Bismillah

655

۲۱تا۲۷ذوالقعدہ ۱۴۳۹ھ  بمطابق    ۱۰تا۶ااگست۲۰۱۸ء

خواتین اسلام سے رسول اکرمﷺ کی باتیں (شمارہ 648)

خواتین اسلام سے رسول اکرمﷺ کی باتیں

(شمارہ 648)

اگر کچھ لوگ مل کر کھجوریں کھا رہے ہو تو ان کے بارے میں فخر عالم ﷺ نے ارشاد فرمایا کہ کوئی شخص ایک لقمہ میں دو کھجورین نہ کھالے، جب تک اپنے ساتھیوں سے اجازت نہ لے لے( بخاری و مسلم)

کھجوروں کی طرح اور کوئی چیز مل کر کھا رہے ہوں تو اس کا بھی یہی حکم ہے۔

حضورﷺ نے فرمایا کہ: جو شخص پیاز لہسن کھائے ( بدبو ختم ہو جانے تک) مسجد سے علیحدہ رہے یا، فرمایا کہ اپنے گھر میں بیٹھا رہے(بخاری ومسلم)

کھانا شروع کرتے وقت بسم اللہ پڑھیں، اگر شروع میں بھول جائیں تو یادآنے پر  بِسْمِ اللّٰہِ اَوَّلَہُ وَ آخِرَہُ  پڑھ لیں( ترمذی)

حضور اکرمﷺ نے ارشاد فرمایا کہ: جس کسی شخص نے اس حال میں رات گذاری کہ اس کے ہاتھ میں کوئی چیز( چکنائی وغیرہ) لگی ہو جس کو دھویانہ ہو اور پھر اس کی وجہ سے کوئی تکلیف پہنچے( مثلا زہریلا جانور کاٹ لے) تو یہ شخص اپنے نفس کے علاوہ ہر گز کسی کو ملامت نہ کرے( ترمذی)

کیونکہ اس شخص کو اپنی ہی سستی اور غفلت کی وجہ سے تکلیف پہنچی۔

ایک مرتبہ حضور اکرمﷺ پرانی کھجوریں کھا رہے تھے اور اس میں سے کیڑا ڈھونڈ کر نکالتے جاتے تھے( ابو دائود)

معلوم ہوا کہ کیڑوں کے ساتھ کھجوریا کوئی پھل یا دانے وغیرہ کھانا جائز نہیں۔

 حضور اقدسﷺ نے ارشاد فرمایا کہ جب مکھی تم میں سے کسی کے برتن میں گر جائے( تو جو کچھ برتن میں ہے مثلاً شوربہ، دودھ، چائے وغیرہ) اس میں مکھی کو پوری طرح ڈبودے پھر اس کو پھینک دے کیونکہ اس کے ایک بازو میں شفا ہے اوردوسرے بازو میں مرض ہے (بخاری)

ایک روایت ہے میں کہ اس کے ایک بازو میں زہرہے اور دوسرے میں شفا ہے اور وہ زہر والے بازو کو پہلے ڈالتی ہے اور شفاوالے کو ہٹا کر رکھتی ہے( شرح السنہ)

دوسری روایت میں ہے کہ وہ اپنے مرض والے بازو کے ذریعہ بچائو کرتی ہے( یعنی شفاوالے بازو کو محفوظ رکھنا چاہتی ہے) لہذا اس کو پوری طرح ڈبو دو(تاکہ مرض کا علاج بھی ہوجائے) (ابودائود)

 فائدہ: حضور اقدسﷺ نے یہ مرض کا علاج بتایا ہے اور اس کھانے کو کھالینے کا حکم نہیں دیا ہے۔ اگر طبیعت نہ چاہے نہ کھائیں۔

آنحضرت ﷺ نے زیادہ کھانے کو ناپسند فرمایا، اور فرمایا کہ زیادہ کھانا شوم ہے یعنی اس شخص کے پیچھے ایسی علت لگی ہوئی ہے جس سے اسے ہر جگہ تکلیف ہوگی اور لوگ بُری نظر سے دیکھیں گے( بیہقی)

حضورﷺ تین انگلیوں سے کھاتے تھے اور پونچھنے سے پہلے ہاتھ چاٹ لیا کرتے تھے۔(مسلم)

 جب کوئی کھانا بہت گرم ہو تو اسے ڈھانک کررکھ دیں۔ یہاں تک کہ اس کی بھاپ کی تیزی ختم ہو جائے۔ حضور اقدسﷺ نے فرمایا کہ ایسا کرنا برکت کے لئے بہت بڑی چیز ہے۔(دارمی)

حضرت انس رضی اللہ عنہ کابیان ہے کہ میں نے حضور اکرمﷺ کو دیکھا کہ اکڑوں بیٹھے ہوئے کھجوریں تناول فرمارہے ہیں(بخاری)

دونوں پنڈلیاں کھڑی کر کے قدموں پر بیٹھنے کو اکڑوں بیٹھنا کہتے ہیں۔

 ایک مجلس میں کھانے والے زیادہ ہوگئے تو آنحضرتﷺ دوزانو ہو کر بیٹھ گئے( کیونکہ اس میں تواضع بھی ہے اور اہل مجلس کی رعایت بھی اس سے ان کے لئے جگہ نکل آتی ہے)۔( ابو دائود)

دستر خوان اٹھانے سے پہلے نہ اٹھو۔

اگر کسی دوسرے شخص کے ساتھ کھانا کھارہے ہو تو جب تک وہ کھانا کھا تا رہے اپناہاتھ نہ روکو، اگرچہ پیٹ بھر چکا ہوتا کہ اسے شرمندگی نہ ہو اگر کھانا چھوڑنا ہی ہو تو عذر کردو( ابن ماجہ، بیہقی)

مشکیزہ میں منہ لگا کر مت پیو( بخاری) لوٹے، گھڑے یا صراحی یابوتل وغیرہ کو منہ لگا کر پینا بھی اسی ممانعت میں داخل ہے۔

 برتن میں نہ سانس لو، نہ پھونک مارو۔ترمذی)

کھڑے ہو کر مت پیو،( آب زمزم اوروضو کا بچا ہوا پانی اس سے مستثنیٰ ہے)(مسلم)

برتن میں پھٹی، ٹوٹی جگہ منہ لگا کر نہ پیو۔( ابودائود)

 ہمارے پیارے رسول اللہﷺ ٹیک لگا کر نہیں کھاتے تھے(بخاری) کیونکہ یہ تکبر کی بات ہے۔

 آنحضرتﷺ نے کبھی کسی کھانے کوعیب نہیں لگایا، دل کوبھایا تو کھالیا ،پسند نہ آیا تو چھوڑ دیا(بخاری)

 حضرت حذیفہ رضی اللہ عنہ نے بیان فرمایا کہ آنحضرتﷺ نے ہمیں اس بات سے منع فرمایا کہ ہم سونے چاندی کے برتن میں کھائیں پئیں۔(بخاری و مسلم)

 ٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online