Bismillah

672

۶تا۱۲ربیع الثانی۱۴۴۰ھ  بمطابق       ۱۴تا۲۰دسمبر۲۰۱۸ء

بھارتی فوج کیمیائی مواد سے گھر اڑانے لگی،4 تباہ،6 کشمیری شہید

(شمارہ 636)

بھارتی فوج کیمیائی مواد سے گھر اڑانے لگی،4 تباہ،6 کشمیری شہید

کشمیری آئمہ،خطباکو بھی ہراساں  کیا جانے لگا،کیمپوں میں بلا کر دینی سرگرمیوں سے متعلق سوالات،ریکارڈنگ طلب،مذہبی معاملات میں مداخلت برداشت نہیں کی جائے گی،کشمیریوں کاشدید ردعمل
حال ہی میں اسرائیلی ساختہrd2png نامی کیمیائی مواد کھمنوہ میں استعمال کیا گیا،متعدد گھروں کو نقصان،شہریوں اورسکیورٹی فورسزمیں زبردست جھڑپیں،شیلنگ ، پلوامہ ، سری نگر سمیت وادی میں مکمل ہڑتال
چکورہ میں سرچ آپریشن کے دوران ہراساں کئے جانے پر معمر خاتون دل کا دورہ پڑنے سے چل بسیں،بھارتی مظالم کے خلاف مقبوضہ وادی سراپا احتجاج،کاروباری، تعلیمی ادارے بند، انٹرنیٹ سروس بھی بند
کشمیریوں شہادت کے خلاف چوتھے روز بھی احتجاج جاری،پاکستان کے حق میں نعرے،مظاہرین پر قابض فورسز کا وحشیانہ لاٹھی چارج، پیلٹ گن کے چھرے بھی برسائے،درجنوں زخمی ،15 سے زائد گرفتار
7 سال سے مسلسل نظر بند ہوں،موجودہ حالات میں عملاً کام نہیں کرپا رہا، عہدے سے چمٹا رہنا مناسب نہیں،بحیثیت رکن آخری سانس تک ساتھ رہوں گا، سید علی گیلانی،محمد اشرف صحرائی عبوری چیئرمین مقرر

