Bismillah

613

۲۲تا۲۸محرم الحرام۱۴۳۸ھ   بمطابق ۱۳تا۱۹اکتوبر۲۰۱۷ء

پانی یا لہو؟ (قلم تلوار۔نوید مسعود ہاشمی)

Qalam Talwar 603 - Naveed Masood Hashmi - Paani ya Lahu

پانی یا لہو؟

قلم تلوار...قاری نوید مسعود ہاشمی (شمارہ 603)

پاکستانی قوم کان کھول کر سن لے۔۔۔ اگر وہ کشمیر کی آزادی چاہتی ہے۔۔ تو اسے مزاریوں، زرداریوں، ٹوانوں، دولتانوں، شریفوں، ممدوٹوں اور انگریز کے فکری اورنظریاتی غلاموں سے پاکستان کی جان چھڑانا ہوگی، مقبوضہ کشمیر کی آزادی کے راستے میں۔۔۔ وہ سیاست دان روکاوٹ ہیں کہ جو بھارت اور پاکستان کے اکٹھ یعنی اکھنڈ بھارت کے خواب دیکھتے ہیں۔۔۔ کشمیری مسلمانوں کی آزادی کے راستے میں وہ حکمران روکاوٹ ہیں کہ جو ایک لاکھ سے زائد کشمیری نوجوانوں کے قاتل نریندر مودی کو اپنی پوتی کی شادی میں۔۔۔۔ نہ صرف یہ کہ شریک کرتے ہیں۔۔۔ بلکہ ان سے تحفے، تحائف کا تبادلہ بھی کرتے ہیں، مقبوضہ کشمیر کی آزادی کے راستے میں۔۔۔ وہ میڈیا روکاوٹ ہے جو بھارت کے زیر اثر ہے،

انگریزاوربھارت کے فکری غلام،جب دانشور وں، اسکالروں، تجزیہ نگاروں اور کالم نگاروں کا روپ دھار کر دجالی چینلز کے ذریعے جب پاکستانی قوم کے اعصاب پر مسلط رہیں گے۔۔۔ تو اس کا نتیجہ سوائے مایوسی اور بزدلی کے کچھ نہیں نکلے گا۔۔۔

کیا مقبوضہ کشمیر کے مسلمانوں کا لہو ’’پانی‘‘ ہے کہ جس کو بہتا دیکھ کر۔۔۔ عالمی شیطانوں کو تو چھوڑیئے۔۔۔۔ پاکستانی حکمرانوں، سیاست دانوں اور میڈیا کے کانوں۔۔۔ پر بھی جوں تک نہیں رینگ رہی؟

حد ہو گئی ظلم کی۔۔۔ انتہا ہو گئی نا انصافی کی۔۔۔ نریندر مودی جیسے وحشی، گنوار اور درندے سے۔۔۔ کشمیریوں کے لئے لجاجت بھرے لہجے میں امن کی بھیک مانگنے والوں کو کوئی بتائے کہ۔۔۔ اس طرح سے ’’مودی‘‘ تمہیںسر کے بالوں سے نکلی ہوئی’’جوں‘‘ بھی نہیں دے گا، دنیا میں عزت ووقار کے ساتھ زندہ وہی رہا کرتا ہے۔۔۔ جو’’حق‘‘ کے لئے۔۔۔ مرنا جانتا ہو، جب پاکستان کے حکمران مانتے ہیں کہ۔۔۔ مسئلہ کشمیر’’ برحق‘‘ ہے، حق خود ارادیت کشمیریوں کا ’’حق‘‘ ہے۔۔۔بھارت کی آٹھ لاکھ کے لگ بھگ فوج مقبوضہ کشمیر کے مسلمانوں۔۔۔ پر مظالم کے پہاڑ توڑ رہی ہے۔۔۔ اور یہ ’’کشمیر‘‘ بھی کوئی آسمانوں یا کوہ قاف پر واقع نہیں ہے۔۔۔ بلکہ یہ وہی کشمیر ہے کہ جس کے متعلق۔۔۔ بانیٔ پاکستان قائداعظم نے فرمایا تھا کہ۔۔۔ ’’کشمیر پاکستان کی شہہ رگ ہے‘‘۔۔۔ اس کے باوجود ہمارے حکمران کس دن کا انتظار کر رہے ہیں؟ کشمیری قوم کو بچانے کیلئے۔۔۔۔ اگر ہمیں فوجی مداخلت بھی کرنا پڑتی ہے۔۔ تو متحدہ جہاد کونسل کے سربراہ پیر صلاح الدین توکہتے ہیں کہ۔۔۔پاکستان کو اس سے بھی دریغ نہیں کرنا چاہئے، بھارت سے’’جنگ‘‘ کا نام سن کر ’’چوہوں‘‘ کی طرح  کانپنے والوں کو کوئی بتائے کہ جنگیں’’مرد‘‘ ہی لڑا کرتے ہیں اور ’’حق‘‘ کے لئے جنگیں لڑنے والے۔۔۔مرا نہیں کرتے، مٹا نہیں کرتے، بلکہ دنیا و آخرت میں ہمیشہ ہمیشہ کے لئے امر ہو جایا کرتے ہیں۔۔۔

مقبوضہ کشمیر کے کروڑوں مسلمانوں مردوں، عورتوں، اور بچوں کو۔۔۔ بھارتی ظلم و ستم سے۔۔۔ بچانے کیلئے۔۔۔ پاکستان کو جو کچھ بھی کرنا پڑتا ہے، اسے ڈٹ کر کرنا چاہئے۔ میرےWHATSAPP نمبر پر کشمیر سے ایک دوست صحافی نے دو وڈیو کلپس بھیجے ہیں۔۔۔ جن میں جیش محمدﷺکے مقامی کمانڈر پرویز احمد اور ان کے دو شہید ساتھیوں کی نماز جنازہ اور تدفین کے مناظر ہیں۔۔۔ خبروں کے مطابق ’’ترال‘‘ کے علاقے میں  جیش محمدﷺمقبوضہ کشمیر کے کمانڈر پرویز احمد اپنے دو ساتھیوں سمیت۔۔۔ بھارتی فورسز سے مقابلے میں شہید ہو گئے۔ ان شہداء کے جسد خاکی جب ان کے آبائی علاقے ناردہ پلوامہ میں پہنچائے گئے۔۔۔۔ تو سخت ترین کشیدہ ماحول کے باوجود۔۔۔ شہداء کی نماز  جنازہ میں شرکت کیلئے انسانوں کا سمندر تھا کہ نجانے کہاں سے امڈ آیا۔۔۔ وڈیو کلپس میں۔۔۔ میں دیکھ رہا تھا کہ نوجوان۔۔۔ انتہائی والہانہ انداز میں شہید پرویز احمد کی جنازے کی چارپائی کو برکت کے لئے ہاتھ لگا کر اپنے منہ اور سینوں پر پھیر رہے تھے۔۔۔ سینکڑوں عفت مآب کشمیری خواتین بھی۔۔۔ آزادی کے حق میں نعرے بلند کر رہی تھیں،

یہ وہ پرویز احمدؒ تھا کہ جو صرف 3ماہ قبل ہی۔۔۔ بدنام زمانہ کوٹ بھلوال جیل جموں سے12سالہ طویل اسیری کے بعد رہا ہوا تھا۔۔۔ یعنی کشمیر کی آزادی کیلئے۔۔۔۔ پہلے12سال مختلف انٹروگیشن سینٹروں،عقوبت خانوں اور جیلوں میں۔۔۔ ماریں کھائیں۔۔۔ ظلم برداشت کئے۔۔۔ اور رہائی کے بعد۔۔۔ بھی فریضہ جہاد کو چھوڑنا یا بھولنا گوارا نہ کیا۔۔۔ اور بالآخر جہاد کشمیر کی ادائیگی کے دوران ہی۔۔۔ شہادت کا تاج پہن کر ہمیشہ کیلئے امر ہو گیا

میں  پاکستان کے ان سارے سیاست دانوں۔۔۔ اینکرز، اینکرنیوں، تجزیہ نگاروں اور ڈالر خور این جی اوز کے خرکاروں کو شہید پرویز احمد کی جوتی کی خاک کے برابربھی نہیں سمجھتا کہ جو پاکستان کا کھاکر، پاکستان میں رہ کر۔۔۔ پاکستان اور کشمیری مسلمانوں سے غداری کی سوچ رکھتے ہیں۔۔۔ یہ ایسے بدبخت اور کم ظرف چوہے ہیں کہ جس جیش محمدﷺ کے سینکڑوں جانباز۔۔۔ مقبوضہ کشمیر۔۔۔ کے مسلمانوں کی آزادی کی جنگ لڑ رہے ہیں۔۔ جس جیش محمدﷺکے خلاف بھارتی وزیراعظم نریندر مودی۔۔۔ اسرائیل جا کروہاں سے مدد طلب کرتا ہے۔۔ اسی جیش محمدﷺاور اس کے سربراہ مولانا محمد مسعود ازہر کے خلاف۔۔۔ یہ ٹاک شوز میں گز گز بھر لمبی زبانیں نکالتے ہیں،ایسے ’’بے شرم‘‘ ہی دراصل کشمیری کی آزادی میں اصل رکاوٹ ہیں۔۔۔

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online