Bismillah

621

۱۹تا۲۵ربیع الاول۱۴۳۸ھ   بمطابق۸تا۱۴دسمبر۲۰۱۷ء

صہیونی فورسز کی فائرنگ سے فلسطینی لڑکی شہید، 13برس میں3ہزار فلسطینی بچے شہید کئے گئے، رپورٹ

(شمارہ 597)

صہیونی فورسز کی فائرنگ سے فلسطینی لڑکی شہید، 13برس میں3ہزار فلسطینی بچے شہید کئے گئے، رپورٹ

جنین میں لڑکی کو فوجی کو چاقو مار کر زخمی کرنے کے الزام میں گولی مار دی گئی،غزہ کی پٹی کے ساحل سمندر کا 50 فیصد پانی آلودہ قرار،نہانے و دیگر استعمال کے قابل بھی نہیں
مسلسل 41روز بھوک ہڑتال کرنے والے فلسطینی قیدی ہسپتالوں سے دوبارہ جیلوں میں منتقل،رمضان المبارک میں اسرائیلی سکیورٹی میں قبلہ اول کی بے حرمتی جاری

مقبوضہ بیت المقدس(نیٹ نیوز) اسرائیلی فورسز کی دہشت گردی کارروائیاں جاری، چاقو حملے کا الزام لگا کر 16 سالہ فلسطینی لڑکی کو گولیوں سے بھون  ڈالا، لڑکی کو حنین میں یہودی بستی کی چیک پوسٹ پر نشانہ بنایا گیا دوسری جانب ایک رپورٹ  میں کہا گیا ہے کہ 13 برس کے دوران اسرائیلی فورسز نے 3 ہزار بے گناہ فلسطینی بچوں کو شہید کیا،مسلسل 41روز بھوک ہڑتال کرنے والے فلسطینی قیدی ہسپتالوں سے دوبارہ جیلوں میں منتقل، ادھر اسرائیلی سکیورٹی میں یہودی آبادکاروں کی جانب سے قبلہ اول کی مسلسل بے حرمتی کا سلسلہ جاری ہے، غزہ کی پٹی کے ساحل سمند رکا 50 فیصد پانی آلود ہ قرار دے دیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق  مقبوضہ بیت المقدس (امت نیوز) اسرائیلی فوجی کو چاقو مار کر زخمی کرنے کے الزام میں 16 سالہ فلسطینی لڑکی کو فائرنگ کر کے شہید کر دیا گیا۔ مغربی میڈیا کے مطابق ا سرائیلی فوج نے ایک بیان میں اعلان کیا ہے کہ جنین کے جنوب مغرب میں واقع میفو دوتان کی یہودی بستی کی چیک پوسٹ پر فلسطینی لڑکی نے ایک اسرائیلی فوجی کو چاقو مارا جس سے وہ معمولی زخمی ہوا۔ اس پر لڑکی کو گولی مار دی گئی۔ لڑکی نے اسپتال میں دم توڑا۔فلسطینی محکمہ امور اسیران کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ بھوک ہڑتال کے باعث ہسپتالوں اور دوسری جیلوں میں منتقل کئے گئے فلسطینی قیدی واپس پرانے قید خانوں میں ڈال دیئے گئے ہیں۔ فلسطینی میڈیا رپورٹس کے مطابق فلسطینی محکمہ اسیران نے کہا ہے کہ عسقلان جیل میں قید تمام فلسطینی بھوک ہڑتالیوں کی صحت اب بھی خراب ہے۔ انہوں نے مسلسل 41دن بھوک ہڑتال کی تھی جس کے بعد انہیں صحت خراب ہونے پر دوسرے جیلوں میں قائم کردہ فیلڈ ہسپتالوں میں لایا گیا تھا۔فلسطین میں ماہ صیام کے باوجود یہودی اشرار کی جانب سے قبلہ اول کی مسلسل بے حرمتی کا سلسلہ جاری ہے۔گزشتہ روز اسرائیلی پولیس کی فول پروف سیکیورٹی میں 150 یہودی آباد کاروں نے قبلہ اول میں گھس کر نام نہاد مذہبی رسومات کی ادائی کی آڑ میں مقدس مقام کی بے حرمتی کی۔ ’قدس پریس‘ کی رپورٹ کے مطابق سوموار کو دن کے پہلے حصے میں پولیس کی فول پروف سیکیورٹی میں 100سے زائد یہودی آباد کار باب المغاربہ سے داخل ہوئے اور کئی گھنٹے مسجد میں گھومنے پھرنے کے بعد باب السلسلہ سے باہر نکلے۔فلسطینی ذرائع ابلاغ نے خبر دی ہے کہ اسرائیلی فوجیوں نے 28 ستمبر 2000 سے رواں سال اپریل کے مہینے تک فلسطین کے 3000 سے زائد بچوں کو شہید کیا ہے۔ فلسطینی وزارت اطلاعات و نشریات نے عالمی یوم اطفال کی مناسبت سے جاری بیان میں کہا ہے کہ اس دوران 13 ہزار فلسطینی بچے اسرائیل کی گولیوں سے زخمی ہوئے ہیں اور 12 ہزار سے زیادہ بچے قیدی بنائے گئے ہیں جن میں سے 300 بچے ابھی تک صیہونی جیلوں میں قید ہیں۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اسرائیلی جیلوں میں قید 95 فیصد فلسطینی بچوں کو شدید ٹارچر اور اذیت کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ رپورٹ کے مطابق اسرائیلی حکومت ہر سال 700 بچوں کو قیدی بناتی ہے لیکن اکتوبر 2015 میں قدس انتفاضہ شروع ہونے کے بعد سے فلسطینی بچوں کی گرفتاری میں تیزی سے اضافہ ہوا ہے اور دسمبر 2016 تک 2000 ہزار سے زائد فلسطینی بچوں کو صیہونی فوجیوں نے قیدی بنایا ہے۔

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online