Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

اکیلے بالکل اکیلے (رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے)

Rangonoor 513 - Saadi kay Qalam Say - Akele Billkul Akele

اکیلے بالکل اکیلے

رنگ و نور ۔۔۔سعدی کے قلم سے (شمارہ 513)

اللہ تعالیٰ کے سامنے ہر شخص نے ’’اکیلے‘‘ پیش ہونا ہے، جس طرح کہ ہر شخص’’اکیلا‘‘ پیدا ہوا…

ارشاد فرمایا!

وَلَقَدْ جِئْتُمُونَا فُرَادیٰ( الآیۃ)

’’یقینا تم ہمارے پاس آؤ گے الگ الگ جیسا کہ ہم نے تمہیں پہلی مرتبہ پیدا کیا اورتم نے اپنی پیٹھ پیچھے چھوڑ دیا جو ہم نے تمہیں عطا ء کیا تھا۔‘‘( سورۃ انعام۔ آیت: ۹۴)

دنیا میں جو بھی آیا ،خالی ہاتھ آیا…نہ تن پر کپڑے تھے، نہ پائوں میں جوتا تھا… نہ جیب تھی نہ مال… نہ کوئی لیڈر تھا نہ کوئی کارکن… نہ کوئی صدرتھا نہ وزیر اعظم… نہ کوئی حضرت تھا نہ کوئی پیر…بالکل اسی طرح اللہ تعالیٰ کے سامنے میدان حشر میں پیشی ہوگی، نہ جسم پر کپڑے ہوں گے نہ پائوں میں جوتے…نہ مال ساتھ ہوگا نہ نوکر، خادم اور احباب… دنیا میں اکیلے آئے تھے اور قیامت کے دن اکیلے پیش ہوں گے… پس جو یہاں ’’تنہا‘‘ ہے ،وہ نہ گھبرائے… ناشکری اور مایوسی میں مبتلا نہ ہو، اور جو یہاں محبوب ہے اور ہروقت خادموں، نوکروں اور دوستوں میں گھرا ہواہے وہ نہ اِترائے، فخر میں مبتلا نہ ہو… آدمی کے ساتھ بس وہی کچھ جائے گا جو اس نے دنیا میں رہتے ہوئے… اللہ تعالیٰ کے لئے کیا اورآخرت کے لئے بھیجا…

حق اور باطل کی حکایت

کسی نے بات سمجھانے کے لئے حق اور باطل کی ایک تمثیل پیش کی ہے… حق سیدھا سادہ ہے، سچ بولنے والا دنیا میں جیسے بھی ہو گذارہ چلانے والا… سختیاں اور پریشانیاں جھیلنے والا… جبکہ باطل بہت چالاک ہے، مکار ہے، جھوٹ بولنے والا، دنیا کے ہر مفاد کو حاصل کرنے والا… کہتے ہیں کہ… حق اپنے گھر سے اچھا لباس پہن کر سواری پر بیٹھا اور روانہ ہوا… راستے میں میں اسے باطل مل گیا… باطل نے دھوکے کے ذریعہ حق سے اس کے کپڑے لیکر خود پہن لئے، حق ایک خستہ حال چادر میں رہ گیا… پھر باطل نے ایک چال چلی اور حق سے اس کی سواری چھین لی… اب وہ گھوڑے پر جا رہا تھا اور حق پیدل پیدل… دیکھنے والے سمجھ رہے تھے کہ باطل کامیاب رہا اور حق ناکام… مگر آگے ایک جنگل تھا اس کے وحشی درندوں نے یہ طئے کر رکھا تھا کہ… جو شخص جنگل سے سوار گذرے گااور اچھے لباس میں ہوگا اس کو وہ کھا جائیں گے…اور جو پیدل پرانے لباس میں ہوگا اس کو گذرنے دیں گے… حق اور باطل اس جنگل میں داخل ہوئے… باطل مارا گیا اور حق جنگل سے پار ہو کر ہمیشہ ہمیشہ والی راحت میں پہنچ گیا… اہل باطل دنیا میں چند دن عیش آرام ، ظاہری عزت پاکر… قبر کے جنگل میں مارے جاتے ہیں … جبکہ اہل حق دنیا میں چند دن کی تکلیف اور اذیت سہہ کر… قبر کے راحت والے دروازے سے …’’علیین‘‘ کی پرواز میں جا بیٹھتے ہیں…اس لئے ’’ترقی یافتہ ‘‘ وہ ہے جو دنیا میں رہتے ہوئے آگے کی تنہائی ختم کرنے کا سارا سامان آخرت میں بھیج دے… یہاں اس کو جو مال ملے اس سے وہ آخرت خریدے،یہاں جو عزت ملے اس سے آخرت بنائے… یہاں جو دوست احباب ملیں ان کو بھی… آخرت کا سرمایہ بنائے… وہ آخرت کہ دنیا کے سب دوست اس میں سخت دشمن ہوں گے… سوائے ان کے…جن کی دوستی صرف اللہ تعالیٰ کے لئے ہوگی… دین پر ہوگی اور دین کے مطابق ہوگی…

