Bismillah

599

۲۷رمضان المبارک تا۳شوال المکرم ۱۴۳۸ھ        بمطابق      ۲۳تا۲۹جون۲۰۱۷ء

طالبان حملوں، دھماکوں میں85 اتحادی ہلاک،12 ٹینک14فوجی گاڑیاں تباہ

(شمارہ 597)

طالبان حملوں، دھماکوں میں85 اتحادی ہلاک،12 ٹینک14فوجی گاڑیاں تباہ

کابل کے سفارتی  علاقے میں دھماکے سے 97ا فراد ہلاک،440 زخمی،جنازے میں بھی حملہ، چیف ایگزیکٹو عبداللہ ، وزیر خارجہ صلاح الدین ربانی موجود تھے
قندہار میں تھانہ پر حملے میں سربراہ و نائب سربراہ سمیت 24ہلاک،قندوز گورنر ہاوس، قندہار ائیربیس پر میزائل حملے،7صوبوں پر مجاہدین نے تباہ کن کارروائیاں کیں
قندوز، فاریاب، قندہار، نیمروز، پکتیا، ہلمند میں 37اہلکار طالبان کے کام آئے، 4ٹینک تباہ،قندوز میں6 بڑے دیہاتوں پر مجاہدین نے قبضہ کرلیا
جلال آباد ائرپورٹ پر کار بم دھماکہ میں ایک فوجی ہلاک،صوبہ پکتیکا میں ڈسٹرکٹ گورنر بیٹے سمیت قتل،گھر کے باہر نشانہ بنایا گیا،غزنی میںضلعی سربراہ سمیت17 ہلاک
ہرات میں فوجی کاروان پر مجاہدین کا دھاوا15 ٹینک و فوجی گاڑیاں تباہ،پکتیا میں 4چوکیاں فتح، کٹھ پتلی اسلحہ چھوڑ کر فرار،بدخشان، ننگر ہار میں28اہلکار مارے گے

کابل(نیٹ نیوز)افغانستان میں منصوری آپریشن میں مزید تیز آگئی، طالبان نے مختلف بم، فدائی حملوں اور دھماکوں میں 85 اتحادی فوجی ہلاک اور 12 ،14 فوجی گاڑیاں تباہ کردیں،مجاہدین نے قندوز میں6 دیہات اور دیگر علاقوں میں 10 چوکیوں پر قبضہ کرلیا، قندھار میں تھانہ پر حملے میں سربراہ و نائب سربراہ سمیت 24 ہلاک، قندوز گورنر ہاؤس ، قندھار ایئر بیس پر میزا حملے،7 صوبوں میں مجاہدین کی تباہ کارکن کارروائیاں دو درجن سے زائد فوجی نشانہ بنائے،قندوز، فاریاب، قندہار، نیمروز، پکتیا، ہلمند میں 37اہلکار طالبان کے کام آئے، 4ٹینک تباہ،قندوز میں6 بڑے دیہاتوں پر مجاہدین نے قبضہ کرلیا۔جلال آباد ائرپورٹ پر کار بم دھماکہ میں ایک فوجی ہلاک،صوبہ پکتیکا میں ڈسٹرکٹ گورنر بیٹے سمیت قتل،گھر کے باہر نشانہ بنایا گیا،غزنی میںضلعی سربراہ سمیت17 ہلاک،ہرات  میں فوجی کاروان پر مجاہدین کا دھاوا15 ٹینک و فوجی گاڑیاں تباہ۔ کابل کے سفارتی  علاقے میں دھماکے سے 97ا فراد ہلاک،440 زخمی،جنازے میں بھی حملہ، چیف ایگزیکٹو عبداللہ ، وزیر خارجہ صلاح الدین ربانی موجود تھے۔تفصیلات کے مطابق منصوری آپریشن کے سلسلے میں قندہار میں پولیس سٹیشن پر طالبان کے حملے میں پولیس سٹیشن سربراہ اور نائب سربراہ سمیت 24 اہلکار ہلاک ہو گئے جبکہ قندوز شہر پر طالبان نے 57 میزائل داغے جس میں 2 میزائل گورنر ہاوس کے قریب گرے جس کے نتیجے میں 2 افراد زخمی ہو گئے جبکہ طالبان نے قندہار ایئر بیس پر میزائل داغے جس کے نتیجے میں امریکیوں کو ہلاکتوں کا سامنا ہوا جبکہ طالبان نے قندوز کے ضلع امام صاحب کے 5 چوکیوں پر قبضہ کر لیا جبکہ دیگر صوبوں میں طالبان حملوں میں 26 ہلاک ہو گئے۔افغانستان میں جلال آباد ائرپورٹ کے گیٹ کے سامنے کار بم دھماکے کے نتیجے میں ایک فوجی ہلاک ، پانچ افراد زخمی ہوگئے۔ غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق افغان صوبائی حکومت کے ترجمان عطاء اللہ خوگیانی نے بتایا کہ صوبہ ننگر ہار کے جلال آباد ائرپورٹ کے داخلی گیٹ کے سامنے کار بم دھماکہ ہوا جس کے نتیجے میں ایک فوجی ہلاک جبکہ پانچ دیگر افراد زخمی ہوگئے ۔افغانستان کے جنوب مشرقی صوبہ ارزگان میں افغان فوج اور پولیس کے درمیان جھڑپ میں 6اہلکار ہلاک جبکہ4زخمی ہو گئے۔ اطلاعات کے مطابق افغانستان کے جنوب مشرقی صوبہ ارزگان کے ضلع چورا میں پیر کے روز افطاری کے وقت بازار میں گاڑیوں کی پارکنگ کے مسئلے پر پولیس اور فوج کے درمیان فائرنگ کے تبادلے میں تین فوجی اور تین پولیس اہلکار ہلاک جبکہ چار زخمی ہو گئے۔آپریشن منصوری میں قندوز، فاریاب، قندہار، نیمروز، پکتیا، ہلمند میں طالبان حملوں اور بم دھماکوں میں 37اہلکار ہلاک جبکہ 4ٹینک ہوگئے، طالبان نے قندوز کے 6بڑے دیہات پر پربھی قبضہ کرلیا۔قندوز شہر کے ملرغی کے علاقے میں طالبان نے آپریشن کے دوران ایک کمانڈو کو گرفتار کرلیا اور اس کے قبضے سے اسلحہ بھی برآمدکر لیا۔ ضلع امام صاحب کے مرکز اور آس پاس چوکیوں پر ہلکے و بھاری ہتھیاروں سے حملہ کیا، طالبان ضلعی بازار میں داخل ہوگئے۔ حملے میں 5 اہلکار ہلاک اور ایک ٹینک بھی تباہ ہوا۔طالبان نے پانچ چوکیوں اور 6 بڑے دیہات کا کنٹرول حاصل کرلیا۔طالبان نے صوبہ فاریاب ضلع شیرین تگاب کے فیض آباد دشت کے علاقے میں واقع پولیس چوکی پر حملہ کیا، جو چار گھنٹے تک جاری رہا، جس کے نتیجے میں وہاں تعینات کمانڈر سمیت چار اہلکار ہلاک اوروہاں کھڑے دو فوجی ٹینک تباہ ہو گئے۔ ایک راکٹ لانچر، ایک کلاشنکوف، ایک ہینڈگرنیڈ، ایک موٹرسائیکل اور دیگر فوجی سازوسامان پر قبضہ کر لیا گیا۔صوبہ قندہار کے ضلع بولدک کے بیسی کے علاقے میں طالبان حملے میں ایک رینجر گاڑی تباہ اور اس میں سوار 2 اہلکار ہلاک جبکہ 2 زخمی ہوئے۔ تورہ کے علاقے میں بموں کے پانچ دھماکے ہوئے اور بعد میں طالبان نے حملہ کیا، جو تین گھنٹے تک جاری رہا، جس کے نتیجے میں پانچ اہلکار ہلاک و زخمی ہوئے۔ افغانستان کے صوبے پکتیکا میں نامعلوم مسلح افراد نے ڈسٹرکٹ گورنر اور ان کے بیٹے کو قتل کر دیا۔ صوبائی پولیس کے عہدیدار عبدالروف مسعود کا کہنا تھا کہ ڈسٹرکٹ گورنر اجمل خان کو ضلع شکیل آباد میں واقع ان کے گھر کے باہر نشانہ بنایا گیا جس کے نتیجے میں دونوں باپ بیٹا ہلاک ہوگئے۔صوبہ بدخشان ضلع تگاب کے کتوبالا کے علاقے میں مقامی جنگجوؤں، پولیس اہلکاروں اور کٹھ پتلی فوجوں نے مجاہدین کے مراکز پر حملہ کیا، جنہیں شدید مزاحمت کا سامنا ہوا اور لڑائی چھڑگئی، جس کے نتیجے میں 6 اہلکار ہلاک جبکہ 11 زخمی ہونے کے علاوہ مجاہدین نے کافی مقدار میں اسلحہ و دیگر فوجی سازوسامان غنیمت کرلی۔صوبہ ننگرہار ضلع پچیرآگام کے لاندی صبر کے علاقے گنڈیر کے مقام پر فوجی کاروان پر حملے اور دھماکے کے دوران دو ٹینک تباہ ہونے کے علاوہ 5 اہلکار ہلاک جبکہ 5 زخمی ہوئے۔ادھر منصوری آپریشن کے سلسلے میں مجاہدین نے قندہار شہر میں دشمن کو نشانہ بنایا۔جس کے نتیجے میں پولیس اسٹیشن سربراہ کمانڈر شیرعلی ان کا نائب کمانڈر بریتور مجید اور 24 پولیس اہلکار  ہلاک ہوئے۔دریں اثناء دونوں مجاہدین پولیس وردی میں ملبوس ایک ہیوی مشین گن اور دو کلاشنکوفوں کے ہمراہ مرکز کی جانب روانہ ہوئے اور راستے میں مزید چار پولیس اہلکاروں کو مار ڈالے۔ امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے صوبہ ہرات کے ادرسکن اور شینڈنڈ اضلاع میں فوجی کاروان پر حملہ کیا۔آمدہ رپورٹ کے مطابق مجاہدین نے ضلع فارسی جانے والے 70 ٹینکوں اور گاڑیوں پر مشتمل کاروان پر ہلکے و بھاری ہتھیاروں سے حملہ کیا اور ساتھ ہی دشمن پر شدید دھماکے بھی ہوئے۔ذرائع کے مطابق کاروائی کے دوران 17 فوجی ٹینک، 5 رینجر اور 4 کاماز گاڑیاں تباہ ہونے کے علاوہ 67 اہلکار ہلاک جبکہ 42 زخمی اور دیگر صدر مقام ہرات شہر کی جانب فرار ہوئے اور ساتھ ہی مجاہدین نے ایک اینٹی ایئرکرافٹ گن، ایک راکٹ، ایک ہیوی مشین گن، دو لیزرگن، دو دوربین، ایک ہینڈگرنیڈ اور دیگر فوجی سازوسامان بھی غنیمت کرلی۔علاوہ ازیں افغانستان کے دارالحکومت کابل میں غیر ملکی سفارتخانوں اور صدارتی محل کے قریب زمبیق اسکوائر میں بارود سے بھرے واٹر ٹینکر کے دھماکے میں 97افراد ہلاک جبکہ 400سے زائد زخمی ہو گئے۔زخمیوں میں کئی کی حالت نازک ہے، ہزاروں کلو گرام بارود سے بھرا واٹر ٹینکر وزیر اکبر خان کے علاقے میں واقع ڈپلومیٹک انکلیومیں چوتھے روڈ پر واقع جرمن اور ایرانی سفارتخانے کی جانب بڑھ رہا تھا کہ ٹریفک جام ہونے اور جرمن سفارتخانے کے سیکورٹی گارڈز کی جانب سے روکنے کی کوشش کے نتیجے میں حملہ آور نے ٹینکر کو دھماکے سے اڑا دیا جس کے نتیجے میں موقع پر 80افراد ہلاک جبکہ400 زخمی ہو گئے بعد ازاں 17افراد مختلف ہسپتالوں میں دم توڑ گئے۔اندرا گاندھی ہسپتال میں 300کے قریب زخمیوں کو لایاگیا جبکہ خوشحال ہسپتال میں 100سے زائد زخمی لائے گئے۔نیٹو کے ملٹری ہسپتال میں جرمن،فرانس اور دیگر سفارتخانوں کے زخمی اہلکاروں کو لایاگیا اطلاعات کے مطابق دھماکے کے نتیجے میں غیر ملکیوں کیلئے بنائے گئے آٹھ ریسٹورانٹ مکمل طور پر تباہ ہو گئے

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online