Bismillah

613

۲۲تا۲۸محرم الحرام۱۴۳۸ھ   بمطابق ۱۳تا۱۹اکتوبر۲۰۱۷ء

سیدنا فاروق اعظمؓ کی عظمت و کردار (قلم تلوار۔نوید مسعود ہاشمی)

Qalam Talwar 611 - Naveed Masood Hashmi - Syedna Farooq Azam

سیدنا فاروق اعظمؓ کی عظمت و کردار

قلم تلوار...قاری نوید مسعود ہاشمی (شمارہ 611)

وہ دعائے رسولؐ بھی تھے … مراد رسولؐ بھی تھے اور سسر رسولؐ بھی … رسول امین ﷺنے انہیں غلاف کعبہ سے لپٹ کر رات کی تنہائیوں میں اپنے رب سے مانگا تھا … پھر جب وہ ایمان لاکر … پیغمبر مصطفی ﷺ کی غلامی میں آئے تو لسان نبوتؐ سے آپؓ کو فاروق ؓ کا لقب عطا ہوا … آپؓ شجاع تھے ‘ بہادر تھے ‘ فن پہلوانی میں یکتا تھے ‘ فن شہسواری کے امام تھے ‘ سفارت کاری کے ماہر تھے‘ ذوق شاعری اور فن خطابت بھی آپؓ کا طرہ امتیاز تھا … لیکن آپؓ کا کمال یہ تھا کہ آپؓ سچے عاشق رسول ﷺ تھے … ایسے عاشق رسولؐ کہ اطاعت رسول ﷺ میں جنہوں نے اپنے آپ کو فنا کر دیا تھا … ایمان قبول کرنے کی خاطر جب دربار نبوت ؐ میںپہنچے تو سیدنا حمزہؓ کی نظر پڑگئی … تلوار نیام سے نکال کر فرمایا کہ ’’اگر غلط ارادے سے آیا ہے تو کام تمام کردوں گا‘‘… آقا و مولیٰﷺ  نے جب عمرؓ کے چہرے کی طرف دیکھا تو فرمایا ’’آنے دو … عمرؓ مراد بن کر آیا ہےؒ‘‘

سیدنا عمر فاروقؓ نے محمد کریمﷺ کے ہاتھ پر اسلام قبول کیا … محسن انسانیت ﷺ نے خوش ہوکر اللہ اکبر کی صدا بلند کی … تب صحابہ کرامؓ نے بھی تکبیر کا نعرہ بلند فرمایا … ایسا بلند کہ جس سے مکہ کی پہاڑیاں گونج اٹھیں … ایک شاعر نے کیا دلنواز نقشہ پیش کیا ہے کہ

تمہیں یارو مبارک ہو عمرؓ ابن خطاب آیا

خدا سے میں نے مانگا تھا دعائوں کا جواب آیا

وہ آیا ہے تو آنے دو بچھا دو پلکیں راہوں پر

وہ پہلا سا نہیں لگتا کرو نہ شک نگاہوں پر

وہ آیا ہے نہ جانے کو، خدا کا انتخاب آیا

سیدنا عمر فاروقؓ مسلمانوں کے حق میں بڑے نرم … اور جارح کافروں پر بڑے سخت تھے … محبوب دو عالم ﷺ کے حکم سے سرتابی کی … نہ جرأت کرتے تھے … اور نہ ہی برداشت کرتے تھے …

نبی کریم ﷺ کا ارشاد گرامی ہے کہ ’’اگر میرے بعد کوئی نبی ہوتا تو وہ عمرؓ بن خطاب ہوتے ‘‘ ایک اور حدیث رسولؐ ہے کہ اللہ رب العزت نے حق کو عمرؓ کی زبان کے ساتھ رکھ دیا ہے … سو وہ ہمیشہ حق ہی کہتے ہیں …  حضرت ابویسرؓ روایت کرتے ہیں کہ ’’حضور اکرمﷺ نے حضرت عمرؓ کو مخاطب کرتے ہوئے فرمایا ! اے عمرؓ اللہ تعالیٰ نے تمہیں دنیا اور آخرت کی بھلائیوں کی خوشخبری سنائی ہے‘‘… حضرت سعد بن ابی وقاصؓ سے روایت ہے کہ نبی اکرمﷺ نے فرمایا ’’جس راستے سے عمرؓ گزرتے ہیں … شیطان وہ راستہ چھوڑ کر دوسرے راستے پر ہولیتا ہے۔‘‘

