Bismillah

618

۲۷صفرتا۳ربیع الاول۱۴۳۸ھ   بمطابق ۱۷تا۲۳نومبر۲۰۱۷ء

اقوام متحدہ تحقیقات میں روہنگیا مسلمانوں کا منظم قتل عام ثابت

(شمارہ 616)

اقوام متحدہ تحقیقات میں روہنگیا مسلمانوں کا منظم قتل عام ثابت

برمی فوج کے ہاتھوں شہید ہونے والے مسلمانوں کی تعداد کہیں زیادہ ہو سکتی ہے، واقعات سن کر غصے اور صدمے میں ہیں، ذمہ داروں کو سزا ضرور ملنی چاہئے، ٹیم ارکان
مہاجرین فاقہ کشی کا شکار،تعداد بڑھنے پر حکام کا رویہ بدل گیا، متاثرین، دریائے ناف کے دوسرے کنارے 5ہزار افراد پھنس گئے،سخت موسم روہنگیا کی امداد میں رکاوٹ

جنیوا (نیٹ نیوز) اقوام متحدہ کے ماہرین کا کہنا ہے کہ رخائن سے ہجرت کر کے بنگلہ دیش پہنچنے والے روہنگیا مسلمانوں سے گفتگو میں شواہد سے ثابت ہوتا ہے کہ ان کے خلاف جاری قتل، آبرو ریزی اور آگ لگانے جیسے مظالم منظم اور مستقل ہیں۔ اقوام متحدہ کے انسانی حقوق سے متعلق تفتیش کاروں کی جانب سے یہ بات بنگلہ دیش میں تعینات پہلے مشن میں کہی گئی ہے۔ اس ٹیم کی قیادت انڈونیشیا کے سابق اٹارنی جنرل مرزوقی دارسمن کر رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ رخائن میں برمی فوج کی جانب سے جاری کریک ڈاؤن میں روہنگیا مسلمانوں کی ہلاکتیں اعداد و شمار کے مقابلے میں کہیں زیادہ ہو سکتی ہیں۔ برمی رہنما آنگ سان سوچی   چاہیں تو مظالم رک جائیں گے۔ 3 ماہرین کے ٹیم نے کاکس بازار میں 6 روز مہاجرین سے انٹرویو کئے۔ ٹیم کی دوسری رکن رادھیکاکمار سوامی کے مطابق آبروریزی کے واقعات سن کر ہم غصے اور صدمے میں ہیں۔ اس کے ذمہ داروں کو سزا ضرور ملنی چاہئے۔ ٹیم کے تیسرے رکن کرسٹوفر سڈوتی نے کہا روہنگیا مسلمانوں کو ان کی مرضی کے بغیر واپس نہ بھیجا جائے اور واپسی کی صورت میں مکمل تحفظ کی ضمانت دی جائے۔ دوسری عالمی ادارہ خوراک نے کہا ہے کہ برمی حکومت نے اسے رخائن میں غذا پہنچانے کی اجازت دے دی ہے، تاہم اصل صورتحال پروگرام شروع کرنے کے بعد واضح ہوگی۔ یونیسف کے مطابق ہجرت کرنے والے تقریباً 9 ہزار روہنگیا بچے غذا کی کمی کے باعث موت کے قریب ہیں۔اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ سخت موسم اور سڑکوں کی خرابی کے باعث بنگلہ دیش کے ایک چھوٹے اور گنجان آباد علاقے میں مقیم ہزاروں روہنگیا پناہ گزینوں تک امداد پہنچانے میں مشکلات کا سامنا ہے۔تارکین وطن سے متعلق عالمی تنظیم کی رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ 8 لاکھ سے زیادہ ررہنگیا پناہ گزین کاکس بازار میں موجود ہیں۔ جب کہ گذشتہ دو مہینوں کے دوران 6 لاکھ سے زیادہ روہنگیا میانمار سے اپنی جانیں بچانے کے لیے بھاگ چکے ہیں۔تارکین وطن نے عالمی ادارے کے ایک عہدے دار جوئل مل مین کا کہنا ہے کہ زیادہ تر نئے پناہ گزین عارضی گنجان پناہ گاہوں میں رہے ہیں۔

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online