Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

امن کہاں اور کونسا؟ (رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے)

rangonoor 465 - Saadi kay Qalam Say - Aman kahan aur konsa

 امن کہاں اور کونسا؟

رنگ و نور ۔۔۔سعدی کے قلم سے (شمارہ 465)

اللہ تعالیٰ ہمارا انجام اچھا فرمائے…اور ہمیں دنیا کی ذلت اور آخرت کے عذاب سے بچائے…

اَللّٰہُمَّ اَحْسِنْ عَاقِبَتَنَا فِی الْاُمُوْرِ کُلِّھَا وَاَجِرْنَا مِنْ خِزْیِ الدُّنْیَا وَعَذَابِ الآخِرَۃِ

بے چاری

بے چاری ’’ملالہ‘‘ پر صلیبیوں نے ’’نوبیل انعام ‘‘ بھی لاد دیا…اُس کا باپ عجیب طرح کی خوشی کا اظہار کر رہا تھا…توبہ توبہ! اللہ تعالیٰ کسی مسلمان بیٹی یا بہن کو ایسا باپ نہ دے…اس شخص نے اپنی بیٹی کو کافروں کا تماشہ اور آلہ کار بنا دیا… صرف مال اور شہرت کی ہوس میں…وہ اپنے انٹرویو میں کہہ رہا تھا ملالہ ہر پاکستانی ماں کی بیٹی ہے…بالکل غلط،بالکل جھوٹ…

پاکستانی ماؤں کی بیٹیاں تو بڑی شان والی ہیں…کتنی ایسی ہیں جو قرآن مجید کی حافظہ ہیں…سبحان اللہ! …بس ایک آیت بتا دو تو وہ اللہ تعالیٰ کے عظیم کلام کو زبانی پڑھتی چلی جاتی ہیں…کئی کئی پارے،بغیر رکے ، بغیراٹکے …قرآن مجید کے انوارات ان کے پاکیزہ چہروں اور آنکھوں میں رچ بس جاتے ہیں …کاش ملالہ کا باپ بھی اپنی بیٹی کو یہ عظیم الشان اور بے مثال نعمت حاصل کرواتا…مگر کہاں؟ وہ بد نصیب تو دن رات اپنی بیٹی کو رسوا کرا رہا ہے… پاکستانی ماؤں کی بیٹیاں تو بہن عافیہ جیسی ہوتی ہیں …با حیا، باغیرت، علم والیاں،دین والیاں… اور بہادر…پاکستانی ماؤں کی بیٹیاں تو…باپردہ ایمان والیاں ہیں…ان کے سر سے اُترا دوپٹا آسمان بھی نہیں دیکھ پاتا…وہ راتوں کی تنہائیوں میں سجدے کرتی ہیں اور سیدہ مریم کی دعاء ہی… ان کی سب سے بڑی امنگ ہے

رَبِّ ابْنِ لِیْ عِنْدَکَ بَیْتاً فِی الْجَنَّۃِ

نوبیل انعام کا منحوس سلسلہ ایک صدی سے کچھ زیادہ عرصہ سے شروع ہے…امن کا پہلا انعام …سرخ صلیب یعنی ریڈ کراس کے بانی کو ملا … اور اب تک کا آخری انعام… ایک انڈین ہندو کیلاش…اور ملالہ کو مشترکہ طور پر ملا ہے…ملالہ کے ابا کو افسوس تو ضرور ہو گا کہ اب…آدھی رقم ملے گی…مگر نوبیل کا نام بڑا ہے…اس پر مزید پیسہ بھی ملتا رہتا ہے…کاش ملالہ! اللہ تعالیٰ کے دین سے وفاداری کرتی…اللہ تعالیٰ کا انعام ہر انعام سے بڑا ہے…ساری دنیا کے نوبیل انعام مل کر بھی…استغفار کے ایک آنسو برابر نہیں ہو سکتے …یہ آنسو جہنم کی آگ کو بجھا دیتا ہے…نوبیل انعام سے نہ تو عمر بڑھتی ہے نہ موت ٹلتی ہے…نہ رزق بڑھتا ہے اور نہ صحت اچھی ہوتی ہے…الحمد للہ ہماری مسلمان بیٹیوں کے پاس جو کچھ موجود ہے…نوبیل انعام اس کے سامنے خاک سے بھی زیادہ حقیر ہے…

کلمہ طیبہ ،نماز، قرآن مجید،پردہ،حیا…ذکر اللہ،درود شریف،استغفار،جہاد کی خدمت… دین کی خدمت…اے مسلمان بہنو! یہ سب نعمتیں مبارک ہیں…ملالہ لندن،سویڈن،امریکہ،کینیڈا میں پھرتی رہے…اللہ تعالیٰ آپ کو مکہ شریف لے جائے…مدینہ منورہ لے جائے…اپنا عظیم گھر دکھائے…شکر کریں وہ بیٹیاں اور بہنیں…جن کو ایسے والدین اور بھائی ملے ہیں جو …انہیں قرآن مجید کی تعلیم دلواتے ہیں…جو انہیں پردہ اور حیاء کی بات سمجھاتے ہیں…جو انہیں ذکر اللہ اور جہاد کی بلندیوں سے آشنا کرتے ہیں…جو انہیں آخرت کی وسعتوں سے متعارف کرتے ہیں…اور جو ان کے دین،ایمان،غیرت اور شان کی حفاظت کرتے ہیں…

بے چارے

مسلمانوں کے ساتھ اللہ تعالیٰ کی نصرت ایسی ہمکنار ہوئی ہے کہ …ماشاء اللہ روز نئی فتوحات،روز نئی ترقی…اور روز نئی خوشخبریاں… یہ سب شہداء اسلام کے خون کی برکت ہے… اسلام کے لئے جانیں لگیں،خون لگا تو آج الحمد للہ مسلمانوں کے لشکر جس طرف کا رخ کرتے ہیں …فتوحات ان کے قدم چومتی ہیں…

فلسطینی مجاہدین نے اس رمضان المبارک میں …اسرائیل کی دم کاٹ دی ہے…عراق و شام میں دولت اسلامیہ نے ایک نئی دھوم اٹھا دی ہے…افغانستان میں طالبان نے اتحادی لشکر کو بے بس کر کے رکھ دیا ہے…کشمیر میں مجاہدین کے حملوں اور یلغار نے مودی کے ایسے دانت توڑے کہ وہ…اب پاکستان پر بمباری اور گولہ باری کر کے اپنی عزت بچانے کی کوشش کر رہا ہے…سبحان اللہ! فتوحات ہی فتوحات…ہر دن سینکڑوں، ہزاروں لوگ فوج در فوج اسلام میں داخل ہو رہے ہیں…یورپ چیخ رہا ہے،امریکہ چلا رہا ہے،انڈیا کراہ رہا ہے کہ…مسلمان عورتوں تک میں… بنیاد پرستی اور شدت پسندی بڑھ رہی ہے…اب یہ بدبودار پروپیگنڈہ ہے کہ …مسلمان لڑکیاں شادی کے لئے بھاگ بھاگ کر عراق اور شام جا رہی ہیں …کوئی تھوڑی سی عقل رکھتا ہو تو سوچ سکتا ہے کہ…جسمانی خواہشات کے لئے امریکہ اور یورپ سے بڑھ کر کھلا میدان اور کہاں مل سکتا ہے؟…کوئی بھی شادی کے لئے نہیں جاتا… جھوٹ سو فی صد جھوٹ…یہ اسلام کا نور ہے جو خوش نصیب افراد کو اپنی طرف کھینچ رہا ہے…ان حالات کو دیکھ کر دشمنان اسلام سخت پریشان ہیں …ان کی صدیوں کی محنت خاک میں مل رہی ہے…وہ ہر میدان میں پے درپے شکست کھا رہے ہیں…اب ان کے آخری سہارے یہی رہ گئے ہیں کہ…مسلمانوں میں سے گمراہ افراد کو … پیسہ اور ظاہری عزت دیکر مسلمانوں میں بھیجا جائے تاکہ وہ…مسلمانوں کو دین اور جہاد سے دور کریں …اسی پریشانی اور بوکھلاہٹ میں انہوں نے ’’ملالہ‘‘ کو نوبیل انعام دیا ہے…آپ اندازہ لگائیں کہ یہ لوگ کس قدر حواس باختہ اور پریشان ہیں…ملالہ کا امن کے نوبیل انعام سے کیا تعلق؟ کہاں کا امن اور کونسا امن؟ دنیا کے کس ملک، خطے، شہر یا محلے میں…اس سترہ سالہ لڑکی نے امن قائم کیا ہے؟…چلیں شہر اور محلہ چھوڑیں،اس گلی کا نام بتا دیں،جہاں ’’ملالہ‘‘ نے امن قائم کیا ہو…یا ان مسلح دستوں کا نام بتا دیں جن کے درمیان ملالہ نے صلح کروائی ہو…یا کم از کم وہ منصوبہ ہی بتا دیں جو ملالہ نے امن کے لئے کسی کے سامنے پیش کیا ہو؟…

اوبامہ کو امن کا نوبیل انعام ملا تھا…ہزار اختلاف کے باوجود بہرحال یہ تو سچ ہے کہ اس نے عراق سے امریکی فوج واپس بلائی تھی…اس کے اس اقدام سے امن قائم نہیں ہوا مگر یہ ایک بڑا اور مشکل قدم تھا…چلو اس پر اسے نوبیل انعام ملا…ملالہ نے کون سی فوج کس جگہ سے واپس بلائی ہے؟یاسر عرفات نے اسرائیل کے ساتھ ایک امن سمجھوتہ کیا تھا…وہ کوئی اچھا اقدام نہیں تھا بہرحال عام دنیا کی نظر میں وہ ایک مشکل اور بڑا فیصلہ تھا…اس پر اسے امن کا نوبیل انعام ملا…ملالہ نے کس کے ساتھ امن کا سمجھوتہ کیا ہے؟…ہاں ممکن ہے اپنے ابو اور امی کے درمیان کوئی صلح کروائی ہو…وہ بھی آج تک میڈیا پر نہیں آئی…پھر آخر وہ کونسا کارنامہ ہے جس پر اسے دنیا کا اہم ترین سمجھا جانے والا ایوارڈ دے دیا گیا؟ … جواب واضح ہے کہ کوئی نہیں!…بس اسے مسلمانوں کے خلاف استعمال کرنے کے لئے … زیادہ مؤثر اور زیادہ معتبر بنانے کی ایک فضول اور ناکام سی کوشش ہے…چنانچہ مغربی میڈیا کو حکم دیا گیا کہ وہ ملالہ کو انعام ملنے کی خبر اُچھالے… ساتھ ہی یہ دباؤ بھی ڈالا گیا کہ…پاکستان میں اس فیصلے پر خوشی منائی جائے …منافق قسم کے کالم نویسوں نے بی بی سی وغیرہ پر…طرح طرح کے مضامین لگائے اور اس بات کا رونا رویا کہ…آخر پاکستان میں ملالہ کو انعام ملنے کی خوشی کیوں نہیں منائی جا رہی …یہ سب کچھ تین چار دن تک چلتا رہا مگر الحمد للہ! پاکستان میں اس کا کوئی اثر نہیں دیکھا گیا…میڈیا پر ایک آدھ دن خبر چلی اور بس…حکمرانوں نے چند رسمی بیانات دئیے اور بس…کچھ بیوقوفوں نے خوشی کے کالم لکھے اور بس الحمد للہ نہ یہاں کوئی جشن منایا گیا اور نہ ملالہ کی یاد میں کوئی آنسو گرا…نہ کسی نے ملالہ کو واپس آنے کی دعوت دی…اور نہ ائیر پورٹوں پر اس کے لئے سرخ قالین بچھے…نہ یہاں کی بچیوں نے ملالہ کو اپنا آئیڈیل قرار دیا… اور نہ لوگوں نے اس واقعہ کو کوئی خاص اہمیت دی …اور یوں…الحمد للہ بے چارے دشمنان اسلام کا…کروڑوں ڈالر کا منصوبہ خاک میں مل گیا… صرف سوشل میڈیا پر تھوڑی سی ٹائیں ٹائیں اور کائیں کائیں ہوئی…مگر جب سے پرویز مشرف کی سوشل میڈیا مقبولیت کا پردہ چاک ہوا ہے لوگ سوشل میڈیا کو سنجیدگی سے نہیں لیتے…

اللہ تعالیٰ نے سورۃ انفال میں سمجھایا ہے کہ… یہ کافر لوگ دین اسلام کے خلاف مال خرچ کرتے ہیں…مگر پھر اس پر پچھتاتے ہیں…وجہ یہ کہ اتنا مال خرچ کر کے بھی وہ دین اسلام کا کچھ نہیں بگاڑ سکتے…

وہ جو سمجھ رہے تھے کہ…ملالہ کو نوبیل انعام دے کر اسے پاکستان کی مسلمان بچیوں کے لئے ’’ہیرو‘‘ بنا دیں گے…وہ آ کر دیکھ لیں ملالہ اب بھی زیرو ہے…زیرو پلس زیرو…یہاں کی غیرت مند مسلمان بچیوں کی دعاؤں،ارمانوں … اور آنسوؤں میں…ملالہ نہیں عافیہ مہکتی ہے…

محترم بہن جی…عافیہ صدیقی حفطہا اللہ

لا الہ الا اللّٰہ،لا الہ الا اللّٰہ،لا الہ الا اللّٰہ محمد رسول اللّٰہ

اللہم صل علی سیدنا محمد والہ وصحبہ وبارک وسلم

لا الہ الا اللّٰہ محمد رسول اللّٰہ

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor