے شدید احتجاج کیا ہے۔ اس دوراان جھڑپوں میں متعدد افراد زخمی ہوگئے جبکہ پلوامہ میں شہری ہلاکت کیخلاف ہڑتال اور احتجاج کیا گیا۔ شہری ہلاکت کے خلاف سانبورہ، کاکہ پورہ، پنگلنہ، پاہو، پلوامہ،رتنی پورہ، نورو، قوئل،لاجورہ، ملنگ پورہ اور دیگر ملحقہ علاقوں میں مکمل ہڑتال رہی ۔

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online