Bismillah

664

۸تا۱۴صفر المظفر۱۴۴۰ھ  بمطابق    ۱۹تا۲۵اکتوبر۲۰۱۸ء

خواتین اسلام سے رسول اکرمﷺ کی باتیں (شمارہ 663)

خواتین اسلام سے رسول اکرمﷺ کی باتیں

(شمارہ 663)

چغلی کھانے والوں کا عذاب اور وبال

حضرت اسماء بنت یزید رضی اللہ تعالیٰ عنہا سے روایت ہے کہ حضور اقدسﷺ نے ارشاد فرمایا: بلاشبہ اللہ کے اچھے بندے وہ ہیں کہ جب انہیں دیکھا جائے تو اللہ یاد آجائے اور اللہ کے برے بندے و ہ ہیں جو چغلی لے کر چلتے پھرتے ہیں ( اور چغلی کی وجہ سے) محبت کرنے والوں میں جدائی کرنے والے ہوتے ہیں( اور) جو لوگ برائی سے بیزار ہیں ان کے لیے فساد کی تلاش میں رہتے ہیں۔( مشکوٰۃ المصابیح: ص ۴۱۵ از احمد بیہقی)

اس حدیث مبارک میں چغلی کی مذمت فرمائی اور جو لوگ چغلی کرتے پھرتے ہیں ان کو برے انسانوں میں شمار فرمایا اور فرمایا کہ یہ لوگ اہل محبت اور اہل تعلق میں چغلی کھا کھا کر جدائی پیدا کرنے کا سامان پیدا کر دیتے ہیں اور جو لوگ شر اور فساد سے بری ہیں ان کے فساد اور بربادی کا ذریعہ بنتے ہیں۔

درحقیقت چغلی کھانا بدترین چیز ہے جو چغلی کھاتا ہے اس سے کچھ نفع نہیں ہوتا بلکہ اس کے گناہ پڑھتے چلے جاتے ہیں اور اس کی بری حرکت اور شرارت سے اچھے خاصے اہل محبت اور اہل وفا میں جنگ ہوجاتی ہے اور دلوں میں نفرت کے شعلے بھڑک کر برائیاں شروع ہوجاتی ہیں اور افراد کی لڑائیاں خاندانوں کو لے بیٹھتی ہیں، چغل خور ذرا سا شگوفہ چھوڑتا ہے اور یہاں کی بات وہاں پہنچا کر جنگ وجدال کی آگ کو سلگاتا ہے لوگوں میں لڑائی ہوتے دیکھتا ہے تو خوش ہوتا ہے ،گویا اس نے بہت بڑا کام کیا لیکن وہ یہ نہیں جانتا کہ دوسروں کے لیے جو لڑائی کی آگ سلگائی اس سے اپنی قبر میں بھی ا نگارے بھر دئیے۔

ایک مرتبہ حضور اقدسﷺ کا دو قبروں پر گزر ہوا، آپﷺ نے فرمایا : بلاشبہ ان دونوں کو عذاب ہو رہا ہے اور کسی بڑی چیز کے بارے میں عذاب نہیں ہے( کہ جس کے چھوڑنے میں کوئی مشکل اٹھانی پڑے اگر چہ گناہ میں وہ بڑی چیز ہے) اس کے بعد فرمایا کہ ان میں سے ایک پیشاب کرتے وقت پردہ نہیں کرتا تھا اور ایک روایت میں ہے کہ پیشاب سے نہیں بچتا تھا اور دوسرا شخص چغلی لے کر چلتا تھا( یعنی فساد کے لیے ادھر کی بات ادھر اور ادھر کی بات ادھر لے جاتا تھا)( مشکوٰۃ المصابیح ۴۲)

اس حدیث کے پیش نظر علماء نے بتایا ہے کہ پیشاب سے نہ بچنا( یعنی استنجانہ کرنا اور بدن پر پیشاب کے چھینٹے آنے سے نہ بچنا اور پیشاب کے وقت پردہ نہ کرنا اور چغلی کھانا عذب قبر لانے کا بہت بڑا سبب ہے۔

 چغل خور جنت میں داخل نہ ہوگا:

ایک حدیث میں ارشاد ہے کہ لایدخل الجنۃ قتات یعنی جو شخص سخن چین ہو جو دوسروں کی باتیں کان لگا کر سنتا ہے اور ان کو خبر بھی نہیں پھر چغلی کھاتا ہے ایسا شخص جنت میں داخل نہ ہوگا۔

 اور ایک حدیث میں قتات کی جگہ نمام آیا ہے نمام چغل خور کو کہتے ہیں،ترجمہ یہ ہوا کہ چغل خور جنت میں داخل نہ ہوگا۔

 علماء نے قتات اور نمام میں یہ فرق بتایا ہے کہ نمام وہ ہے جو بات کرنے والوں کے ساتھ موجود ہو پھر وہاں سے اٹھ کر چغلی کھائے اور قتات وہ ہے جو چپکے سے بات سن لے، جس کا بات کرنے والوں کو علم بھی نہ ہو، اس کے بعد چغلی کھائے۔

مجلس کی باتیں امانت ہوتی ہیں:

جب کسی مجلس میں موجود ہو خواہ ایک دو آدمی ہی ہوں وہاں اگر کسی کی غیبت ہو رہی ہو تو منع کردے اور نہ روک سکے تو وہاں سے اٹھ جائے اور مجلس میں جو باتیں ہوں ان کو مجلس سے باہر کسی جگہ نقل نہ کرے۔ حضور اقدسﷺ کا ارشاد ہے کہ مجلسیں امانت کے ساتھ ہیں( مجلس میں جو بات کان میں پڑے اس کو ادھر ادھر نقل کرنا امانت داری کے خلاف ہے) ہاں اگر کسی مجلس میں کسی جان کو قتل کرنے کا مشورہ ہوا یا زنا کاری کا مشورہ ہوا ہو یا کسی کا ناحق مال لینے کا مشورہ ہوا ہو یہ بات نقل کردے( ابو دائود)

ایک حدیث میں ارشاد ہے :جب کوئی شخص کوئی بات کہے پھر ادھر ادھر دیکھے تو اس کی یہ بات امانت ہے ۔( ترمذی و ابو دائود)

یعنی کسی شخص نے کسی سے کوئی خاص بات کہہ دی پھر وہ ادھر ادھر دیکھنے لگا کہ کسی نے سنا تو نہیں تو اس کا یہ دیکھنا اس بات کی دلیل ہے کہ وہ کسی کو سنانا نہیں چاہتا ،لہٰذا جس سے کہی ہے اس پر لازم ہے کہ وہ بات کسی سے نہ کہے، بہت سے لوگ مجلس کی بات یہاں سے وہاں پہنچادیتے ہیں جو غلط فہمی اور لڑائی کا ذریعہ بن جاتی ہے اور یہ شخص چغل خور بن جاتا ہے اور خود اپنا برا کرتا ہے، نہ بات نقل کرتا نہ خرابی کا ذریعہ بنتا ۔

بعض مردوں اور عورتوں کی یہ عادت ہوتی ہے کہ جن دو شخصوں یا دو خاندانوں یا دو جماعتوں کے درمیان ان بن ہو ان کے ساتھ ملنے جلنے کا ایسا طور طریق اختیار کرتے ہیں کہ ہر فریق کے خاص اور ہمدرد بنتے ہیں اور یہ ظاہر کرتے ہیں کہ تم صحیح راہ پر ہو اور ہم تمہاری طرف ہیں، ہر فریق ان کو ہمدرد سمجھ کر اپنی سب باتیں اگل دیتا ہے پھر ہر طرف کی باتیں ادھر کی اُدھر اور اُدھر کی ادھر پہنچاتے ہیں جس سے دونوں فریق کے درمیان اور زیادہ لڑائی کے شعلے بھڑک اٹھتے ہیں۔

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online