Bismillah

671

۲۸ربیع الاول تا۴ربیع الثانی۱۴۴۰ھ  بمطابق       ۷تا۱۳دسمبر۲۰۱۸ء

جیش کمانڈرسمیت5 مجاہد،19کشمیری شہید،5 بھارتی فوجی افسر،17 اہلکار واصل

(شمارہ 660)

جیش کمانڈرسمیت5 مجاہد،19کشمیری شہید،5 بھارتی فوجی افسر،17 اہلکار واصل

شمالی کشمیر کے کمانڈر علی بھائی کو ساتھی سمیت سوپور میں ناکے پرر وکنے کی کوشش،مجاہدین گرنیڈ حملہ کرکے قریبی عمارت میں مورچہ زن ہوگئے،5اہلکاروں کو ٹھکانے لگا کر مردانہ وار لڑتے جام شہادت نوش کرگئے
علی بھائی نے 6 برس کے دوران دشمن کو کئی بار دھول چٹائی،سرینگر جموں شاہراہ پرواقع علاقہ کاکریال میں مجاہدین اور انڈین آرمی میں 2 دن کی طویل خونریز جھڑپ،5 افسروں سمیت 12 اہلکار ہلاک،3مجاہد شہید
سوپور ، پلوامہ میں آرمی کیمپوں پر زبردست حملے،2 اہلکار ہلاک،3 شدید زخمی،دونوں کاروائیوں میں مجاہدین بچ نکلنے میں کامیاب، کپواڑہ، سوپور اور جموں میں بدترین دہشت گردی،8 نوجوانوں کو شہید کیا گیا
کلگام میں محاصرے کے دوران6 نوجوانوں کو گرفتار کرکے گولیاں ماری گئیں،ہنڈوارہ اور سری نگر میں پی ایچ ڈی سکالر سمیت 3 شہید،جنازوں میں ہزاروں افراد کی شرکت،کئی علاقوں میں بڑا فوجی آپریشن
فورسزنے محاصرہ اور تلاشی کارروائیوں کا دائرہ پھیلا دیا،سپیشل آپریشنزگروپ سمیت کئی سکیورٹی ادارے شامل،سرینگر میں اساتذہ کی بھوک ہڑتال پندرہویں روز میں داخل،مظالم کیخلاف پوری وادی سراپا احتجاج