حضرت نزالؓ فرماتے ہیں کہ ایک روز ہم حضرت علیؓ سے ملے … سیدنا علی المرتضیٰؓ خوشی و مسرت کی حالت میں تھے … ہم نے عرض کیا اے امیر المومنین!عمر بن الخطابؓ کے متعلق کچھ ارشاد فرمایئے … حضرت سیدنا علی المرتضیٰؓ نے فرمایا کہ عمر بن الخطابؓ ایسے بزرگ تھے … جن کا نام اللہ کے رسول ﷺ نے فاروق (حق و باطل میں فرق کرنے والا) رکھا ہے۔ حضور کریم ﷺ سے میں نے سنا ہے کہ آپﷺ فرماتے تھے … اے اللہ! عمرؓ کے ذریعہ اسلام کو عزت اور غلبہ عطا فرما…

جنگ بدر ہو‘  جنگ احد ہو‘ جنگ خندق ہو‘ فتح خبیر …یا غزوہ حنین‘ سیدنا فاروق اعظمؓ ہر غزوہ میں محمد کریمﷺ کے جھنڈے تلے … دشمنان اسلام کے خلاف برسر پیکار رہے … اسلام قبول کرنے کے بعد سب سے پہلے … آقا  مولیٰﷺ کی قیادت میں نماز اعلانیہ بیت اللہ میں جاکر پڑھی … مگر مشرکین مکہ کو جرات نہ ہوسکی کہ … وہ بیت اللہ میں نماز کی ادائیگی سے روک سکتے۔

خلیفہ بلافصل حضرت سیدناابوبکرصدیقؓ کی وفات کے بعد … آپ خلیفہ ثانی بنائے گئے … سیدنا فاروق اعظمؓ کا دور اسلام کی شان و شوکت اور فتوحات کا سنہری دور ثابت ہوا۔

آپؓ نے اپنے دور خلافت میں 22 لاکھ 51 ہزار مربع میل سے زائد علاقے کو فتح کرکے وہاں پرچم اسلام کو لہرایا…عراق ہو ‘ شام ہو ‘ دمشق ہو ‘ حمص‘ یرموک ‘ انطاکیہ ہو ‘ بیت المقدس ہو ‘ قیساریہ ہو ‘ جزیرہ خوزستان ہو ‘ ایران ہو یا فارس ‘ کرمان ‘ سیستان ‘ مکران‘ خراسان ‘ مصر ‘ اسکندریہ گویا کہ عرب و عجم کے ایک وسیع ترین حصے پر کفریہ طاقتوں کو شکست دے کر مضبوط ترین اسلامی سلطنت قائم کی۔

