Bismillah

606

۲۵ذیقعدہ تا۱ذی الحجہ۱۴۳۸ھ  بمطابق    ۱۸تا۲۴ اگست ۲۰۱۷ء

احترام رمضان اور ’’صاحبزادی‘‘ (قلم تلوار۔نوید مسعود ہاشمی)

Qalam Talwar 594 - Naveed Masood Hashmi - Ehtram ramazan aur sahibzadi

 احترام رمضان اور ’’صاحبزادی‘‘

قلم تلوار...قاری نوید مسعود ہاشمی (شمارہ 594)

سینٹ کی اسٹینڈنگ کمپنی برائے مذہبی امور نے احترام رمضان (ترمیمی) بل2017ء؁ کی اتفاق رائے سے منظوری دے دی ہے۔۔۔ جس کے تحت ہوٹل مالکان پر قانون کی خلاف ورزی کے جرم میں جرمانے عائد کرنے کے علاوہ رمضان المبارک میں اوقات روزہ کے دوران کسی شخص کو کھلے عام کھاتے پیتے سگریٹ نوشی کرتے ہوئے دیکھا گیا تو اسے پانچ سو روپے جرمانہ اورتین ماہ کی قید بھگتنا ہو گی۔۔۔ پاکستان میں ’’رمضان المبارک‘‘ کو بے اکرامی اور یہود و نصاریٰ ’’آئیڈیالوجی‘‘ کے شدت پسندوں سے بچانے کیلئے یہ احترام رمضان آرڈی نینس انتہائی ممد اور معاون ثابت ہو سکتا ہے۔

جس پر پاکستان کے مسلمان انتہائی خوش بھی ہیں اور اس بات پر حیران بھی کہ لبرل، سیکولر بیوپاروں کے سجے ہوئے اتوار بازار میں سینٹ کی اسٹینڈنگ کمیٹی برائے مذہبی امور کو کیا سوجھی کہ انہوں نے’’احترام رمضان‘‘ آرڈی نینس کا ڈول ڈال دیا؟

بہرحال کچھ بھی ہو سینٹ کی اسٹینڈنگ کمیٹی برائے مذہبی امور کے اس اچھے اقدام کی تعریف نہ کرنا بھی بخیلی کے مترادف ہو گا، لیکن کیا کیا جائے ہمارے ملک پاکستان کا کہ۔۔۔ جہاں’’صاحبزادوں‘‘‘ اور ’’صاحبزادیوں‘‘ کی جہالت کا جادو میڈیا کے سر چڑھ کر بولتا ہے۔۔۔ تفصیل اس کی کچھ یوں ہے کہ ’’آصف علی زرداری کی صاحبزادی‘‘ بختاور زرداری کو جیسے ہی پتہ چلا کہ بد نیت روزہ خوروں اور رمضان المبارک کا جان بوجھ کر بے اکرامی کرنے والوں کو روکنے کیلئے احترام رمضان آرڈی نینس اتفاق رائے سے منظوری پا چکا ہے تو موصوفہ کی رگ جاہلانہ پھڑکی۔۔۔ اور موصوفہ نے احترام رمضان آرڈینینس کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ’’اس مضحکہ خیز قانون کی وجہ سے لوگ موسم کی شدت، حدت اور پانی کی کمی کا شکار ہو کر مر رہے ہیں۔۔۔ ہر شخص روزہ کے قابل نہیں ہے‘‘۔۔۔

بختاور زرداری میں صرف اتنی قابلیت ہے کہ وہ جناب زرداری کی صاحبزادی ہیں۔۔۔ کیا صرف اس ’’قابلیت‘‘ کی بنیاد پر انہیں یہ حق دیا جا سکتا ہے کہ وہ’’احترام رمضان قانون‘‘ کو مضحکہ خیز قرار دینے کی گستاخی کر ڈالیں۔۔۔ یہ بات یاد رکھنے کے قابل ہے کہ رمضان المبارک کو خود خالق کائنات نے فضیلت و عظمت عطاء فرمائی ہے۔۔۔ اور جس چیز کو اللہ رب العزت عظمت کا مقام عطاء فرمائیں۔۔۔ اس کی عظمت اور برکت اور عزت و مقام کو تسلیم کرلینے میں عزت اور راحت ہوا کرتی ہے۔۔۔ لیکن یہ کرتا وہ ہے جو خود بھی صاحب عزت ہو۔۔۔’’بے غیرت‘‘ اور گمراہ کیا جانیں رمضان المبارک کی فضیلت کو؟ اور پھر آصف علی زرداری کی صاحبزادی کو یہ حق کس نے دیا ہے کہ وہ مفتی یا عالمہ بن کر اس قسم کے فتوے صادر کرتی پھریں؟

اگر موصوفہ ’’صاحبزادی‘‘ کو دینی معاملات کے حوالے سے گفتگو کرنے کا زیادہ ہی شوق ہے تو جناب زرداری کو چاہئے کہ وہ اپنی صاحبزادی کو کم از کم تین سال کیلئے جامعہ سیدہ حفصہؓ اسلام آباد میں داخل کراودیں، تاکہ ان کے پاس دینی علوم سے کچھ معلومات تو ہوں، ابھی رمضان المبارک کے تشریف لانے میں چند دن باقی ہیں اور ’’صاحبزادی‘‘ فرماتی ہیں کہ’’احترم آرڈی نینس جیسے مضحکہ خیز قانون کی وجہ سے لوگ گرمی کی شدت اور پانی کی کمی کے باعث مر رہے ہیں‘‘۔۔۔ لاحول و لاقوۃ الا باللہ۔۔۔ پیپلز پارٹی سندھ کی حکومت کی بے تدبیری، کرپشن، غفلت اور لوٹ مار کے نتیجے میں تھرپارکر میں جو سینکڑوں معصوم بچے تڑپ تڑپ کر جانیں ہار گئے، کیا وہ ’’احترم رمضان آرڈی نینس‘‘ کی وجہ سے مرے؟ آج کراچی، کچرا کنڈی، حیدر آباد سے لیکر، لاڑکانہ تک جیکب آباد سے لیکر کھپرو اور ڈگری تک سندھ کے سارے شہر اور قصبے کھنڈرات کے جو مناظر پیش کر رہے ہیں کیا یہ سب بھی’’احترام‘‘ رمضان آرڈی نینس کی وجہ سے ہیں؟

جتنا بڑا اور عظیم مہمان ہو۔۔۔ اس کا اکرام اور احترام بھی اسی اندازسے کیا جاتا ہے۔۔۔ رمضان اللہ کا مہینہ ہے، رمضان المبارک سے رسول اکرمﷺ کو پیار تھا، آپﷺ رمضان کے استقبال کی تیاری شعبان سے ہی شروع فرما دیا کرتے تھے۔۔۔ اگر پاکستان کی سڑکوں، بازاروں اور ہوٹلوں پر۔۔۔ سر عام رمضان کی بے حرمتی کرنے والوں کو گرفتار کیا جاتا ہے تو یہ بالکل درست اقدام ہے، لادینیت کے کسی پیروکار کو رمضان المبارک میں کھلے عام جانوروں کی طرح چرنے اور ٹرینوں کے انجن کی طرح دھواں چھوڑنے کی اجازت نہیں ہونی چاہئے، پہلے’’صاحبزادے‘‘ ہی اس قوم کیلئے کیا کم تھے کہ جو اب’’صاحبزادیاں‘‘ بھی شروع ہو گئی ہیں۔۔۔ لیکن پاکستانی قوم کسی ’’صاحبزادے‘‘ یا ’’صاحبزادی‘‘ کی اسلام سے متصادم کسی بات کو بھی سننے کی روادر نہیں ہے اور رہ گئی زرداری خاندان کی’’مفتیہ‘‘ بختاور زرداری کی یہ بات کہ ہر شخص روزہ کے قابل نہیں ہے۔۔۔ کوئی ان سے پوچھے کہ تمہیں روزہ خوروں کی وکیل کس نے بنایا ہے؟ جنہیں یہ بھی نہیں پتہ کہ بیماروں، ضعیفوں، مسافروں اور دیگر شرعی عذر رکھنے والوں کو اللہ پاک نے خود چھوٹ دے رکھی ہے، نہ رکھنے کی تو اجازت ہے۔۔ مگر رمضان المبارک کا مذاق اڑانے یا رمضان کی بے حرمتی کی اجازت انہیں بھی حاصل نہیں ہے۔

رمضان المبارک کی مقدس ساعتیں ہم پر سایہ فگن ہونے والی ہیں، اللہ کی رحمتیں پورے جوبن پر ہونگی، خوش قسمت ہوں گے کہ وہ مسلمان کہ جو رمضان المبارک کی مقدس ساعتوں سے بھرپور انداز میں نیکیاں کشید کرنے کی کوشش کریں گے، جو مہمان رمضان کو بھرپور پزیرائی بخشتے ہوئے عبادات کی پابندی کے ساتھ ساتھ زکوٰۃ، صدقات اور عطیات مجاہدین کیلئے جمع کرنے کی سرتوڑ کوششیں بھی کریں گے۔

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online