سرینگر(نیٹ نیوز) سرینگر اورسوپور میں بھارتی فورسز اور مجاہدین کے درمیان خونریز معرکے، جیش کمانڈعلی بھائی سمیت 5 مجاہد شہید جبکہ جھڑپوں میں 5 بھارتی فوجی افسر، 17 اہلکار واصل جہنم،بھاری  جانی و مالی نقصان نے مودی سرکار کو ہلا کررکھ دیا،ریاستی دہشت گردی میں 19 کشمیریوں کو شہید کردیا گیا، سرچ آپریشن کے دوران قابض فورسز کی جانب سے گن شپ ہیلی کاپٹروں کا استعمال،مقبوضہ وادی میں انسانیت سوز مظالم، شہید کی لاش کو رسی سے باندھ کر گھسیٹنے کی ویڈیو وائرل،احتجاجاً ہزاروںکشمیری سڑکوں پر نکل آئے،بھارت کے خلاف شدید نعرے بازی،علی بھائی شمالی کشمیر میں ساتھی سمیت مردانہ وار لڑتے جام شہادت نوش کرگئے، جھڑپ کے دوران 5 فوجیوں کو بھی ٹھکانے لگایا۔تفصیلات کے مطابق شمالی کشمیر کے علاقہ سوپور میں خونریز معرکہ آرائی کے دوران جیش محمد شمالی کشمیر کے کمانڈر علی بھائی اپنے ایک ساتھی سمیت جام شہادت نوش فرماگئے ، جھڑپ اس وقت شروع ہوئی جب کمانڈر علی بھائی ایک ساتھی کے ساتھ سوپور شہر سے گزر رہے تھے کہ ایک ناکے پر آرمی نے انہیں روکنے کی کوشش کی،انھوں نے ناکے پر موجود اہلکاروں پر گرنیڈ پھینکا اور فائرنگ کرتے ہوئے 3اہلکاروں کوواصل جہنم کیااور وہاں سے نکل گئے۔دشمن نے ان کی موجودگی کی اطلاع پاتے ہی تمام راستوں کی ناکہ بندی کرتے ہوئے پورے علاقے کو محاصرے میں لے لیا، صورت حال کے پیش  نظر مجاہدین بھی ایک قریبی بلڈنگ میں داخل ہوکر مورچہ زن ہوگئے،دشمن جب سرچ آپریش کرتے ہوئے مجاہدین کے سامنے آیا تو مجاہدین نے ان کو ٹارگٹ بنا کر ان پر فائر شروع کردیاجس سے دو اہلکار ہلاک اور تین  شدید زخمی ہوگئے،جھڑپ دن 1بجے دونوں مجاہدین کی شہادت پر ختم ہوئی۔اس کاروائی میں دشمن کے 5اہلکارواصل جہنم اور متعدد زخمی ہوئے۔ علی بھائی جیش محمد  شمالی کشمیر کے کمانڈر  اور عرصہ 6سال سے دشمن سے برسر پیکار تھے ، انہوں نے متعدد کاروئیوں میں دشمن کو خاک چٹائی،خصوصاً اپنی بارودی کاروائیوں سے دشمن پر دھاک بٹھا رکھی تھی،ان کی جہادی خدمات اہل کشمیر کے لیے یادگار اور ان کے ہم مشن ساتھیوں کے لیے سرمایہ افتخار رہیں گی۔ادھر  سرینگر جموں شاہراہ پر واقع علاقہ کاکریال نزد وشنو دیوی مندر میں مجاہدین جیش محمد اور انڈین آرمی کے درمیان معرکہ آرائی مجاہدین اور انڈین آرمی کے درمیان دو دن سے جاری رہی جس میں 3مجاہدین نے جام شہادت نوش فرمایا ۔اس خونریز معرکے میں دشمن کے 5آفیسرز سمیت 12 اہلکار مارے گئے ۔گزشتہ روز ججر کوٹلی جموں میں  CRPF کے ایک ناکے پر مجاہدین کو روکنے کی کوشش کی گئی جس کے بعد مجاہدین نے جنگل میں داخل ہوکر دشمن کو دو دن تک تگنی کا ناچ نچائے رکھا۔دو مجاہدین کی شہادت کے بعد آخری مجاہد ایک محفوظ جگہ پر بیٹھ گئے اور دشمن کو یہ تاثر دینے میں کامیاب رہے کہ سب شہید ہوچکے ہیںجب کافی دیر تک مجاہدین کی طرف سے کوئی فائر نہ ہوا تو دشمن مکمل طور پر مجاہد کی چال میں آگیا اور دشمن کے درجن بھر آفیسر میڈیا کی ٹیم کو ساتھ لے کرآگے بڑھنے لگے جب پوری طرح چھپے ہوئے مجاہد کی رینج میں پہنچے تو اس نے فائر شروع کردیا 20منٹ تک آخری مجاہد نے انھیں اپنی گولیوں کا نشانہ بنایا اور آخر کار جوان مردی سے لڑتے ہوئے جام شہادت نوش کیا۔ طویل معرکے میں دشمن کے 5آفیسروں سمیت 12اہلکار ہلاک اور درجنوں زخمی ہوئے۔علاوہ ازیںسوپور مین شہر میں ڈگری کالج کے نزدیک واقع 22رائشٹریہ رائفل کے کیمپ پر گزشتہ شب مجاہدین نے ہینڈ گرنیڈ پھینکے اور اس کے بعد گرنیڈ گنوں سے شیلنگ کی ۔ابتدائی اطلاعات کے مطابق دشمن کے 3اہلکار شدید زخمی  ہوئے۔دریں اثناء  جنوبی کشمیر کے ضلع پلوامہ کی تحصیل کاکہ پورہ کے علاقہ نیوہ میں واقع 55 RRکے کیمپ پر مجاہدین نے سنائپر کاروائی کرتے ہوئے دشمن کے 2  اہلکاروں کو نشانہ بنایا،رات کے اندھیرے کا فائدہ اٹھاتے ہوئے مجاہدین آرمی کیمپ کے قریب پہنچ گئے،جہاں سے سیکورٹی پر مامور اہلکاروں کو باآسانی دیکھاجاسکتاتھا،مجاہدین نے قریب سے نشانہ لے کر دشمن پر فائر کیے جس سے دو اہلکار وہیں ڈھیر ہوگئے۔مجاہدین کامیاب کاروائی کے بعد بحفاظت اپنے محفوظ ٹھکانوں پر پہنچ گئے۔