Bismillah

606

۲۵ذیقعدہ تا۱ذی الحجہ۱۴۳۸ھ  بمطابق    ۱۸تا۲۴ اگست ۲۰۱۷ء

رمضان لایا جہادی پیغام (قلم تلوار۔نوید مسعود ہاشمی)

Qalam Talwar 596 - Naveed Masood Hashmi - Ramazan Laya Jihadi Paigham

رمضان لایا جہادی پیغام

قلم تلوار...قاری نوید مسعود ہاشمی (شمارہ 596)

حضرت مجدد الف ثانیؒ نے اپنے شاہکار مکتوبات میں لکھا ہے ’’جس کا رمضان منتشر اور بے ترتیب گزرے گا، اس کا پورا سال انتشار اور بے ترتیبی کا شکار رہے گا۔۔۔ اور جس کا رمضان مجتمع اور قیمتی گزرے گا۔۔۔ اس کا پورا سال ہی ایسا ہی ہوگا‘‘۔۔۔ اس لئے اللہ نے اپنے فضل سے ایک دفعہ پھر ہمیں ’’رمضان‘‘ عطاء فرمایا ہے۔۔ ہمیں رمضان المبارک کے ہر ہر لمحے، منٹ اور سیکنڈ کی بہت زیادہ قدر اور حفاظت کرنی چاہئے۔

رمضان المبارک کو اپنی اصلاح، فکر آخرت، تعلق مع اللہ اور جہاد فی سبیل اللہ کے لئے خاص کر دینا چاہیے۔۔۔ رمضان المبارک میں رسول اللہﷺاور آپﷺکے صحابہ کرامؓ عبادات کا خاص اہتمام فرمایا کرتے تھے۔۔۔ لیکن ہمارے معاشرے میں رمضان کی آمد کے ساتھ ہی انواع و اقسام کے پکوانوں اور مشروبوں کا اہتمام کیا جاتا ہے۔۔۔ دکھ کی بات یہ ہے کہ ہمارا عبادات و ریاضات کی بجائے۔۔۔پکوڑوں، سموسوں، بریانیوں، نہاریوں، پراٹھوں، دہی بھلوں، چنا چاٹ، فروٹ چاٹ اور قسما قسم کے مشروبات پر زیادہ زور ہوتا ہے۔۔۔ افطاری کے وقت اتنا زیادہ کھاتے پیتے ہیں۔۔۔ بلکہ ٹھونستے ہیں کہ پھر نماز مغرب کی ادائیگی کے لئے مسجد میں جانا ہی محال نظر آتا ہے۔۔۔ رمضان المبارک رحمتوں، برکتوں، عبادات و ریاضات اور نیکیوں کا مہینہ تھا۔۔۔ مگر ہم نے اسے افطار پارٹیوں، ذخیرہ اندوزی، اشیائے خوردو نوش کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ کر کے غریبوں اور مسکینوں کی آہوں اور سسکیوں کا مہینہ بنا دیا۔۔۔ یہ وہ ماہ مقدس ہے کہ جس میں رشد وہدایت کا الہامی خزینہ یعنی کلام اللہ نازل ہوا تھا۔۔۔ لیکن میڈیا کے گمراہ پنڈتوں نے اسے ٹی وی چینلز کی ریٹنگ کو بڑھانے کا ذریعہ بنالیا، اداکاروں کے سروں پر ٹوپیاں پہنا کر۔۔۔ اینکرنیوں اور تہہ در تہہ میک اپ کی لپیا پوتی کر کے رمضان نشریات کی میزبانی کرنے والی’’آنٹیوں‘‘ نے رمضان المبارک کو نعوذ باللہ انٹرٹینمٹ کا ذریعہ بنا دیا۔

رمضان المبارک کا انتظار عشاق رسولﷺپورا سال کرتے ہیں، لیکن جب رمضان المبارک کی تشریف آوری ہوتی ہے تو قید میں پڑے ہوئے شیطان۔۔۔ پنجروں سے آنکھیں پھاڑ پھاڑ کر ان انسانوں کو دیکھ رہے ہوتے ہیں کہ جو احترام رمضان سے عاری ہو کر۔۔۔ شیطانی حرکتوں کا ارتکاب کر رہے ہوتے ہیں۔۔۔۔ وہ ان تاجروں، دوکانداروں، ذخیرہ اندوزوں کو دیکھ کر حیران ہوتے ہیں کہ جو رمضان کی آمد کے ساتھ ہی اشیائے خورد و نوش کی قیمتوں میں اضافہ کر کے روزہ داروںکو پریشان کرنے کا کوئی موقع ضائع نہیں ہونے دیتے۔۔ ۔ پنجرے میں قید شیطان اپنے آپ کو چٹکی بھر دیکھتے ہیں اور پھر سوچتے ہیں کہ’’ہم‘‘ تو قید میں ہیں تو یہ کون لوگ ہیں؟ پھر جب انہیں ان لوگوں کی سمجھ آتی ہے تووہ مسکرا کر سوچتے ہیں کہ ہم اگر قید میں ہیں تو کیا ہوا؟ ہمارے پیروکار تو آزادی کے ساتھ ہمارے والی حرکتیں تو کر رہے ہیں۔۔۔

رمضان المبارک صبر کا مہینہ ہے۔۔۔ ہمیں اپنی زندگیوں میں’’صبر‘‘ کی دولت کو لانا پڑے گا، کیونکہ ’’صبر‘‘ کرنے والوں کے ساتھ اللہ تعالیٰ خود ہے۔

رمضان المبارک ہمدردی اور غم خواری کا مہینہ ہے، ہمیں اپنے گریبانوںمیں جھانک کر دیکھنا پڑے گا کہ کیا ہمدردی اور غم خواری کا جذبہ ہمارے اندر بھی موجود ہے؟ امریکہ اور لندن کی لائیبریریوں کو گھول کر پینے سے ہماری مشکلات آسان نہیں ہو سکتیں۔۔۔ ٹی وی چینلز کے ٹاک شوز میں سیاست دانوں کو مرغوں کی طرح لڑتے ہوئے دیکھ کر۔۔۔ پاکستانی قوم مشکلات کے بھنور سے نہیں نکل سکتی۔۔۔۔ کیونکہ یہ سب تو’’طاغوت‘‘ کا حصہ ہیں۔۔۔ دلوں کو سکون۔۔۔ روحوں کو تازگی۔۔۔ اور سینوں کو ٹھنڈک تو ملے گی۔۔۔ قرآن مقدس کی تلاوت اور اس پر عمل کرنے سے۔۔۔ کیونکہ رمضان اور قرآن کا آپس میں چولی دامن کا ساتھ ہے، صرف کھانے، پینے سے رک کر بھوکا، پیاسا، رہنے کا نام روزہ نہیں۔۔۔ بلکہ روزہ تو تقویٰ و طہارت اور پاکیزگی عطاء کرتا ہے۔۔۔۔ پرہیزگاری کے راستے پر چلاتا ہے۔۔۔ ’’رمضان‘‘ سیاسی، یا سماجی ایشو نہیں ہے۔۔’’رمضان‘‘ اور ’’روزہ‘‘ کوئی چند دنوں کے مذہبی تہوار کا نام نہیں ہے۔۔ ’’روزہ‘‘ کوئی انٹرٹینمٹ کا نام نہیں۔۔۔ ’’روزہ‘‘ تو پرہیز گاری کا نام ہے۔۔ روزہ تو ایسی پاکیزگی اور لطافت وحلاوت کا نام ہے۔۔۔ کہ جس کا بدلہ خود اللہ تعالیٰ کی ذات ہے، رمضان المبارک آیا ہے۔۔ اور اپنے دامن رحمت میں’’بدر‘‘ کا قیمتی اثاثہ بھی لایا ہے۔۔ غزوہ بدر۔۔۔ یعنی پیغام جہاد، رمضان المبارک کی آمد سے صرف ایک روز قبل یعنی ہفتہ 27مئی کوبھارت کے درندوں نے درندگی کا بدترین مظاہرہ کر کے13کشمیری نوجوانوں کو شہید کر ڈالا۔۔۔ ضلع پلوامہ کے علاقے ترال اور بارہ مولا کے علاقوں، رام پور، اور اڑی میں بھارتی فوج نے بے گناہ کشمیری نوجوانوں کے خون کے ساتھ ہولی کھیلی۔

جب مظلوم کشمیری۔۔۔ پلوامہ ، اسلام آباد، بیج بہاڑہ، پامپور، سرینگر، بڈگام، گاندربل، سوپور، بانڈی پورہ، بارہمولہ کی سڑکوں پر ہزاروں کی تعداد میں پاکستانی پرچم ہاتھوں میں تھامے ہوئے احتجاج کے لئے نکلے تو بھارت کی دجالی فوج نے انہیں بھی نہ بخشا، اور پرامن مظاہرہ کرنے والے سو سے زائد مظاہرین کو شدید زخمی کر ڈالا، رمضان المبارک کے پیغام جہاد کو قبول کر کے بھارتی درندوں کو سبق سکھانے کی ضرورت ہے۔۔۔

رمضان، قرآن اور جہاد آپس میں لازم و ملزوم ہیں، مظلوم مسلمانوں کو کفر کے شیطانی پنجے سے چھڑانے کا راستہ صرف اور صرف جہاد ہے۔۔۔ رمضان المبارک کے سائے تلے اگر جہاد بھی نصیب ہو جائے تو پھر تو روزہ دار کے وارے ہی نیارے ہیں۔

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online