Bismillah

613

۲۲تا۲۸محرم الحرام۱۴۳۸ھ   بمطابق ۱۳تا۱۹اکتوبر۲۰۱۷ء

جعلی مقابلے میں طالبعلم سمیت 3 کشمیری شہید، کئی نوجوان گرفتار

(شمارہ 610)

جعلی مقابلے میں طالبعلم سمیت 3 کشمیری شہید، کئی نوجوان گرفتار

نوگام میں  ابواسماعیل اورابوقاسم کو  محاصرے کے دوران مجاہد قرار دے کر شہید کیا گیا،راجوری میں طالبعلم گھر کے قریب مردہ حالت میں پایا گیا
پراسرار موت پر مظاہرے، طلبہ نے احتجاجاً کلاسوں کا بائیکاٹ کردیا،درجنوں گرفتار، قابض فوجیوں نے جعلی مقابلے میں شہید کیا،مظاہرین،شوپیاں میں حالات کشیدہ
پہلگام میں بھارتی فوجی چوکی جل گئی،بانڈی پورہ کے علاقے حاجن پورہ سے باپ بیٹا گرفتار،پلوامہ اور شوپیاں میں قابض فورسز کا بڑے پیمانے پر آپریشن
سرینگر کے راستے خاردار تاروں سے سیل،ایمنسٹی کا کشمیریوں کیخلاف پیلٹ گنز کا استعمال روکنے کا مطالبہ ،متاثرہ کو زر تلافی ادا کیا جائے ، انسانی حقوق تنظیم

سرینگر(نیٹ نیوز) مقبوضہ کشمیر بھر میں قابض فورسز کی گھر گھر تلاشی کارروائیاں، جعلی مقابلے میں طالبعلم سمیت 3 کشمیری نوجوان شہید  جبکہ کئی نوجوانوں کو گرفتار کرلیا،راجوری میں طالبعلم گھر کے قریب مردہ حالت میں پایا گیا،سرینگر کی تاریخی جامع مسجد میں نماز جمعہ کی ادائیگی پر پھر پابندی تمام  راستے خار دار تاروں سے سیل ،پہلگام میں بھارتی فوجی چوکی جل گئی، بانڈی پورہ سے باپ بیٹا گرفتار، پلوامہ اور شوپیاں میں قابض فورسز کا بڑے پیمانے پر آپریشن،سرینگر کے راستے خاردار تاروں سے سیل،ایمنسٹی کا کشمیریوں کیخلاف پیلٹ گنز کا استعمال روکنے کا مطالبہ ۔تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیرمیں قابض بھارتی فوج نے2کشمیری نوجوان شہید کردیے ہیں۔بھارتی میڈیاکادعویٰ ہے کہ شہید کئیگئے دونوں کشمیری مجاہدین ہیں ۔دوسری طرف کشمیری میڈیا کے مطابق بھارتی قابض فوج وادی میں آزادی کی بڑھتی ہوئی تحریک سے بوکھلائی ہوئی ہے اورآئے روزاس تحریک میں شامل کشمیری نوجوانوں کوگرفتارکرکے جعلی مقابلوں میں شہید کرکے’’جھڑپیں‘‘ قراردیرہی ہے اورگزشتہ چند ماہ سے درجنوں نوجوانوں کوفیک ان کاؤنٹرز (جعلی مقابلوں)میں شہیدکیاجاچکاہے اوریہ سلسلہ اب تک جاری ہے۔کشمیری میڈیا کاکہنا ہیکہ بھارتی فورسزکے ساتھ مجاہدین کی حقیقی جھڑپیں   ایسی نہیں ہوتیں کہ ان میں بھارتی فوجیوں کو آنچ بھی نہ آئے۔بھارتی فوج نے جنوبی کشمیر میں شوپیاں کے امام صاحب علاقہ میں بڑے پیمانے پر سرچ آپریشن شروع کر دیا ،راجوری ضلع میں ایک طالب علم کی پراسرار موت کے بعد طلباء نے زبردست احتجاجی دھرنا دیا اور احتجاجی مظاہرہ کیا ہے۔بھارتی فوج نے امام صاحب کے علاقے میں مجاہدین کی موجودگی کا دعویٰ کیا ہے اور اسی بنیاد پر سرچ آپریشن کیا جارہا ہے۔ گورنمنٹ ہائی سکول سیری نوشہرہ میں زیر تعلیم ایک طالب علم کو اپنے گھر کے قریب پراسرار حالت میں مردہ پایا گیا تھاجس پر گذشتہ روز اس کے سکول کے ساتھیوں نے اپنے کلاسوں کا بائیکاٹ کرتے ہوئے اس کی پر اسرار موت کی فوری تحقیق کا مطالبہ کیا ہے۔مظاہرین کا کہنا تھا کہ طالبعلم کو قابض فورسز نے جعلی میں مقابلے شہید کیا اور پھر لاش اس کے گھر کے نزدیک پھینک دی۔بھارتی فوج کی طرف سے پلوامہ ،شوپیاں اوردیگر علاقوں میں بڑے پیمانے پرسرچ آپریشن کے دوران اورمظاہرہ کرنے والے طلباو طالبات اور نہتے کشمیریوں پر بھارتی فوج   نے بدترین تشددکیا اورہوائی فائرنگ کی نوجوانوں کے زبردست پتھراؤکے بعدجھڑپوں میں متعددکشمیری زخمی ہوگئے۔چھاپوں اورسرچ آپریشن کے دوران کئی کشمیری نوجوانوں کوگرفتارکرلیاگیا۔شوپیاںمیں بھارتی فوج نے کشمیری مجاہدین کی موجودگی کادعویٰ کرتے ہوئے چاردائروں والی سکیورٹی تعینات کردی ۔انسانی حقوق کی بنم الاقوامی تنظمس ایمنسٹی انٹرنشنل نے بھارتی حکومت سے مطالبہ کام ہے کہ وہ جموں و کشمیر میں فوری طور پر پیلیٹ گنز (چھرے والی بندوقوں) کا استعمال بند کرے۔پیلٹ گنز کے استعمال سے متعدد نوجوان بینائی سے محروم ہوئے، بھارتی حکومت زخمیوں اور مارے جانے والے افراد کے ورثا کو زر تلافی ادا کرے۔ جبکہ بلا جواز استعمال کی تحقیقات کرائی جائیں۔بھارتی فوج نے ایک بارپھر مقبوضہ سری نگر کی تاریخی جامع مسجد میں نماز جمعہ کی ادائیگی پرپابندی لگا دی۔ نوگام میں دو مجاہدین کی شہادت کے بعد مظاہروں کے خوف سے ایک دن قبل ہی تمام راستے بند کر کے کرفیو جیسی پابندیاں عائد کر دی تھیں۔ اسی طرح انٹرنیٹ سروس بھی بند رکھی گئی ۔ کشمیری شہداء کی نماز جنازہ میں ہزاروں افراد نے شرکت کی اور بھارتی فورسز کیخلاف شدید نعرے بازی کی گئی۔ جمعہ کے دن تمام تعلیمی ادارے بھی بند رہے۔ مختلف علاقوں میں بھارتی فوج اور کشمیریوں کے مابین جھڑپیں بھی ہوئی۔ بھارتی فورسز اہلکاروں کی جانب سے نہتے کشمیریوں کی شہادت اور این آئی اے کی جانب سے حریت پسندوں کی گرفتاریوں کیخلاف سری نگر ، پلوامہ، بانڈی پورہ اور دیگر علاقوں میں نماز جمعہ کے بعد بڑے احتجاجی مظاہرے ہوئے۔ اس دوران ہزاروں افراد سڑکوں پر نکل آئے اور بھارتی فورسز کے مظالم کیخلاف شدید نعرے بازی کی گئی۔ بھارتی فوج کی جانب کشمیریوں کو تاریخی جامع مسجد میں نماز جمعہ کی ادائیگی کی اجازت نہ دیے جانے کیخلاف بھی سخت احتجاج کیا گیا۔ بھارتی فوج اور کشمیریوں کے مابین زوردار جھڑپیں بھی ہوئی ہیں۔ بھارتی فورسز اہلکار وں کی طرف سے کشمیریوں کیخلاف بدترین لاٹھی چارج اور آنسو گیس کی شیلنگ کی گئی جس میں متعدد افراد زخمی ہوئے ہیں۔ مجاہدین ابو اسماعیل اور ابو قاسم کی شہادت کے بعد بھارتی فوج کشمیریوں کے متوقع احتجاجی مظاہروں سے بری طرح خوفزدہ ہو کر کرفیو جیسی پابندیاں لگا دیں۔

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online