حضرت سیدنا فاروق اعظمؓ… محسن عالم محمد کریمﷺ کے شاگرد خاص تھے اس لئے … بے لاگ عدل و انصاف آپؓ کا طرہ امتیاز تھا … جرم کرنے والا کوئی بھی ‘ کسی بھی خاندان کا کیوں نہ ہو … مگر وہ مجرم کی  شان  یا خاندانی وجاہت کو خاطرمیں لائے بغیر عدل و انصاف کے تقاضے پورے فرمایا کرتے تھے … حضرت سیدنا عمر فاروقؓ نے اپنے دور خلافت میں بے شمار کارہائے نمایاں سرانجام دیئے … آپؓ نے اپنے دور خلافت میں باقاعدہ عدالتی نظام رائج کیا … اور ملک میں قاضی مقرر کیے ‘ فوجی ہیڈ کوارٹر بنائے ‘ دفتر مال قائم کیا ‘ رقبوں اور سڑکوں  کی پیمائش کروائی ‘ مردم شماری کروائی ‘ نہریں کھدوائیں ‘ غیر مسلم تاجروں کو تجارت کی غرض سے اپنے ملک میں آنے جانے کی سہولتیں مہیا کیں … پولیس  کا محکمہ قائم کیا ‘ بے روزگار یہودیوں اور عیسائیوں کے وظیفے مقرر کیے … مسجدوں میں روشنی کا انتظام کیا … امام اور موذنوں کے وظائف مقرر کیے ‘ جیل خانے قائم کیے … فوجی چھائونیاں قائم کیں ‘ مختلف شہروں میں مہمان خانے قائم کیے … سن ہجری کی ابتداء کی اور اسکا  تعین ہجرت کے سال سے کیا ‘ یہ قاعدہ مقر ر فرمایا کہ آئندہ اہل عرب غلام نہیں بنائے جائیں گے … نماز تراویح جماعت کے ساتھ قائم کی ‘ شراب نوشی کی حد اسی کوڑے مقرر کی … عشر کا طریقہ قائم کیا ‘ جب رعایا سو رہی ہوتی تھی حضرت سیدنا امام عمرؓ راتوں کو گلیوں اور محلوں میں گھوم پھر کر رعایا کے حالات معلوم کرنے کیلئے گشت کیاکرتے تھے … حضرت سیدنا عمر فاروقؓ کی شخصیت کا کمال دیکھئے کہ … آدھی سے زائد دنیا پر حکمران تھے … مگر اپنی ذاتی حفاظت کیلئے کسی ایک بھی شخص کو باڈی گارڈ کے طور پر رکھنا گوارا فرمایا … میں جب اسلامی جمہوریہ پاکستان کے حکمرانوں اور سیاست دانوں کو باڈی گارڈ ز کے لشکروں … کے پہرے میں دیکھتا ہوں تو یہ سوچتے ہوئے دل تھام کے رہ جاتا ہوں کہ … یہ کیسی بلائیں ہیںکہ جو مسلمان قوم کے گلے آن پڑی ہیں؟

آپؓ کے قاتل کا نام فیروز تھا … ’’ابولولو‘‘ اس کی کنیت تھی … وہ ایران کا مجوسی تھا … سیدنا فاروق اعظمؓ نے جب فجر کی نماز کی امامت شروع کروائی تو بدبخت ’’فیروز‘‘ نے زہر میں بجھے ہوئے خنجر سے آپؓ پر حملہ کر دیا … خنجر کے چھ وار سہنے کے بعد … آپؓ نے گرنے سے قبل اپنے پیچھے کھڑے ہوئے … حضرت عبدالرحمن بن عوفؓ کا ہاتھ پکڑ کر امامت کیلئے اپنی جگہ پر کھڑا کر دیا … اس نازک صورت حال میں بھی انہوں نے نماز پڑھائی ‘بدبخت فیروز لولو اور اس کے … منافق سرپرست تو … خنجر کے وار کرکے … سیدنا فاروق اعظمؓ کے وجود کو مٹانا چاہتے تھے … مگر آج سوا چودہ سو سال بعد بھی … صرف ایک ارب 22 کروڑ مسلمان ہی نہیں بلکہ پانچ ارب کے لگ بھگ کافر بھی یہ بات مانتے ہیں کہ … دنیا میں اگر ایک عمرؓ اور آجاتا تو دنیا کے نقشے سے کفر کانام و نشان ہی مٹ جاتا۔

سیدنا عمرؓ کی عظمت و شان ‘ رفعت و سربلندی دیکھیئے کہ … روضہ رسول ﷺ میں … محمد کریم ﷺ کے پہلو میں آسودہ خاک ہیں۔ سبحان اللہ

(وما توفیقی الا باللہ)

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online