Bismillah

660

۱۰تا۱۶محرم الحرام۱۴۴۰ھ  بمطابق    ۲۱تا۲۷ستمبر۲۰۱۸ء

2 ہفتوں میں طالبان کے تباہ کن حملوں میں 200 سے زائد اتحادی ہلاک

(شمارہ 657)

2 ہفتوں میں طالبان کے تباہ کن حملوں میں 200 سے زائد اتحادی ہلاک

ننگرہار اور میدان میں طالبان حملوں میں 14 ہلاکتیں، بغلان میںمجاہدین نے 44 افغان پولیس اور فوجی اہلکاروں کو ٹھکانے لگایا،درجنوں چوکیاں فتح، 100 اہلکار لاپتہ
فاریاب میں ڈسٹرکٹ چیف بھی مارا گیا،غزنی میںشدید لڑائی،میدان،وردک اورننگرہار میں بھی وسیع حملے،بھاری مقدار میں اسلحہ غنیمت،افغان فضائیہ کے2پائلٹ قتل

کابل(نیٹ نیوز) افغانستان میں دو ہفتوں کے دوران طالبان کے تباہ کن حملوں میں 200 سے زائد اتحادی ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے، فاریاب کے ضلع بل چراغ پر مجاہدین نے قبضہ کرلیا، 100 سے زائد فوجی لاپتہ ہوگئے، کابل میں امریکی سفارتخانے پر راکٹ حملے میں نیٹو کمپاؤنڈ میں آگ بھڑک اٹھی، بغلان میںمجاہدین نے 44 افغان پولیس اور فوجی اہلکاروں کو ٹھکانے لگایا،درجنوں چوکیاں فتح،فاریاب میں ڈسٹرکٹ چیف بھی مارا گیا،غزنی میںشدید لڑائی،میدان،وردک اورننگرہار میں بھی وسیع حملے،بھاری مقدار میں اسلحہ غنیمت،افغان فضائیہ کے2پائلٹ قتل،ننگرہار اور میدان میں طالبان حملوں میں 14 ہلاکتیں ،امریکا نے مسجد،مکانات پر بم برسادیئے،35 افراد شہید،طالبان نے جنگ بندی مسترد کردی۔ تفصیلات کے مطابق عید کے موقع پر افغان دارالحکومت راکٹ حملوں سے گونج اٹھا اور پہلی بار صدارتی محل اور امریکی سفارتخانے کو نشانہ بنایا گیا،داخلی بحران کے باعث کمزور ہونے والی افغان صدر اشرف غنی کی حکومت کے خاتمے کیلئے طالبان کے حملوں میں شدت آ گئی ہے۔ننگر ہار و میدان پر طالبان کے بڑے حملوں میں حکومت نواز کمانڈر گل محمدسمیت14 اہلکار ہلاک ہو گئے۔ صوبہ فاریاب میں طالبان کے حملے میں ضلع تغاب کا سربراہ ،بیٹا،بھانجا اورڈرائیور، کابل میں افغان خفیہ ایجنسی این ڈی ایس کے تربیتی مرکز پر حملے میں متعدد افراد ہلاک جبکہ قندہار میں بم دھماکے میں ایک کرنل سمیت 4 فوجی ہلاک ہو گئے۔ڈسٹرکٹ چیف کی گاڑی پر دولت آباد اندخوی شاہراہ پر حملہ کیا گیا۔ادھرننگرہار اور میدان صوبوں میں افغان فوج پر طالبان حملوں میں حکومت نواز کمانڈر گل محمد سمیت 14 اہلکار ہلاک ہو گئے۔طالبان نے صوبہ ننگرہار کے صدرمقام جلال آباد شہر کے لغمان اڈہ کے علاقے میں ضلع کوٹ کے حکومت نواز جنگجو کمانڈر گل محمد کو دو محافظوں سمیت ہلاک کردیا،جبکہ سہ پہر کے وقت انگور کے علاقے میں بم دھماکہ میں 2 فوجی ہلاک ہو گئے دوپہر کے وقت جلال آباد شہر کے کے قریب بم دھماکہ سے 2 مخبر ہلاک جبکہ دو زخمی ہوئے۔ادھر ضلع غنی خیل کے رہائشی پولیس اہلکار رازمحمد ولد یاغی گل اور توبہ گل ولد حکمران جبکہ ضلع خوگیانی کے باشندوں 2 فوجیوں جاوید ولد دلاورخان اور جمال خان ولد سلطان شاہ نے حقائق کا ادراک کرتے ہوئے مخاطالبان کے سامنے ہتھیار ڈال دیئے۔ ضلع پچیرآگام کے زمری خیل کے علاقے میں بم دھماکہ سے پولیس ٹینک تباہ اور اس میں سوار دو اہلکار زخمی ہوئے اور ساتھ ہی ضلع غنی خیل کے فرش نامی چوکی پر طالبان نے دستی بموں سے حملہ کیا،جس میں جنگجوؤں کو ہلاکتوں کا سامنا ہوا۔