سرینگر(نیٹ نیوز)مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج کیمیائی مواد سے کشمیریوں کے گھر اڑانے لگی،تازہ ریاستی دہشت گردی  میں 6 کشمیری شہید ،شہادتوں کے خلاف وادی بھر میں ہزاروں افراد سراپا احتجاج،نظام زندگی مفلوج ہوکررہ گیا، تمام تعلیمی اور کاروباری مراکز بند، مظاہرین اور فورسز کے درمیان شدید جھڑپیں، وحشیانہ شیلنگ اور لاٹھی چارج سے درجنوں مظاہرین زخمی،فورسز نے پیلٹ گن کا بے دریغ استعمال کیا،انٹرنیٹ اور ٹرین سروس بھی معطل،پاکستان کے حق میں نعرے،چکورہ میں سرچ آپریشن کے دوران ہراساں کئے جانے پر معمر خاتون دل کا دورہ پڑنے سے چل بسیں، کشمیری آئمہ،خطباکو بھی ہراساں  کیا جانے لگا،کیمپوں میں بلا کر دینی سرگرمیوں سے متعلق سوالات،ریکارڈنگ طلب،شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کشمیریوں کا کہنا تھا کہ مذہبی معاملات میں مداخلت ہرگز برداشت نہیں کی جائے گی۔ دوسری جانب سید علی گیلانی حریت چیئرمین کے عہدے سے سبکدوش ہوگئے ہیں جبکہ ان کی جگہ محمد اشرف صحرائی کو عبوری  حریت چیئرمین بنا دیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق مقبوضہ سری نگر میں بھارتی فوج نے ریاستی دہشت گردی کے تازہ واقعہ میں مزید6 کشمیری نوجوانوں کو شہید کر دیا ، بھارتی فوج نے 4مکان بھی تباہ کر دئیے جبکہ متعدد گھروں کو نقصان پہنچا ہے،شہریوں اورسکیورٹی فورسزمیں زبردست جھڑپیں جاری ہیں ، پلوامہ ، سری نگر اور دیگر علاقوں میں  ہڑتال کی وجہ سے تمام کاروباری مراکز بند رہے۔ ہزاروں کشمیریوں نے سڑکوں پر نکل کر شدید احتجاج کیا اور بھارتی فورسز کیخلاف نعرے بازی کی ،موبائل ،انٹرنیٹ اورٹرین سروس بندہوگئی۔ بھارتی فوج کی جانب سے کشمیریوں کے خلاف زبردست لاٹھی چارج اور آنسو گیس کی شیلنگ بھی کی گئی جس سے متعدد کشمیری زخمی ہوگئے۔ اس واقعہ کی اطلاع پر ہزاروں کشمیری مردوخواتین سڑکوں پر نکل آئے اور فورسز کی دہشت گردی کیخلاف شدید احتجاج کیا گیا۔ بھارتی فوج اور کشمیریوں کے مابین زبردست جھڑپیں بھی ہوئی ہیں۔ کشمیریوں کے شدید احتجاج پر سری نگر اور بانہال کے درمیان ٹرین سروس بند کر دی گئی ہے۔ بھارتی فوج بانڈی پورہ کے علاقے حاجن میں نام نہاد سرچ آپریشن جاری رکھے ہوئے ہے۔پلوامہ میں تمام دکانیں، کاروباری مرکزبند جبکہ سڑکوں پر ٹریفک معطل رہی۔ لوگوں نے زبردست احتجاجی مظاہرے کیے۔ بھارتی فورسز نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے طاقت کا وحشیانہ استعمال کیا جس کے بعد فورسز اہلکاروں اور مظاہرین کے درمیان جھڑپیں شروع ہو گئیں۔سرینگر کے نواحی علاقہ کھمنوہ میں شہدا کی میتیں کیمیائی حملے کی وجہ سے نا قابل شناخت ہو گئیں۔بھارتی فورسز اسرائیلی ساختہrd2pngنامی کیمیائی مواد کو حملوں کیلئے استعمال کر رہی ہے بعض اطلاعات کے مطابق یہی کیمیکل جون ، جولائی و اکتوبر2017 میں پلوامہ کے علاقوں کاک پورہ ،لیتر، بہ منومیں بھی استعمال کیا گیا۔اس دوران تباہ مکانات کے ملبے سے ایک پی ایچ ڈ ی اسکالر نثار احمد سمیت6سے زائد شہدا کی مسخ شدہ میتیں ملی تھیں۔ادھرمقبوضہ کشمیر میں ضلع پلوامہ کے علاقے چکورہ میں بھارتی فورسز کی طرف سے نام نہاد محاصرے اورسرچ آپریشن کے دوران ہراساں کئے جانے پر ایک عمر رسیدہ خاتون دل کا دورہ پڑنے سے جاں بحق ہو گئی ہے جس پر ہزاروں کشمیریوں نے شدید احتجاج کیا ہے۔ اس دوران بھارتی فورسز اور کشمیریوں کے مابین جھڑپیں بھی ہوئی ہیں۔ بھارتی فوج نے بڈگام سے 5کشمیری نوجوانوں کو گرفتار کر لیا ہے۔ بھارتی فوج اور سی آر پی ایف نے ان دنوں مختلف علاقوں میں سرچ آپریشن کے نام پر لوگوں کے گھروں میں گھس کر توڑ پھوڑ اور لوگوں کو ہراساں کرنے کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے۔ ایسا ہی ایک واقعہ گزشتہ روز پلوامہ کے چکورہ علاقہ میں پیش آیا ہے جب ایک عمر رسیدہ خاتون نام نہاد سرچ آپریشن کے دوران خوف کے باعث دل کا دورہ پڑنے سے جاں بحق ہو گئی۔ علاوہ ازیں بھارتی فوج نے مقبوضہ کشمیر میں آئمہ مساجد اور خطباء کو فوجی کیمپوں میں بلا کر ان کی دینی سرگرمیوں سے متعلق سوالات کرنے کا سلسلہ شروع کر دیاہے، انہیں فوجی کیمپوں میں خطبات کی آڈیو ریکارڈنگ بھیجنے کا بھی کہاجارہا ہے۔ مختلف علاقوں میں دینی اجتماعات منعقد کرنے والے لوگوں کو فوجی کیمپوں میں بلا کر تشدد کا نشانہ بھی بنایا گیا ہے۔ اس صورتحال پر جماعت اسلامی مقبوضہ کشمیر نے شدید ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارتی فوج نے مقبوضہ کشمیر میں لوگوں کے مذہبی معاملات میں مداخلت کے ذریعے ہراساں کرنے کا نیا سلسلہ شروع کیاہے جسے ہر گز برداشت نہیں کیاجائے گا۔کشمیریوں نے اس کارروائی کو مسلمانوں کے دینی معاملات میں مداخلت قراردیتے ہوئے کہاکہ ان کا مقصد کشمیری عوام خاص طورپر نوجوانوں کو دینی سرگرمیوں سے دور رکھنا ہے۔انہوں نے کہاکہ بھارتی فوج دانستہ طورپر کشمیریوں کے حساس مذہبی جذبات کے ساتھ کھلواڑ کر رہی ہے اورانہیں بلا وجہ اشتعال دلا رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ جنوبی کشمیر کے متعدد مقامات پر لوگوں کو دینی اجتماعات میں شرکت سے روکنے کیلئے فوجی کیمپوں میں طلب کیاجاتا ہے اور ائمہ اور خطیبوں کو نما زجمعہ کے خطبات کی ویڈیو یا آڈیو ریکارڈنگ بھیجنے پر مجبور کیاجارہا ہے جو کسی صورت قابل قبول نہیں ہے۔دریں اثناء کشمیری نوجوانوں کو ان کے آبائی قبرستانوں میں ہزاروں سوگواران کی موجودگی میں سپرد  خاک کر دیا گیا ہے جبکہ بلہامہ میں تباہ شدہ مکان کے ملبے سے ایک اور نوجوان کی نعش برآمد ہوئی،وادی میں احتجاج کا سلسلہ جاری ہے،قابض فورسز کے ساتھ جھڑپوں میں 7افراد زخمی ہو ئے ہیں،کشیدہ صورتحال کے باعث سیکورٹی کے سخت انتظامات،تعلیمی ادارے بند،امتحانات ملتوی کردیئے گئے۔شبیر احمد ڈار کی تدفین اونتی پورہ میں ان کے آبائی قبرستان میں کی گئی۔جن کی نماز جنازہ میں ہزاروں افراد نے شرکت کی۔بزرگ کشمیری لیڈر اور تحریک حریت جموں کشمیر کے سربراہ سید علی گیلانی گزشتہ 7 برسوں سے مسلسل نظربندی کے سبب اپنی ذمہ داریوں سے سبکدوش ہو گئے ہیں اور انہوں نے کہاہے کہ ان حالات میں وہ عملی طور پر کوئی کام نہیں کر پا رہے جس پر بہت ہی سوچ و بچار اور ٹھنڈے دل ودماغ سے تمام صورتحال کا بغور جائزہ لینے کے بعد میں اس نتیجے پر پہنچاہوں کہ میں بحیثیت رکن زندگی کی آخر ی سانسوں تک شامل سفر رہوں۔ اجلاس میں اراکین شوریٰ نے متفقہ طور فیصلہ کیا کہ تنظیمی اور دستوری تقاضوں کے مطابق تحریک حریت کے باضابطہ انتخابات ہونے تک محمد اشرف صحرائی بطور عبوری چیئرمین اپنی ذمہ داریاں نبھائیں گے۔

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online