ترقی کی ایک مثال

 کل کی بات ہے کہ خبر آئی… مقبوضہ کشمیر میں ہمارے جانباز اور مخلص کمانڈر استاذ عدیل’’جام شہادت‘‘ نوش فرماگئے …ان کا اصلی نام’’غلام مصطفی‘‘ تھا… عباس پور آزاد کشمیر کے رہائشی تھے … سالہا سال تک وادی میں مشرکین کے خلاف جہاد کی کمان کرتے رہے… خبر آئی تو دعاء اور ایصال ثواب کے بعد ارادہ تھا کہ ان کے اہل خانہ کو مبارک و تعزیت کا پیغام بھیجا جائے… شہادت کی مبارک اور طبعی صدمے پر تعزیت…ابھی سوچ ہی رہا تھا کہ … شہید کے والد گرامی کا پیغام آگیا… اور میں ایمان کی ترقی دیکھ کر حیران رہ گیا…

 فرمایا… عدیل کی شہادت مبارک ہو… ایک اور بیٹا بھی اللہ تعالیٰ کے لئے وقف کردیا ہے… جہاں چاہیں بھیج دیں… سبحان اللہ ! عدیل کا ایک بھائی پہلے شہید ہوچکا ہے… اور اب ایک اور بھائی بھی وقف ہوچکا … اور والد محترم اپنی قسمت پر مسرور ہیں کہ… اللہ تعالیٰ نے ان کا سرمایہ اپنے پاس محفوظ فرمایا، قبول فرمایا… آج کتنے لوگ اپنے بیٹوں کی وجہ سے جہنم کی طرف دوڑ رہے ہیں… اور ایک یہ خاندان ہے کہ… باپ بیٹے سب اللہ تعالیٰ کی رضا اور جنت کی طرف دوڑ رہے ہیں… اسے کہتے ہیں ترقی… اسے کہتے ہیں بلندی…

القلم کے تمام قارئین سے… عدیل شہید … اور اُن کے پورے خاندان خصوصاً والدین کے لئے خصوصی دعاء کی درخواست ہے…

ہندوستان کی تاریخ بھی عجیب ہے… وہاں شرک ہی شرک تھا… پھر اللہ تعالیٰ کے مخلص اولیاء نے ہندوستان کا رخ فرمایا… اور انہوں نے مسلمان فاتحین کو جہاد کے لئے بلایا… افغانستان کی طرف سے مسلم فاتحین نے یلغاریں کیں…ان مجاہدین میں بڑے بڑے نامور اولیاء بھی شامل تھے… لکھا ہے کہ… محمود غزنویؒ کے لشکر کو جب سومنات میں کچھ مشکل کا سامنا ہوا تو… ایک بزرگ ولی ،جنکی عمر ایک سو بیس سال کے لگ بھگ تھی… تلوار لے کر میدان میں اترآئے…اُن کے مریدین نے اپنے شیخ کو اس حالت میں دیکھا تو وہ بھی جنگ میں دیوانہ وار کودپڑے… اور یوں غزنوی کا لشکر فتح یاب ہو گیا… سلسلہ چشتیہ کے نامور بانی… حضرت سلطان الھند السید معین الدین حسن چشتیؒ کے القاب میں… ایک لقب ’’قاتل الکفار‘‘ بھی لکھا ہے…اہل ایمان کو چاہیے کہ حضرت خواجہ چشتی قدس سرہ کے ملفوظات غور سے پڑھیں تاکہ اُن کے نام اور مزار کے ساتھ جو بدعات وخرافات جوڑی جاتی ہیں… ان کی حقیقت معلوم ہو… وہ اللہ تعالیٰ کے مقرب بندے اور عقیدۂ توحید سے سرشار…اسلام کے داعی تھے…کہا جاتا ہے کہ نوّے لاکھ اَفراد نے اُن کے ہاتھ پر اسلام قبول کیا…جہاد اور دعوت کی برکات بھی بہت عجیب ہیں…انسان دنیا سے چلا جاتا ہے مگر اس کے عمل کا کارخانہ چلتا رہتا ہے…خصوصاً گمنام مجاہدین کا بہت بڑا مقام اور بہت بڑا کارخانہ ہے… زمین پر ہونے والی ہر نیکی اور ہر خیر، ہر نماز اور ہر اذان، ہر عمرے اور ہر حج میں اُن کا اجر شامل ہوتا ہے اور نام نہ ہونے کی وجہ سے یہ اجر اور زیادہ بڑھ جاتا ہے…مسلمان فاتحین اور اولیاء و علماء کی محنت سے پورا ہندوستان اسلام کے رنگ میں آگیا…وہاں مسلمانوں کی حکومت قائم ہوگئی جو کئی صدیوں تک چلتی رہی…

