Bismillah

671

۲۸ربیع الاول تا۴ربیع الثانی۱۴۴۰ھ  بمطابق       ۷تا۱۳دسمبر۲۰۱۸ء

ٹرمپ کا امریکا؟ (قلم تلوار۔نوید مسعود ہاشمی)

Qalam Talwar 624 - Naveed Masood Hashmi - Trump ka America

ٹرمپ کا امریکا؟

قلم تلوار...قاری نوید مسعود ہاشمی (شمارہ 624)

بدنامی، جگ ہنسائی اوررسوائی اُس کی ہوتی ہے جس کی کوئی’’عزت‘‘ ہو۔۔۔ امریکا کا’’عزت‘‘ سے ناطہ ٹوٹے کئی دہائیاں بیت چکیں۔۔۔ اس لئے جو لوگ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس میں بیت المقدس پر ٹرمپ فیصلے کی نامنظوری کو امریکہ کی بدنامی اور رسوائی قرار دے کر خوشیاں منا رہے ہیں۔۔۔ ان سے گزارش ہے کہ انہیں نہ رسوائیوں کی پرواہ ہے اور نہ ہی بدنامیوں سے کوئی خطرہ۔۔۔ اِن موذیوں کا جب تک قرآن و سنت کی روشنی میں مسلم امہ علاج نہیں کرے گی۔۔ اس وقت تک بدنام زمانہ’’ٹرمپ‘‘ امت مسلمہ کو نقصان پہنچانے کی کوششیں کرتا رہے گا۔

دنیا کے سب سے بڑے رسواکن قاتل بش کے امریکہ اور ٹرمپ کے امریکہ میں کوئی زیادہ فرق نہیں ہے۔۔۔سوائے اس کے کہ ’’بش‘‘ نے امریکہ پر منافقت کا خول چڑھا رکھا تھا۔۔۔ اور ٹرمپ نے منافقت کا چولا اُتار کر ’’امریکہ‘‘ کو ننگا کر دیا۔۔۔ رہ گئی بات امریکی عہدیداروں کی طرف سے پاکستان کو دی جانے والی دھمکیوں کی۔۔۔ تو کیا امریکا اور کیا اس کی دھمکیاں؟۔۔۔’’اس رب کی قسم‘‘ جس نے ملا محمدعمرؒ جیسے کمزور انسان کے ہاتھوں اس گئے گزرے دور میںبھی۔۔۔ اسلام کا خوبصورت نظام نافذ کروایا تھا۔۔۔ جس دن’’مسلمانوں‘‘ نے ملعون مرزا غلام قادیانی کی جہاد مقدس کے خلاف پھیلائی ہوئی تاویلوں سے جان چھڑوا کر میدانوں کاراستہ اختیار کر لیا۔۔۔ وہ دن کئی سپر’’پاورز‘‘ کی طاقت کے جنازے اُٹھنے کا دن ہوگا۔

امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹیلرسن کا یہ کہنا کہ’’ایسا نہ ہو کہ افغانستان میں حملے کرنے والے اپنا رُخ پاکستان کی جانب کر لیں۔۔۔ ان کو پاکستان میں زیادہ بہتر ہدف مل سکتا ہے۔۔۔ پاکستان نے کئی دہشتگرد تنظیموں کو پناہ دے رکھی ہے‘‘۔۔۔ اور امریکہ کے نائب صدر مائیک پنس کا یہ کہنا کہ اگر پاکستان نے دہشتگردوںاور جرائم پیشہ عناصر کی پشت پناہی جاری رکھی تو وہ بہت کچھ کھو دے گا،صدرٹرمپ پہلے ہی کہہ چکے ہیں کہ اگر پاکستان امریکا سے تعاون کرے گا تو اسے بہت کچھ ملے گا۔۔۔ لیکن اس نے دہشتگردوں کی پشت پناہی جاری رکھی توبہت کچھ کھونے کیلئے تیار رہے۔

بگرام ایئر بیس پرامریکی فوجیوں سے خطاب کرتے ہوئے امریکا کے نائب صدر نے اور بھی بہت سی بڑھکیںماریں۔۔ مگر ان سب سے صرف نظر کرتے ہوئے۔۔۔ یہ لکھے بغیر چارہ نہیں ہے کہ آج کبھی صدرٹرمپ، کبھی امریکی وزیر خارجہ اور کبھی امریکی نائب صدر۔۔۔ بار،بار پاکستان کو دھمکیاں دے رہے ہیں۔۔۔

’’آہ‘‘ پرویز مشرف کاتاریک دور۔۔۔ پاکستانی قوم کیلئے عذاب خداوندی سے کم نہ تھا۔۔۔ یہود و نصاریٰ کے ساتھ مل کر’’مسلمانوں‘‘ کی کمر میںخنجر گھونپنے کی بدترین مثالیںقائم کرنے والے رسوائے زمانہ پرویز مشرف تواپنی اصل جگہ یعنی تاریخ کے کوڑے دان میں پہنچ گیا۔۔۔دبئی سے آنے والے اس کے بیانات اور انٹرویوز کو دیکھ کر۔۔۔ بعض لوگ سمجھتے ہیں کہ جیسے کوئی طوفان آنے والاہے۔۔۔ تاریخ کے کوڑے دان کی نظر ہو جانے والے چائے کی پیالی میں بھی طوفان اٹھانے سے محروم ہو جایا کرتے ہیں۔۔۔ جیسے کسی خوبصورت انسان کو۔۔۔ کسی خوبصورت گاڑی یا بلڈنگ کو کسی کی نظرلگ جایاکرتی ہے۔۔۔

ویسے ہی پاکستان کو کچھ عرصہ کیلئے یہود و نصاریٰ کی نظر بد یعنی ’’پرویز مشرف‘‘ لگ گیا تھا۔۔۔ میرے پیارے وطن پاکستان کی کرامت دیکھئے کہ اس نے اپنے دامن سے اس ’’نظر بد‘‘ کو اتار باہر پھینکا، آئندہ بھی جب، جب امریکہ یا اس کا کوئی’’بھوتنا‘‘ پاکستان کو دھمکیاںدے گا۔۔۔ تب،تب رسوا کن ڈکٹیٹر ضروریاد آئے گا۔۔۔

 رسوائے زمانہ ڈکٹیٹر اوردیگر امریکی غلاموںکی رسوائیوں کے سفرمیں پاکستان نے جو کچھ کھونا تھا۔۔۔ کھو چکا۔۔۔ ایک،دویا سونہیں۔۔ بلکہ پچاس ہزار کے لگ بھگ پاکستانی بیٹے پاکستان نے امریکہ کی بھڑکائی ہوئی دہشتگردی کی آگ میں قربان کئے، امریکہ نے ڈالر دیئے بھی تو صرف مونگ پھلی کے دانوں کے برابر۔۔۔ایسے امریکی ڈالروںپر لعنت کہ جن ڈالروں کے عوض۔۔۔ مسلمان ہی مسلمانوں کاخون بہانے کے لئے تیارہو جائیں۔

پاکستان یہ بات ڈنکے کی چوٹ پہ کہہ چکا ہے کہ ہمیں امریکی ڈالروں کی بھیک نہیںچاہئے۔۔۔ لیکن اس کے باوجود امریکہ پاکستان کو کبھی ڈرا کر، کبھی دھمکاکر۔۔۔ کبھی غصے سے اورکبھی پچکار کر۔۔۔ افغان طالبان کے ساتھ لڑوانا چاہتاہے۔۔۔

لیکن پاکستان اب سنبھل چکا ہے۔۔۔۔ الحمدللہ! اسی لئے امریکی گیدڑ بھبکیوں کے جواب میں پاکستان کے اعلیٰ حکام امریکہ کو سمجھا رہے ہیں کہ’’امریکہ ہمیںالزام یا دھمکی نہ دے۔۔۔بلکہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ہمارے تجربات سے سیکھے‘‘

 سچ کہا ترک صدر رجب طیب اردگان نے۔۔۔’’کہ امریکا انصاف نہیں بلکہ ظلم کا حامی اور طرف دارہے۔۔۔ امریکی حکومت دنیا کوڈالروں پر بلیک میل کر رہی ہے۔۔۔ اورڈالروں کے عوض عالمی ضمیر کا سودا کرناچاہتی ہے۔۔۔ طیب اردگان نے للکارتے ہوئے کہا کہ امریکیو!تم ڈالروں کے بدلے ترک قوم کے ضمیرنہیں خرید سکتے۔۔۔بین الاقوامی قیادت اپنے ضمیر نام نہاد جمہوریت کے کھوٹے سکوں کے ہاتھوں فروخت ہونے سے بچائیں‘‘

امریکا پاکستان کو دھمکیاں دے رہا ہے۔۔۔ اورمیں تصور کی آنکھ سے ان عرب شہزادوں کے بے گور لاشے دیکھ رہا ہوں کہ جنہیں کبھی کوہاٹ کے جرماپل، اور کبھی کراچی کے علاقے ڈیفنس میںرسواکن ڈکٹیٹر نے اپنا امریکہ کا دورہ کامیاب بنانے کیلئے مرواڈالا تھا، میری تصور کی آنکھ لاہور،اورکبھی فیصل آباد سے گرفتار کر کے امریکیوں کے ہاتھوںڈالروں کے بدلے فروخت کئے جانے والے مسلمان بیٹوں تک بھی مجھے لے جاتی ہے۔۔۔ یہ سارے مکروہ کھیل کھیلنے کے بعد وہ رسوائے زمانہ ڈکٹیٹر کہا کرتاتھا کہ’’ اگرہم ایسا نہ کرتے تو امریکا ہمارا تورا بورا بنادیتا‘‘۔۔۔ اس ڈکٹیٹر کاشیخ رشید نام کاطبلچی۔۔۔ قوم کو بتایا کرتا تھا کہ اگر ہم نے امریکہ کے دشمنوں کو اپنی سرزمین پر نہ مارا تو امریکا ہمارا’’ آملیٹ‘‘ بنادے گا۔

پلوں کے نیچے سے بہت سا پانی گزرچکا۔۔۔ہم نے صرف مسلمان جوان ہی نہیں۔۔۔ بلکہ مسلمان بیٹی ڈاکٹر عافیہ صدیقی کے ڈالر بھی کھرے کر لئے، ہم نے افغان طالبان کی۔۔۔ اسلامی حکومت کوختم کرنے کیلئے امریکہ کو اپنے کندھے استعمال کرنے کی پوری اجازت بھی دی۔۔۔ مگرا س سب کے باوجود امریکہ ہم سے راضی نہ ہوا۔۔۔ اور اب ٹرمپ سے لیکر ٹیلرسن اور امریکی نائب صدر ’’مائیک پینس‘‘تک پاکستان کو نقصان پہنچانے کی اعلانیہ دھمکیاں دے رہے ہیں۔۔۔ لیکن اگرپاکستان کے حکمرانوں، مسلح افواج اور عوام نے اپنا دامن مضبوطی کے ساتھ مذہب اسلام کے ساتھ وابستہ کر لیا۔۔۔تو اسلام کے حکم جہادپر عمل پیرا ہو کرہی ٹرمپ جیسے ذہنی مریضوںکا۔۔۔ کامیاب علاج کیاجاسکتاہے۔۔۔

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online