Bismillah

672

۶تا۱۲ربیع الثانی۱۴۴۰ھ  بمطابق       ۱۴تا۲۰دسمبر۲۰۱۸ء

انڈونیشیا ، زلزلے اور سونامی سے سینکڑوں عمارتیں ملبے کا ڈھیر بن گئیں، 1200 افراد جاں بحق

(شمارہ 662)

انڈونیشیا ، زلزلے اور سونامی سے سینکڑوں عمارتیں ملبے کا ڈھیر بن گئیں، 1200 افراد جاں بحق

ہزاروں زخمی ،دنیا کے بڑے جزائز میں شال سولا ویسی میں جگہ جگہ لاشیں، 10 فٹ بلند لہروں کا پہلا ہدف ساحلی میلے کے شرکا بنے، سمندر میں موجود جہاز خشکی پر آگیا
10ہزاربے گھر،سونامی سے متاثرین کی تعداد15لاکھ سے زیادہ، ریکٹر اسکیل پر زلزلے کی شدت 7.5 ریکارڈ،مواصلاتی نظام کی تباہی امدادی کاموں میں رکاوٹ

جکارتہ (نیٹ نیوز) انڈونیشیا کے جزیرہ سولاویسی کے ساحلی شہر پالو میں شدید زلزلے اور سونامی کے نتیجے میں 1200سے زائد افراد جاں بحق، ہزاروں زخمی جبکہ سینکڑوں لاپتہ  ہوگئے۔ زلزلے کی وجہ سے سیکڑوں عمارتیں ملبے کا ڈھیر بن گئیں اور مرنے والوں کی لاشیں سڑکوں اور گلیوں سمیت مختلف مقامات پر بکھری پڑی ہیں۔ متعدد لوگوں نے زلزلے کے وقت بلند عمارتوں سے چھلانگیں لگا دیں۔ مواصلاتی نظام متاثر ہونے کے باعث حکام کو امدادی کاموں میں مشکلات کا سامنا ہے۔ سمندر کی بلند لہروں نے ایسے وقت میں لوگوں کو لپیٹ میں لیا، جب ساحل پر سیکڑوں افراد ایک میلے میں شریک تھے۔اسپتالوں کے متاثر ہونے   کے باعث زخمیوں کو کھلے آسمان تلے طبی امداد دی جا رہی ہے۔ زلزلے کے باعث سولاویسی کے ساحلی شہر پالو کا واحد رن وے بھی بری طرح متاثر ہوا، تاہم جلد ہی رن وے طیاروں کی لینڈنگ کے قابل بنا دیا گیا۔ انڈونیشیا کے صدر نے فوج کو متاثرہ علاقوں میں بھیجنے کا اعلان کیا ہے۔ اقوام متحدہ سمیت عالمی برادری نے انڈونیشیا کو امداد کی فراہمی شروع کردی ہے۔ تفصیلات کے مطابق انڈونیشیا میں دنیا کے بڑے جزائر میں شامل سولاویسی میں ہفتہ کی سہ پہر 3بجے شدید زلزلہ آیا، جس کے نتیجے میں ساحلی شہر پالو اور ڈونگلا شدید متاثر ہوئے۔ ریکٹر اسکیل پر اس کی شدت ریکٹر 7.5ریکارڈ کی گئی۔امریکی جیولاجیکل سروے کے مطابق زلزلے کا مرکز صرف 10 کلومیٹر کی گہرائی پر تھا۔ ہفتہ کو پالو اور ڈونگلا میں زلزلے کے جھٹکے 3بار محسوس کئے گئے۔ ان میں سے 2 کی شدت 4.9ریکٹر اسکیل تھی۔ اس کے بعد 5.8 شدت کا زلزلہ آیا۔ ان سب کے بعد 7.5شدت کا زلزلہ ریکارڈ کیا گیا۔ انڈونیشیا کی جانب سے زلزلہ آنے کے فوری بعد سونامی کا الرٹ جاری کیا گیا جو فوری بعد ہی 3میٹر بلند لہریں پالو شہر سے ٹکرانے کے باعث واپس لے لیا گیا۔ انڈونیشیا کے حکام نے ساڑھے 3لاکھ نفوس پر مشتمل پالو شہر میں1200 سے زائد ہلاکتوں کی تصدیق کی ہے۔ زلزلے کی وجہ سے سیکڑوں عمارتیں ملبے کا ڈھیر بن گئیں اور مرنے والوں کی لاشیں سڑکوں و گلیوں سمیت مختلف مقامات پر بکھری پڑی ہیں۔ درجنوں لاشیں پولیس اور فوج کے اسپتالوں کے باہر رکھی گئی ہیں، تاکہ لوگ پیاروں کو شناخت کر سکیں۔ پالو میں بجلی اور مواصلاتی نظام منقطع ہو چکا ہے، جس کی وجہ سے امدادی کاموں میں شدید مشکلات آرہی ہیں اور اس کے نتیجے میں آئندہ ایام میں ہلاکتوں کی تعداد بڑھنے کا خدشہ ہے۔ سمندر کی بلند لہروں نے ایسے وقت میں لوگوں کو لپیٹ میں لیا،جب ساحل پر سیکڑوں افراد ایک میلے میں شریک تھے۔ زلزلے و سونامی کے بعد بیسیوں لوگ اب تک لاپتہ ہیں۔ اسپتالوں میں گنجائش ختم ہونے کے باعث زخمیوں کو کھلے آسمان تلے طبی امداد دی جا رہی ہے۔امدادی سرگرمیوں کے دوران ملبے تلے دبے افراد کو بچانے کی کوششیں شروع کردی گئی ہیں۔انڈونیشیامیں زلزلے اورسونامی سے تباہی کے نتیجے میں متاثرہونے والوں کی تعداد15لاکھ سے زیادہ ہے۔ریڈ کراس کے مطابق اس قدرتی آفات میں کم از کم 16 لاکھ افراد متاثر ہوئے ہیں۔ خیال ظاہر کیا جا رہا ہے کہ اس آفات میں ہونے والا اصل نقصانات ابتدائی اندازوں سے کہیں زیادہ ہو سکتے ہیںپالو میں اب بھی متعدد افراد مبینہ طور پر ملبے تلے دبے ہوئے ہیں، ہلاکتوں کی تعداد ابتدائی اندازوں سے کہیں زیادہ ہے۔حکام نے بتایا کہ متاثرہ علاقوں میں امدادی کام جاری ہیں جبکہ دور دراز علاقوں تک رسائی حاصل کرنے میں مشکلات کا سامنا ہے۔ طبی ذرائع نے اتوار کے دن بتایا کہ ان قدرتی آفات کی وجہ سے 10 ہزار سے زائد بے گھر ہو گئے۔

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online