مگر اب پھر پورے ہندوستان کو…شرک کی سیاہی میں ڈبونے کی کوشش جاری ہے…

آر ایس ایس اور وشوا ہندو پریشد اپنے اس عروج کی انتہا کو پہنچ چکے ہیں…یقینی بات ہے کہ عروج کے بعد زوال کی کھائی ہے…سو سال کی جان توڑ محنت کے بعد آج ہندوستان میں ایک قاتل ہندو متعصب کی حکومت ہے…رنگ برنگے کپڑے پہننے کا شوقین کیمرے کے سامنے رہنے کا حریص…اورہرکسی کے گلے میں بانہیں ڈالنے کا مشتاق ایک ہیجڑا…نریندر مودی…

آر ایس ایس سمجھ رہی ہے کہ…مودی اس کے خوابوں کی تعبیر ہے…بے شک وہ ٹھیک سمجھ رہی ہے مگر یہ تعبیر بہت بھیانک ہے…خوابوں کی دنیا عجیب ہے…جو خواب اچھے اور سہانے نظر آتے ہیں ان کی تعبیر اکثر خطرناک اور بھیانک ہوتی ہے مثلاً خواب میں خوبصورت عورتیں دیکھنا اس کی تعبیر اچھی نہیں…جبکہ وہ خواب جو بڑے خطرناک نظر آتے ہیں… ان کی اکثر تعبیر اچھی ہوتی ہے… مثلاً بیٹے یا بھائی کا مرنا وغیرہ… مودی آر ایس ایس کے خوابوں کی تعبیر ضرور ہے مگر یہ تعبیر بہت بھیانک ہوگی…کیونکہ جہاد کا دور زندہ ہوچکا ہے کشمیر کے مسلمان اس قدر غیرتمند ہیں کہ… وہاں اب گلی گلی میں گائے ذبح ہورہی ہے…کیونکہ حکومت نے گائے ذبح کرنے پر سخت پابندی لگادی ہے۔ ہندوستان کے جنوب اورشمال میں آزادی کی تحریکیں پل رہی ہیں اور ہندوستان کے مسلمان عزم اور جذبے سے سرشار ہیں…مودی اگر جنگ پر اُتراتو وہ ابتدائی کامیابی کے بعد…بہت بڑی شکست کھائے گا…اور ہندوستان میں ان شاء اللہ حضرت اجمیریؒ، حضرت ہمدانیؒ، حضرت غزنویؒ اور حضرت غوریؒ کا زمانہ…زندہ ہوجائے گا…

ترقی کی ایک اور مثال

یہاں ایک اور بات یاد آگئی…آپ میں سے کئی حضرات کو ۲۰۰۱؁ کے وہ خونی دن یاد ہوں گے… جب افغانستان میں امارتِ اسلامیہ کے آخری دن تھے…صلیبی خونخواری کا سب سے بھیانک واقعہ قندوز میں پیش آیا…مجاہدین کے قافلوں پر ڈیزی کٹر بم برسائے گئے…ہزاروں مجاہدین نے وہاں جامِ شہادت نوش فرمایا…ان میں اسّی سے زائد ہمارے ساتھی بھی تھے…پھر شبرغان کی خیانت اور ظلم کا واقعہ ہوا…اور امارت اسلامیہ کا سورج وقتی طور پر پہاڑوں کے پیچھے چھپ گیا…

اُن واقعات کو سامنے رکھیں اور آج کل کی یہ خبر پڑھیں کہ…طالبان نے قندوز پر قبضہ کرلیا ہے تو دل اور زبان سے بے ساختہ تکبیر بلند ہوتی ہے…

اللہ اکبر، اللہ اکبر، اللہ اکبرکبیرا…

سبحان اللہ! وہ جن کو آتشیں بموں سے جلاکر ریزہ ریزہ کردیا گیا تھا وہ آج پھر فاتح بن کر ابھرے ہیں…بے شک شہداء نہیں مرتے…بے شک شہدا نہیں مرتے…

اور وہ جو کل تک فاتح اور قابض تھے…آج ذلیل ورسوا اور ایسے بدحواس ہیں کہ…اپنے ہسپتالوں پر بمباری کررہے ہیں…اے مسلمانو! جہاد کی صداقت کے لیے اور کیا دلیل چاہیے…؟ آج ہمارے ہاتھ میں جو کچھ ہے اسے دین پر اور جہاد پر لگادیں یہ سب کچھ محفوظ ہوجائے گا…اور کل ہمارے کام آئے گا…اس لیے کے کل اللہ تعالیٰ کے حضور اکیلے پیش ہونا ہے…بالکل اکیلے…

لا الہ الا اللّٰہ،لا الہ الا اللّٰہ،لا الہ الا اللّٰہ محمد رسول اللّٰہ

اللھم صل علی سیدنا محمد وآلہ وصحبہ وبارک وسلم تسلیما کثیرا  کثیرا

لا الہ الا اللّٰہ محمد رسول اللّٰہ

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor