Bismillah

621

۱۹تا۲۵ربیع الاول۱۴۳۸ھ   بمطابق۸تا۱۴دسمبر۲۰۱۷ء

جیش محمدﷺ کے آپریشنل کمانڈر یاسر جام شہادت نوش فرما گئے

(شمارہ 613)

جیش محمدﷺ کے آپریشنل کمانڈر یاسر جام شہادت نوش فرما گئے

بارہ مولہ ایمبش لگا کر انڈین فوجی کانوائے پر حملہ،JCO سمیت4 ہلاک، پہلی جھڑپ میں یاسر جمیل عرف خالد بھائی شدید زخمی حالت میں بچ نکلے
زخمی حالت میں موٹرسائیکل پر جاتے دشمن سے پھر ٹکراؤ ہوگیا، سکول کی عمارت کو مورچہ بناکر قابض فورسز کا دلیرانہ مقابلہ کرتے ہوئے جام شہادت نوش کر گئے
پیلٹ گن کے بعد مقبو ضہ کشمیر میں مظاہرے کچلنے کیلئے نیا ہتھیار متعارف، پلاسٹک کی گولیاں وادی پہنچا دی گئیں،خواتین کی چوٹیاں کاٹنے کیخلاف احتجاج
مجاہدین کے نام پر جعلی آپریشن پرہزاروں کشمیری سڑکوں پرنکل آئے،بھارتی فوج پرزبردست پتھراؤ -جھڑپیں،لاٹھی چارج ،آنسو گیس کی شیلنگ سے متعددزخمی

سرینگر(نیٹ نیوز)مقبوضہ کشمیر میں مجاہدین کا ایمبش لگا کر انڈین کانوائے پر حملہ، جیش محمدﷺ کے آپریشنل کمانڈر یاسر جمیل عرف خالد بھائی جام شہادت نوش کرگئے، حملے میں بھارتی جونیئر افسر سمیت 3 اہلکار ہلاک ہوگئے، قابض فورسز نے پیلٹ گن کے بعد مقبوضہ کشمیر میں مظاہرین کو کچلنے کے لئے نیا ہتھیار متعارف کرایا، پلاسٹک کی گولیاں وادی میں پہنچا دی گئیں جبکہ دوسری جانب خواتین کی چوٹیاں اور داڑھی کاٹنے کے خلاف وادی بھر میں مظاہروں کا سلسلہ جاری، مجاہدین کے نام پر جعلی آپریشن پر ہزاروں کشمیری سڑکوں پر نکل آئے، بھارتی فوج پر زبردست پتھراؤ، جھڑپوں میں متعدد کشمیری زخمی، فورسز نے لاٹھی چارج، آنسو گیس کا بے دریغ استعمال کیا۔ تفصیلات کے مطابق ڈویژنل کمانڈر شمالی کشمیر یاسر جمیل عرف خالد بھائی جام شہادت نوش کر گئے،دشمن کا بھاری نقصان جے سی او سیمت 4 اہلکار واصل جہنم، درجنوں زخمی ہوگئے۔مجاہدین نے ضلع بارہ مولہ میں لدورہ رفیع آباد تحصیل رحامہ میں انڈین آرمی کے کانوائے پر ایمبش لگا کر حملہ کیا اور بھاری ہتھیاروں سے دشمن کو نشانہ بنانا شروع کیا۔ جھڑپ کافی دیر تک چلتی رہی جس میں انڈین آرمی کا ایک جونئئر کمانڈر آفیسر اور 3 اہلکار موقع پر واصل جہنم کئے گئے، جھڑپ میں بہت سے اہلکار زخمی ہوئے اور گاڑیوں کو شدید نقصان پہنچا۔کارروائی کے دوران   دشمن کے فائر سے یاسر بھائی زخمی ہوگئے ، کارروائی کے مقام سے وہ کافی دور نکل آئے، زخمی ہونے کی وجہ سے پیدل چلنا دشوار ہوگیا توانہوں نے  اپنا حلیہ تبدیل کیا اور موٹر سائیکل پر سفر شروع کیا۔ کانوائے پر کارروائی سے دشمن ہر طرف الرٹ ہوچکا تھا مگر یاسر بھائی کے لئے زخمی حالت میں پیدل چلنا ممکن نہ تھا، مجبوراً انہوں نے موٹرسائیکل سفر کا رسک لیا تھا۔موٹرسائیکل پر جاتے ہوئے اچانک وہ ایک غیر متوقع ناکے پر پہنچے، آرمی نے رکنے کا اشارہ کیا انہوں نے گرنیڈ فائر کیا۔ وہاں سے دوبارہ نکلنے کی کوشش کی مگر زخمی ہونے کی وجہ سے زیادہ دور نہ جاسکے اور ایک سکول کی بلڈنگ کو لڑنے کے لئے بطور مورچہ استعمال کرنے کے لئے عمارت میں داخل ہوگئے جب تلاشی کے دوران انڈین آرمی وہاں پہنچی تو انہوں نے ڈٹ کر مقابلہ کیا۔ کافی دیر معرکہ آرائی جاری رہی۔ بالآخر یاسر بھائی وہیں جام شہادت نوش کر گئے۔مقبوضہ کشمیر کے پلوامہ ضلع میں کشمیری مجاہدین کیخلاف بھارتی فورسز کاآپریشن روکنے کیلئے ہزاروں کشمیری سڑکوں پر نکل آئے اور بھارتی فوج پر زبردست پتھراؤ کیا گیا جس پر کشمیریوں اور درندہ صفت فوج کے مابین شدید جھڑپیں ہوئی ہیں۔ بھارتی فوج نے اشتعال میں آکر ایک کشمیری کے گھر کو آگ لگا دی جسے کشمیری مظاہرین بڑی مشکل سے بجھانے میں کامیاب ہو گئے۔ جھڑپوں میں متعدد کشمیری زخمی ہوئے ہیں۔ بھارتی فوج اور سی آر پی ایف نے پلوامہ کے بیلو گاؤں میں کشمیری مجاہدین کی موجودگی کا دعویٰ کرتے ہوئے اچانک گھیراؤ کر کے سرچ آپریشن شروع کر دیا اور مقامی کشمیریوں کو شدید ہراساں کیا گیا جس پر ہزاروں کشمیری نوجوانوں نے سڑکوں پر نکل کر احتجاجی مظاہرے شروع کردیے اور بھارتی فوج پر پتھراؤ کرتے رہے۔بھارتی فوج کی جانب سے کشمیریوں پربدترین لاٹھی چارج کیاگیا۔مقبوضہ کشمیر میں خواتین کی چوٹیاں کاٹے جانے کے واقعات کے خلاف حریت قیادت نے ہڑتال کا اعلان کردیا جبکہ مظاہرے کچلنے کے لئے بھارتی فوج پلیٹ گنز کے ساتھ ساتھ نئے ہتھیار کے طور پر اب پلاسٹک کی گولیاں بھی استعمال کرے گی۔سری نگر اور بارہ مولا میں تین افراد کو خواتین کی چوٹیاں کاٹنے کے شک میں تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔وادی میں مسلسل بڑھتے ہوئے ان واقعات کے خلاف حریت قیادت نے کل وادی میں مکمل ہڑتال کااعلان کیاہے۔کٹھ پتلی حکومت نے خواتین کی چوٹیاں کاٹنے کے خلاف احتجاج کی کال دینے پر 6 اکتوبر کو حریت قیادت کو نظربند کردیا تھا تاہم حریت رہنماؤں نے ایک مرتبہ پھر احتجاج اور شٹرڈاؤن ہڑتال کی کال دی ہے۔نٹی پورہ کے بعد پانتہ چوک علاقہ میں نامعلوم افراد نے ایک بیوہ خاتون کی چوٹی کاٹ ڈالی۔ اس کے خلاف لوگوں نے جموں سرینگر شاہراہ پر آکر شدید احتجاج کیا۔شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ کے سنگری نامی گاوں میں نامعلوم افراد نے صبح ایک جواں سال لڑکی کے بال کاٹ دیئے۔ اس واقعہ کے خلاف بھی علاقہ بھر میں شدید احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔نامعلوم افراد نے وسطی کشمیر کے ضلع بڈگام میں ایک امام مسجد کی داڑھی کاٹ دی ہے۔

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online