Bismillah

606

۲۵ذیقعدہ تا۱ذی الحجہ۱۴۳۸ھ  بمطابق    ۱۸تا۲۴ اگست ۲۰۱۷ء

گلہ جفاء وفا نما کہ حرم کو اہل حرم سے ہے (قلم تلوار۔نوید مسعود ہاشمی)

Qalam Talwar 591 - Naveed Masood Hashmi - Gila Jafa

گلہ جفاء وفا نما کہ حرم کو اہل حرم سے ہے

قلم تلوار...قاری نوید مسعود ہاشمی (شمارہ 591)

کچھ شک نہیں کہ ایران ہمارا پڑوسی ملک ہے ۔۔۔ یہ بات بھی حقیقت ہے کہ پڑوسی ملک کبھی تبدیل نہیں ہوسکتے لیکن پڑوسی ملک کے سامنے ایک عام پاکستانی کی حیثیت سے سوالات تو اٹھائے جاسکتے ہیں ۔۔۔ سو آج کے کالم میں میرا کچھ ایسا ہی اراد ہ ہے عزیر بلوچ جیسے بدنام زمانہ بھتہ خور بدمعاش قاتل اور ڈان نے مجسٹریٹ کے سامنے دفعہ164 کے تحت اپنے اعترافی بیان میں یہ انکشا ف کیا کہ اس نے ایرانی انٹیلی جنس افسر کو کراچی میں آرمڈ فورسز  کور کمانڈر اسٹیشن کمانڈر اور نیول کمانڈر کراچی سے متعلق معلومات فراہم کی تھیں۔ سوال یہ ہے کہ ایک پڑوسی برادر ملک ایران کی انٹیلی جنس ایجنسی کراچی کے ایک بدمعاش اور قاتل کو آرمڈ فورسز  کور کمانڈر  اسٹیشن کمانڈر اور نیول کمانڈر کے خلاف جاسوسی کے لئے استعمال کیوں کر رہی تھی؟ کلبھوشن یادیو جیسے را کے حاضر سروس جاسوس اور دہشت گرد کی بات ہو تو ایرانی سرزمین چاہ بہار کا تذکرہ خصوصی طور پر کرنا پڑتا ہے ۔۔۔ لیاری گینگ وار کے سربراہ عزیر بلوچ کی بات ہو تو ایک دفعہ پھر چاہ بہار کے ساتھ ساتھ ایرانی انٹیلی جنس کا پاکستان کے خلاف کردار زیر بحث آنا شروع ہو جاتا ہے ۔۔۔ کراچی سمیت ملک بھر میں فرقہ وارانہ دہشت گردی کے واقعات کا جائزہ لیا جائے ۔۔۔ تو کراچی پولیس اور سی ٹی ڈی کے کئی اعلیٰ افسران کے بیانات ریکارڈ پر موجود ہیں کہ فرقہ وارانہ ٹارگٹ کلنگ میں ملوث فلاں  فلاں ٹارگٹ کلر کو تہران سے کنٹرول کیا جاتا ہے ۔۔۔ کیوں کیوں آخر کیوں؟ جب پاکستان دامے درمے سخنے ہر حال میں ایران کے ساتھ کھڑا ہوا نظر آتا ہے ۔۔۔ پاکستانی سیکورٹی کے ادارے ہوں یا سول ادارے برادر ملک ایران کے خلاف کسی قسم کی معاندانہ سوچ بھی نہیں رکھتے تو پھر ایران کی طرف سے پاکستانی اداروں کی جاسوسی کروانا ۔۔۔ دوستی کے اصولوں میں روند مارنے کے مترادف سمجھا جائے گا۔ فرقہ پرور ذہنیت رکھنے والے جو عناصر سعودی عرب اور ایران کو ایک آنکھ سے دیکھنے کے مفت مشورے پھینکنے کے عادی ہیں ۔۔۔ وہ ذرا قوم کو بتائیں کہ 70 سال ہوگئے پاکستان کو قائم ہوئے ۔۔۔ ان ستر سالوں میں کبھی یہ بات منظر عام پر آئی کہ سعودی عرب کے کسی انٹیلی جنس ادارے نے کبھی پاکستانی سیکورٹی اداروں کے خلاف جاسوسی نیٹ ورک قائم کیا ہو؟ کیا کبھی یہ بات کسی کان نے سنی کہ سعودی عرب کی سرزمین کبھی پاکستان کے خلاف استعمال ہوئی ہو؟کیا کبھی کسی نے یہ خبر پڑھی یا سنی کہ سعودی حکمرانوں یا انٹیلی جنس اداروں نے پاکستان میں دہشت گردی یا قتل و قتال کا ارتکاب کیا ہو؟ اگر نہیں  نہیں اور یقیناًنہیں تو پھر سعودی عرب اور ایران کو ایک آنکھ سے کیسے دیکھا جاسکتا ہے؟ سعودی عرب کی زیر قیادت39 اسلامی ملکوں کی مشترکہ اسلامی فوج کی قیادت کے لئے پاکستان کا نام آیا تو بیمار مائنڈ سیٹ کے حاملین نے  سیاپا پروگرام شروع کر دیاکچھ جہلاء نے یہ راگ الاپنا شروع کر دیا کہ اگر پاکستانی جنرل کو اسلامی فوج کی سربراہی کی اجازت دی گئی تو ایران پاکستان سے ناراض ہو جائے گا چونکہ ایران ناراض ہو جائے گا اس لئے پاکستان کواسلامی فوج کی سربراہی کا ملنے والا عالمی اعزاز چھین لیا جائے ۔۔۔ سوال یہ ہے کہ ایران  پاکستان کا سرپرست کب سے بنا تھا کہ جو پاکستان کو ہر کام اس سے پوچھ کر اور اجازت سے کرنے چاہئیں؟ ہر ملک کے اپنے اپنے مفادات ہوا کرتے ہیں ۔۔۔ ایران کے اپنے مفادات ہیں ۔۔۔ وہ جب بھی انڈیا یا کسی دوسرے ملک کے ساتھ معاملات کرتا ہے تو ایران کے مفادات کو مقدم رکھ کر کرتا ہے ۔۔۔ جس کا اسے حق بھی حاصل ہے  اسی طرح پاکستان ایک بااختیار اور مکمل آزاد ملک ہے ۔۔۔ بیرونی دنیا میں کس کس سے اس نے کیسے تعلقات رکھنے ہیں ۔۔۔ اس کا فیصلہ پاکستان کو کرنا ہے ۔۔۔ اگر اسلامی دنیا کی مشترکہ فوج کی سربراہی کا تاج پاکستان کے سابق آرمی چیف جنرل راحیل شریف کے سر پر رکھا جارہا ہے تو مسلمان ممالک کے اس سب سے بڑے اتحاد کے معاملے پر ایرانی ڈکٹیشن قبول نہیں کی جاسکتی۔ پاکستان کی سرحدیں ایران کے ساتھ ملتی ہیں ۔۔۔ سعودی عرب کے ساتھ نہیں ۔۔۔ ہاں البتہ سعودی عرب کے عوام کے ساتھ پاکستانی عوام کے دل ضرور ملتے ہیں ۔۔۔ سعودی عرب کے فرمانروا شاہ فیصل مرحوم سے لے کر شاہ سلمان بن عبد العزیز تک تقریباً سب نے پاکستان سے محبت کی اور پاکستان کو مضبوط تر بنانے کیلئے اپنا اپنا مثبت کردار بھی ادا کیا جس کی تفصیلات تو بہت سی ہیں ۔۔۔ مگر کالم کی تنگی کی وجہ سے یہاں لکھنا مشکل ہے ایک طرف سعودی عرب کے حکمرانوں کا کردار یہ ہے کہ وہ دنیا میں پاکستان کو مضبوط سے مضبوط تر دیکھنا چاہتے ہیں ۔۔۔ سعودی عرب کے پاس تیل تھا ریال تھے جو اس نے پاکستان کو مضبوط بنانے کے لئے نچھاور کرنے سے دریغ نہ کیا اور دوسری طرف ایران ہے کہ جو نہ صرف پاکستان دشمنوں کو اپنی سرزمین پر پناہ دے رہا ہے ۔۔۔ بلکہ آرمڈ فورسز  کور کمانڈر اسٹیشن کمانڈر اور نیول کمانڈر کی جاسوسی کے لئے ۔۔۔ عزیر بلوچ جیسے بھتہ خور دہشت گرد بھی پالتا رہا ہے  اطلاعات کے مطابق عزیر بلوچ نے بلوچستان میں بھارتی خفیہ ایجنسی را کے نیٹ ورک اور پاکستانی سرحد کے قریب ایرانی علاقے میں را کے بیس کیمپ سے متعلق بھی اہم انکشافات کیے ہیں ۔۔۔ عزیر بلوچ نے بلوچستان اور ایران کے درمیان دہشت گردوں کے نیٹ ورک اور تربیتی مراکز میں ان کی تربیت کے حوالے سے مکمل معلومات بھی فراہم کی ہیں۔ پاکستان کی حکومت ہو  اسٹیبلشمنٹ ہو یا پاکستان کے عوام ہوں ۔۔۔ انہوں نے ہمیشہ ایران کے لئے محبت و اخوت کا اظہار کیا ظلم سہہ کر بھی کبھی اُف تک نہ کہا  ایک گال پر تھپڑ کھا کر بھی دوسرا گال آگے کرنے کی شریفانہ پالیسی برقرار رکھی ۔۔۔ مگر پاکستانی قوم حیران ہے کہ آخر پڑوسی ملک کی سرزمین پاکستان کے خلاف کیوں استعمال ہوتی رہی۔ میں پیپلز پارٹی اور عزیر بلوچ کے درمیان تعلق اور واسطوں پر تو کالم آئندہ کبھی لکھوں گا انشاء اللہ آج تو بس اس دکھ کا اظہار کرنا ہے کہ پاکستانی قوم کو آخر ان کی محبت اور اخوت کا جواب  نفرت و حقارت اور تشدد سے ہی کیوں ملتا ہے؟ آپ بھارت کو لے لیجئے ۔۔۔ یہاں اس کی حمایت میں پورے پورے گروہ اور چینلز موجودہیں ۔۔۔ بھارتی ترنگے کو شائع کرکے پاکستان کے ہر گھر تک پہنچانے کی کوششیں کی جاتی رہیں۔۔۔ ہزاروں لاشیں اٹھا کر بھی ن لیگی شریف حکومت نے بھارتی فلمیں پاکستانی سینماؤں میں چلانے کی اجازت دے دی مگر بھارت کا وزیراعظم نریندر مودی ۔۔۔ پاکستان کو برباد کرنے کے خواب دیکھ رہا ہے ۔۔۔ پڑوسی ملک ایران سے پاکستانی حکمرانوں اور میڈیا کی محبت و اخوت کا جذبہ کسی سے پوشیدہ نہیں ہے  لیکن جواب میں عزیر بلوچ جیسے دہشت گردوں کے ایران کے حوالے سے انکشافات سن کر پاکستانی قوم یہی کہہ سکتی ہے کہ

 گلہ جفاء وفا نما کہ حرم کو اہل حرم سے ہے

 کسی بت کدے میں بیاں کروں تو کہے صنم بھی ہری  ہری

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online