Bismillah

664

۸تا۱۴صفر المظفر۱۴۴۰ھ  بمطابق    ۱۹تا۲۵اکتوبر۲۰۱۸ء

مدرسہ تعلیم القرآن بالاکوٹ میں عظیم الشان سالانہ اجتماع

(شمارہ 638)

مدرسہ تعلیم القرآن بالاکوٹ میں عظیم الشان سالانہ اجتماع

ملک بھر کے دور دراز علاقوں سے علمائے کرام اور لوگوں کی کثیرتعداد میں شرکت، رواں برس جامعہ سے 24 طلبہ نے حفظ اور گردان کی تکمیل کی
 جہاد کی راہ میں پہاڑوں جیسی بلند و بالا رکاوٹوں کو عبور کرتے ہوئے آگے بڑھنا اللہ کے سچے بندوں کی نشانی ہے،مہمان خصوصی مفتی عبدالرؤف اصغر
نبی کریم ؐ کا لایا ہوا دین ہر چکے اور پکے گھر میں پہنچ کررہے گا، دین کی ترویج کے لئے اللہ تعالیٰ نے جہاد فرض عطا فرمایا، مولانا طلحہ السیف
مفتی منصور احمد اور مفتی محمد اصغرخان کشمیری کا بھی تقریب سے مدلل بیان ،استاذالمجاہدین محمد یوسف غوری کی محنت اور لگن سے مدرسہ روز افزوں ترقی پر ہے

مانسہرہ (القلم نیوز)جامعہ تعلیم القرآن میں عظیم الشان سالانہ عظمت قرآن کانفرنس، معروف جہادی رہنماؤں کے ایمان افروز بیانات، ولولہ انگیز نظمیں، حفاظ بچوں کی دستار بندی اور طلبہ کی مفید ہم نصابی سرگرمیوں کے روح پرور اور حیرت انگیز مظاہرے۔ جامعہ تعلیم القرآن بالاکوٹ کے ایک پُرفضاء مقام جابہ میں واقع ہے۔ مدرسہ کے مہتمم استاذ المجاہدین بھائی محمد یوسف غوری ہیں، جن کی انتھک محنت، لگن اوردلجمعی سے یہ ادارہ علمی و دینی اور جہادی تگ و تاز میں روز افزوں ترقی پر ہے۔ جامعہ کے سالانہ اجتماع میں مہمانان خصوصی میں معروف جہادی قائدین حضرت مولانا مفتی عبدالروف اصغرصاحب، حضرت مولانا طلحہ السیف صاحب، حضرت مولانا مفتی محمد اصغر خان کشمیری صاحب، حضرت مولانا مفتی منصوراحمد صاحب اور دیگر بھی متعدد قائدین ، علاقہ بھر کے علمائے کرام کی ایک بڑی تعداد اور عوام الناس نے بھر پور انداز سے شرکت کی۔ اس سال جامعہ سے قرآن کریم کا حفظ اور گردان کی تکمیل کرنے والے طلبہ کی تعداد 24تھی۔ مفتی محمد اصغرخان کشمیری صاحب نے اپنے بیان میں جہاد کی اہمیت اور جہاد کے خلاف پھیلائے جانے والے بعض مشہور وساوس کا بھرپور رد کیا اور واضح کیا کہ عصرحاضر میں ماسکوسے اٹھنے والے طوفان کے سامنے جہاد نے ہی بند باندھا اور جہاد کے نتائج کے لیے اللہ تعالیٰ نے کوئی وقت مقرر نہیں کیا چنانچہ خود نبی کریمﷺ نے قسطنطنیہ کی فتح کی بشارت دی اور پھر یہ بشارت صدیوں بعد وقوع پذیر ہوئی۔ مولانا طلحہ السیف صاحب نے فرمایا کہ نبی کریمﷺ ہمارے لیے اللہ تعالیٰ کی خاص رحمت ہیں جو اللہ تعالیٰ نے ہمیں بطور ہدیہ عنایت فرمائی ، اور آپ کا لایا ہوا دین رحمت دنیا کے ہر کچے اور ہر پکے گھر میں پہنچ کررہے گا اور اس ترویج و اشاعت کے لیے اللہ تعالیٰ نے جہاد کا فرض عطاء فرمایااس لیے یہ اسلام اور جہاد ساتھ ساتھ چلتے رہیں گے۔مفتی منصور احمد صاحب نے قرآن کریم کی عظمت پر مفصل اور موثر بیان فرمایا۔ انہوں نے فرمایا کہ قرآن کریم اللہ تعالیٰ کا کلام ہے اور جس طرح اللہ تعالیٰ کی تعریف اور خوبیاں لامحدود ہیں، اسی طرح اس کے کلام کے عجائبات اور دینی و دنیوی فوائد بھی بے شمار ہیں۔ جو شخص رب تعالیٰ کی لامحدود نعمتوں سے مستفید ہونا چاہتا ہے اسے چاہیے کہ قرآن کریم سے جڑ جائے اور یہ بھی واضح کیا کہ دنیا بھر میں کفر کے خلاف برسرپیکار قدسی صفت مجاہدین اسلام عظمت قرآن کا جیتا جاگتا ثبوت ہیں۔ جب کہ تقریب کے  مہمان خصوصی مفتی عبدالروف اصغرصاحب نے ولولہ انگیز بیان فرمایا اور جہادی تاریخ کا تسلسل سامعین کے سامنے رکھا۔ انہوں نے بتایا کہ جہاد کی راہ میں پہاڑوں جیسی بلند و بالا رکاوٹوں کو عبور کرتے ہوئے آگے بڑھنا اللہ تعالی کے سچے بندوں کی نشانی ہے اور سیدنا فاروق اعظم رضی اللہ عنہ نے ایسے قافلے روانہ کرکے اس سلسلے کا آغاز فرما دیا تھا اور آج بھی ان کے نام لیوااور اس مدرسہ سے اٹھنے والے نوجوانوں نے کشمیر کے پہاڑوں کا غرور توڑاہے اور وہاں جہاد کی شمع روشن کردکھائی ہے، اور ان شاء اللہ یہ شمع جلتی رہے گی ، ایمان والوں کے قافلے رواں دواں رہیں گے اور جب حق و باطل کا امتحان جاری ہے یہ مدارس دین اور جہاد کی نسبتوں کی شمع روشن کیے رکھیں گے۔

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online