ادھر  بھارتی فوج نے کپواڑہ، سوپور اور جموں کے علاقہ میں بدترین دہشت گردی جاری رکھتے ہوئے مزید8 کشمیری نوجوانوں کو شہید کر دیا ، جس پر وادی میں زبردست احتجاجی مظاہرے پھوٹ پڑے،بھارتی فوجی ایک شہید کاجسد خاکی زمین پرگھسیٹتے رہے، بھارتی فوج نے سرچ آپریشن میں گن شپ ہیلی کاپٹروں کااستعمال بھی کیا۔بھارتی فوج کی دہشت گردی کیخلاف سوپور، کپواڑہ، لنگیٹ اور دیگر علاقوں میں مکمل ہڑتال رہی اور ہزاروں کشمیریوں نے سڑکوں پر نکل کر شدید احتجاج کیا۔ بھارتی فورسز کی جانب سے نہتے مظاہرین کیخلاف آنسو گیس کی شیلنگ اور لاٹھی چارج بھی کیاگیا، ریاستی انتظامیہ نے موبائل اور انٹرنیٹ سروس بند رکھی۔ بھارتی فوج نے مقبوضہ کشمیرمیں سرچ آپریشن وسیع کردیا،سپیشل آپریشنزگروپ سمیت سکیورٹی فورسزنے بانڈی پورہ کارخ کرلیا،جبکہ شہادتوں کے خلاف آج مکمل ہڑتال اوراحتجاجی مظاہروں کی کال دے دی گئی ہے۔تفصیلات کے مطابق بھارتی فورسز نے شمالی کشمیر کے بانڈی پورہ علاقہ میں بڑے پیمانے پر سرچ آپریشن شروع کردیا۔آلوسہ کے علاقہ میں بھارتی فورسز نے کشمیری مجاہدین کی موجودگی کا دعویٰ کرتے ہوئے وسیع پیمانے پر سرچ آپریشن کا آغاز کر دیا ہے۔ آپریشن میں مجاہدین کے خلاف کارروائیوں کے لیے تشکیل دیاگیاسپیشل آپریشنزگروپ، 27راشٹریہ رائفلز ، سی آر پی ایف اور دیگر فورسز کے دستے شریک ہیں۔مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج نے ریاستی دہشتگردی کا مظاہرہ کرتے ہوئے مزید 6 کشمیریوں کو شہید کر دیا۔3روزمیں شہادتیں 14ہو گئیں۔ قابض فوج نے ضلع کلگام میں سرچ آپریشن کے دوران نوجوانوں کو فائرنگ کر کے قتل کیا۔ شہید نوجوانوں کو گرفتار کر کے پہلے ان پر بہیمانہ تشدد کیا گیا اور پھر مجاہد قرار دے کر ماورائے عدالت قتل کر دیا گیا۔ شہید کئے  گئے  نوجوانوں کی شناخت گلزار احمد، فیصل احمد راٹھر، زاہد احمد میر، مسرور احمد مولوی اور ظہور احمد کے ناموں سے ہوئی۔بھارتی فوج کی ریاستی دہشتگردی کیخلاف علاقہ مکینوں نے شدید احتجاج کیا تو قابض فوج نے مظاہرین پر بھی فائرنگ اور شیلنگ کر دی جس کے نتیجے میں متعدد افراد زخمی ہو گئے۔نوجوانوں کی شہادت کے خلاف کلگام اور اسلام آباد کے اضلاع میں شٹر ڈاؤن کیا گیا، تمام دکانیں اور کاروباری مراکز بند کر دئیے گئے اور سڑکوں پر ٹریفک معطل ہو گئی۔حالات پر قابو پانے کے لیے انتظامیہ نے دونوں اضلاع میں موبائل فون جبکہ وادی بھر میں ٹرین سروس معطل کر دی۔ میڈیا سروس کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی ریاستی دہشت گردی کے نتیجے میں 2 کشمیری نوجوانوں سمیت ایک پی ایچ ڈی اسکالر شہید ہوگیا، ضلع ہنڈوارا میں سرچ آپریشن کے دوران قابض فوج کی فائرنگ کے نتیجے میں 18 سالہ فرقان اور لیاقت احمد شہید ہوگئے۔دوسری جانب سری نگر کے علاقے میں بھارتی فوج نے فائرنگ کرکے 42 سالہ پی ایچ ڈی اسکالر عبدالغنی کو شہید کردیا، کشمیریوں کوشہید کئے جانے کیخلاف وادی کے مختلف علاقوں میں مکمل ہڑتال ہوئی اورزبردست احتجاجی مظاہریکئے گئے۔سری نگر، پلوامہ، بانڈی پورہ، بانہال،جموں اوردیگر علاقوں میں ہڑتال کیدوران تمام کاروباری مراکز، پٹرول پمپ اوربینک بندرہے۔تعلیمی اداریب ھی بندرکھے گئے اور موبائل،انٹرنیٹ سروس معطل رہی۔کشمیری میڈیا سروس کا مزید کہناتھا کہ بارہ مولاکے علاقے زیناگیر میں بھی بھارتی مظالم کیخلاف ہڑتال ہوئی۔ سوپور اور زیناگیر میں تمام کاروباری مراکز بند رہے جبکہ ٹریفک بھی معطل رہی۔بعدازاں کشمیر حریت رہنماؤں کی جانب سے مشترکہ بیان بھی جاری کیا گیا جس میں کہا گیا کہ بھارت طاقت کے زور پر کشمیریوں کا حق خودارادیت کو ختم نہیں کر سکتا۔کشمیری عوام کبھی بھی بھارتی مظالم کے آگے سر تسلیم خم نہیں کریں گے اور نہ ہی کشمیریوں کی قربانیاں رائیگاں جائیں گی۔بیان میں کہا گیا مودی سرکار مقبوضہ وادی میں ظلم کی داستانیں رقم کر رہی ہے‘جو کہ عالمی قوانین کی کھلی خلاف ورزی۔عالمی برادری کو اس ضمن میں نوٹس لینا چاہیے۔شہداء  کی نمازجنازہ میں ہزاروں افراد نے شرکت کی۔

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online