صوبہ میدان سے موصولہ رپورٹ کے مطابق ضلع چک کے جواری نامی چوکی پر حملے کے دوران2 فوجی ہلاک جبکہ کولک کے مقام پر طالبان حملے میں فوجی رینجر گاڑی تباہ اور اس میں سوار 2 اہلکار ہلاک ہوئے،اس کے علاوہ صدر مقام میدان شہر کے چارقلعہ کے علاقے میں چوکی پر ہونے والے حملے میں ایک فوجی مارا گیا۔ شمالی صوبہ فراہ میں امریکی طیاروں کی بمباری سے مزید 30شہری شہید ہو گئے۔اطلاعات کے مطابق بدھ کے روز امریکی طیاروں نے صوبہ فراہ کے چھلگزئی، بالابلوک اور خاکسفید اضلاع میں آبادی پر بمباری کی۔امریکی بمباری سے ضلع چھلگزئی کے دو آبہ کے علاقے میں خواتین اور بچوں سمیت 10 شہری شہید اور5 زخمی ہوئے۔ضلع خاکسفید میں امریکہ کے جنگی طیاروں نے دیوال سرخ کے علاقے میں بمبار ی کی ،جس کے نتیجے میں متعدد مکانات منہدم اور4 شہریوں کی شہادت کی اطلاع ہے۔صوبہ بادغیس ضلع سنگ آتش کے سنگ خرس کے علاقے میں کمانڈر خیر محمد نے 100 اہلکاروں طالبان سمیت طالبان کے سامنے ہتھیار ڈال دئیے۔ اب اس وسیع علاقے پر طالبان کا کنٹرول ہے،جبکہ صوبہ زابل میں طالبان نے خوازوں گاؤں کے قریب حملے کے بعد افغان فوجی مرکز اور دفاعی چوکیوں پر قبضہ کر لیا۔ لڑائی میں 19 افغان اہلکار ہلاک ہوئے۔ طالبان نے صوبہ فاریاب میں زیرتسلط علاقے پر قبضہ مضبوط بناتے ہوئے ہتھیارڈالنے والے 40 افغان اہلکار چھوڑ دیئے جبکہ اشرف غنی حکومت کی طرف سے جنگ بندی کی مشروط پیشکش مسترد کرتے ہوئے حملے جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے۔ طالبان ترجمان کا کہنا ہے کہ جنگ بندی سے امریکی فورسز کو افغانستان میں قیام بڑھانے کا موقع مل جائیگااس لئے لڑائی جاری رہے گی۔افغانستان کے صوبوں غزنی ،قندوز-میدان وردگ اور لوگر میں امریکی طیاروں کی بمباری سے مسجد اور 5 افراد شہید جبکہ متعدد مکانات منہدم ہو گئے جبکہ طالبان حملوں میں ڈسٹرکٹ پولیس چیف سمیت 14 اہلکار ہلاک ہو گئے۔ کابل میں نامعلوم موٹر سائیکل سواروں کی فائرنگ کے نتیجے میں افغان فضائیہ کے بٹالین کمانڈر سمیت2 پائلٹس مارے گئے۔الخندق آپریشن کے سلسلے میں امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے،پکتیا لغمان اور میدان صوبوں میں اعلی عہدیداروں کو نشانہ بنایا۔آمدہ رپورٹ کے مطابق ضلع صوبہ میدان چک کے مربوطہ علاقے میں مجاہدین کے حملے میں دو فوجی ہلاک اور مجاہدین نے دو امریکی رائفلیں غنیمت کرلی،دریں اثناء صدر مقام میدان شہر کے سرنامی چوکی پر سنائیپرگن حملے میں ایک فوجی مارا گیا۔ صوبہ فاریاب میں دشمن کے مراکز پر حملہ کیا۔ ضلع پشتون کوٹ کے چقماق، بورگلی، سرہ میاشت، چقربلاق اور گل درہ کے علاقوں میں واقع دشمن کے مراکز پر ہلکے و بھاری ہتھیاروں سے لیس مجاہدین نے وسیع حملہ کیا، جس کے نتیجے میں اللہ تعالی کی نصرت سے دو فوجی مراکز اور پانچ چوکیاں فتح ہوئیں اور وہاں تعینات اہلکاروں میں سے 6ہلاک جبکہ 6 زخمی اور 20 نے ہتھیار ڈال دیے، جنہوں نے تین عدد ہیوی مشین گن، 17 کلاشنکوفیں اور دیگر فوجی سازوسامان مجاہدین کے حوالے کردیے اور مجاہدین نے مفتوحہ مراکز سے دور اکٹ، 10 عدد وائرلیس سیٹیں، 10 عدد موٹرسائیکلیں وغیرہ غنیمت کرلی۔

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online