Bismillah

645

۸تا۱۴رمضان المبارک ۱۴۳۹ھ  بمطابق ۲۵تا۳۱مئی۲۰۱۸ء

رمضان المبارک کے مجرم (قلم تلوار۔نوید مسعود ہاشمی)

Qalam Talwar 643 - Naveed Masood Hashmi - Ramzan ul Mubarak k Mujrim

رمضان المبارک کے مجرم

قلم تلوار...قاری نوید مسعود ہاشمی (شمارہ 643)

اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ایک کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ ’’رمضان ٹرانسمیشن میں سرکس لگتے رہے اوربے ہودگی ختم نہ ہوئی تو عدالت ان شوز پر پابندی لگا دے گی۔۔۔ انہوں نے کہا مادر پدر آزادی سے ہمارا معاشرہ تباہی کی طرف جا رہا ہے، نہ رمضان کا تقدس نہ کسی اور دن کا۔۔۔ یہاں صرف ویلنٹائن ڈے کا’’تقدس‘‘ ہے‘‘۔

ہائیکورٹ کے جسٹس شوکت عزیز صدیقی کے یہ ریمارکس ہمارے معاشرے کی زبوں حالی اور تباہی و بربادی کی عکاسی کرنے کیلئے کافی ہیں۔۔۔ جب سے دجالی میڈیا کا جن بوتل سے باہر آیا ہے۔۔۔ تب سے پاکستان میں بے حیائی اور فحاشی نے ڈیرے ڈال لئے ہیں۔۔۔ اور اب ہر آنے والا سورج۔۔۔ فحاشی و عریانی کے گند کو بڑھتا ہوا دیکھ رہا ہے۔۔ رمضان المبارک کے روزے عبادت خداوندی ہیں۔

رمضان کے روزوں کو اللہ نے مسلمانوں پر فرض قرار دیا ۔۔۔ یہ رحمت، مغفرت اور جہنم سے چھٹکارے کا مہینہ ہے۔۔۔ رمضان المبارک کی فضیلت کااس سے اندازہ کیجئے۔۔۔ کہ عام مہینوں میں ادا کئے جانے والے فرائض کا اجر اس ماہ میں ستر گنابڑھ جاتا ہے۔۔ خاتم الانبیائﷺ فرماتے ہیں کہ’’ رمضان کے مہینے میں میری امت کو 5ایسی نعمتیں عطاء کی گئی ہیں جو مجھ سے پہلے کسی کو نہیں دی گئی تھیں۔۔۔ اول، رمضان کی پہلی رات میں اللہ ان پر نظر کرم کرتا ہے۔۔ اور جس پر اللہ نظر کرم کرتا ہے۔۔۔ اسے کبھی عذاب سے دوچار نہیں کرتا،دوم، فرشتے ہر رات اور ہر دن، اس کے لئے مغفرت کی دعا کرتے ہیں۔۔۔ سوم، اللہ اس کے لئے جنت واجب کر دیتاہے، اورجنت کو حکم دیاجاتا ہے کہ روزہ دار بندے کیلئے خوب آراستہ و پیراستہ ہو جاؤ۔۔۔ تاکہ دنیا کی مشکلات اور تھکاوٹ کے بعد میرے گھر اور میری مہمان نوازی میں آرام ملے۔۔۔ چہارم، روزہ دار کے منہ کی بو اللہ کے نزدیک مشک کی خوشبو سے زیادہ پسندیدہ ہے،پنجم، رمضان کی آخری رات روزہ دار کے سارے گناہ بخش دیئے جاتے ہیں۔۔۔رمضان المبارک کی یہ ساری نعمتیں اور فضائل ان کیلئے ہیں جو رمضان کی قدر کرنے والے ہوں۔

پاکستان میں رمضان المبارک کی نعوذ باللہ ناقدری کی بنیاد عامر لیاقت نامی اینکر نے رکھی۔۔۔ ’’آشا‘‘ کی دلالہ میں منہ کالا کروانے والے چینل نے ایم کیو ایم اور رسوائے زمانہ پرویز مشرف کے اس لے پالک اینکر کے ذریعے رمضان نشریات کے نام پر وہ دھما چوکڑی اور بیہودگی پھیلائی کہ الامان الحفیظ۔۔۔ جب حکمرانوں اور سیاست دانوں نے رمضان نشریات کے نام پر ہونے والی رمضان المبارک کی ناقدری کا نوٹس نہ لیا تو دیکھا، دیکھی دوسرے چینلز نے بھی گناہ کے اس کام کو آگے بڑھانے کی ٹھان لی۔

بس پھر تو’’خربوزوں‘‘ نے ایک’’خربوزے‘‘ کو دیکھ کر ایسا رنگ پکڑا کہ سالہا سال سے ہر سال رمضان المبارک کی آمد کے ساتھ ہی کبھی’’جان رمضان‘‘، کبھی’’ایمان رمضان‘‘ اور کبھی ’’پاکستان رمضان‘‘ کے ٹائٹل تلے۔۔۔خرمستیوں اور بیہودگیوں سے مزین سرکس سجائے گئے،میری عادت کہ میں بے حیائی، فحاشی و عریانی کو فروغ دینے والے مجرم  خواہ کتنے بھی طاقتور کیوں نہ ہوں۔۔۔ اپنے کالموں میں ان کے نام اس لئے لکھنے کی کوشش کرتا ہوں۔۔ تاکہ عوام ایسے بے حیاؤں سے دور رہنے میں آسانی محسوس کریں۔۔۔ یہ تو پھر’’رمضان‘‘ کے مجرم ہیں۔۔۔ جس ماہ مبارک کو اللہ کا مہینہ کہا جاتا ہے۔۔ دجالی میڈیا کے پنڈتوں نے اسے اداکاروں، گلوکاروں، صداکاروں، فتنہ پرور اینکرز اور اینکرنیوں کے حوالے کر کے۔۔۔ اللہ کے اس عظیم مہینے کی جان بوجھ کر ناقدری کی، میرے نزدیک ایک عالمی سازش اور ڈالرخوروں کے بدطنیت گروہ کے ہاتھوں ہونے والی ہر سال۔۔۔ رمضان المبارک کی توہین اور ناقدری کہ وہ حکمران۔۔۔ سیاست دان۔۔۔ اور دیگر ادارے بھی برابر کے مجرم ہیں کہ جنہوں نے ڈالر خور گروہ کے اس گستاخ ٹولے کو روکنے یا ٹوکنے کی ضرورت ہی محسوس نہ کی۔

 میرا مذہبی جماعتوں، اور مذہبی قائدین سے سوال ہے کہ کیا ہم پر صرف رمضان کے روزے ہی فرض ہیں۔۔۔ رمضان المبارک کی عزت و عظمت اور فضیلت کے دفاع اور تحفظ کی ذمہ داری کس کی ہے؟ اگر چند دجالی چینلز نے غیر ملکی آقاؤں سے ڈالر حلال کرنے کیلئے۔۔۔ ’’رمضان المبارک‘‘ کو اپنے بزنس کا حصہ بنانے اور ریٹنگ بڑھانے کیلئے استعمال کرنا شروع کر دیا تھا۔۔۔ ان کے ’’شر‘‘ سے رمضان المبارک کو بچانا کس کی ذمہ داری تھی؟ کیا علماء کرام کا کام، بھانڈ میراثی اداکار اور اداکاروں کے سپرد کیا جا سکتا ہے؟

ہرگز نہیں، علماء تو انبیاء کے وارث ہیں۔۔۔ قرآن وسنت کی جو تشریح علماء کر سکتے ہیں۔۔۔ رمضان المبارک کی جو عظمت و فضیلت علماء کرام بیان کرسکتے ہیں کسی دوسرے کے پاس اتنی سکت کہاں؟

اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس شوکت عزیز صدیقی کو اللہ عزت دے کہ جنہوں نے۔۔۔ رمضان ٹرانسمیشن کے نام پر پھیلائی جانے والی بے ہودگی کا نوٹس تو لیا، ورنہ اداکاروں، گلوکاروں، فنکاروں اینکرز اوراینکرنیوں کے اس’’رمضانی‘‘ گروہ نے تو رمضان المبارک کی توہین اور ناقدری کو اپنا پیدائشی حق سمجھ رکھا تھا۔۔۔ رمضان المبارک کو گلیمرائز کرنے کی کوشش کرنے والے ناقدروں کو بھی قانون کے شکنجے میں کسنے کی ضرورت ہے۔

جس طرح مسئلہ ختم نبوت کی ناقدری کرنے والے۔۔۔ مسئلہ ختم نبوت کو متنازعہ بنانے کی کوششیں کرنے والے اس ملک و قوم کے مجرم ہیں۔۔۔ بالکل اسی طرح رمضان المبارک کے تقدس کو پامال کرنے والے۔۔۔ رمضان المبارک کے مقدس عنوان کو اپنی ریٹنگ بڑھانے کیلئے استعمال کرنے والے، رمضان نشریات کے نام پر عوام کو قرآن کریم کی تلاوت سے روکنے کی سازش کرنے والے بھی اس ملک و قوم کے مجرم ہیں۔

ہمیں رمضان المبارک کے مہینے کی قدر کرنی چاہئے۔۔۔ اور ساتھ اس بات کا عہد بھی کہ’’خناسوں‘‘ کا جو گروہ بھی رمضان المبارک کی توہین کرنے کی کوشش کرے ہمیں تحفظ فضائل رمضان کا فریضہ ادا کرتے ہوئے ایسے خناس گروہ کو انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کرنے کی کوشش کرنی چاہئے۔

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online