Bismillah

613

۲۲تا۲۸محرم الحرام۱۴۳۸ھ   بمطابق ۱۳تا۱۹اکتوبر۲۰۱۷ء

حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہ کا مرتدین اور مانعینِ زکوٰۃ سے جنگ کا اہتمام کرنا (تابندہ ستارے۔613)

حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہ کا مرتدین اور مانعینِ زکوٰۃ سے جنگ کا اہتمام کرنا

تابندہ ستارے ۔حضرت مولانا محمدیوسفؒ کاندھلوی (شمارہ 613)

پچاسویں دن کی صبح کی نماز پڑھ کر میں اپنے گھر کی چھت پر بیٹھا ہو اتھا اور میرا وہ حال تھا جس کا اللہ نے ذکر فرمایا ہے زندگی دوبھر ہورہی تھی اور کشادگی کے باوجود زمین مجھ پر تنگ ہوچکی تھی کہ اتنے میں میں نے ایک پکارنے والے کی آواز کو سنا جو سلع پہاڑی پر چڑھ کر اونچی آواز سے کہہ رہا تھا:اے کعب !تمہیں خوشخبری ہو! میں ایک دم سجدہ میں گرگیا اور سمجھ گیا کہ کشادگی آگئی۔ حضورﷺ نے فجر کی نماز پڑھ کر لوگوں میں ہماری توبہ کے قبول ہونے کا اعلان فرمایا۔ لوگ ہمیں خوشخبری دینے کے لئے چل پڑے اور بہت سے لوگوں نے میرے دونوں ساتھیوں کو جا کر خوشخبری دی۔ ایک آدمی گھوڑا دوڑاتا ہوا میرے پاس آیا( یہ حضرت زبیر بن عوّام رضی اللہ عنہ تھے) قبیلہ اسلم کے ایک آدمی نے تیزی سے دوڑ کر پہاڑی سے آواز دی اور آواز گھوڑے سے پہلے پہنچ گئی( یہ حضرت حمزہ بن عمرواسلمی رضی اللہ عنہ تھے) اور جس آدمی کی میں نے آوازسنی تھی جب وہ مجھے خوشخبری دینے آیا تو میں نے اسے اپنے دونوں کپڑے اُتارکر خوشخبری دینے کی خوشی میں دے دیئے) اور اللہ کی قسم! اس وقت میرے پاس ان کے علاوہ اور کوئی کپڑے نہیں تھے۔ چنانچہ میں نے کسی سے دوکپڑے مانگے اور انہیں پہن کر حضورﷺ کی خدمت میں حاضری کے لیے چل پڑا۔ راستہ میں لوگ مجھے فوج در فوج ملتے اور توبہ قبول ہونے کی مبارک باد دیتے اور کہتے کہ تمہیں مبارک ہو! اللہ نے تمہاری توبہ قبول فرمالی۔ جب میں مسجد میں پہنچا تو حضورﷺ وہاں بیٹھے ہوئے تھے اور آپ ﷺ کے ارد گرد لوگ بیٹھے ہوئے تھے۔ مجھے دیکھ کر حضرت طلحہ بن عبید اللہ رضی اللہ عنہ میری طرف لپکے۔ انہوں نے مجھ سے مصافحہ کیا اور مجھے مبارک باددی۔ اللہ کی قسم! مہاجرین میں سے ان کے علاوہ اور کوئی بھی میر ی طرف کھڑے ہو کر نہیں آیا اور حضرت طلحہ رضی اللہ عنہ کا یہ انداز میں کبھی بھول نہیں سکتا۔

 جب حضورﷺ کو میں نے سلام کیا اور خوشی سے آپﷺ کاچہرہ چمک رہا تھا تو آپ ﷺ نے فرمایا : جب سے تم پیدا ہوئے ہو اس وقت سے لے کر اب تک جو سب سے بہترین دن تمہارے لیے آیا ہے میں تمہیں اس کی خوشخبری دیتا ہوں۔ میں نے عرض کیا:یارسول اللہ! یہ آپﷺ کی طرف سے ہے یا اللہ کی طرف سے؟ آپﷺ نے فرمایا :نہیں بلکہ اللہ کی طرف سے ہے۔

 جب حضورﷺ خوش ہوتے تو آپﷺ کا چہرہ چمکنے لگ جاتا تھا اور ایسا لگتا تھا کہ گویا چاند کا ٹکڑا ہے اور آپﷺ کے چہرے سے ہی ہمیں آپﷺ کی خوشی کا پتہ چل جاتا تھا۔ جب میں آپ ﷺ کے سامنے بیٹھ گیا تو میں نے عرض کیا: یارسول اللہ! میری توبہ کی تکمیل یہ ہے کہ میری ساری جائیداد اللہ اور اس کے رسول کے نام پر صدقہ ہے۔ اس میں سے اپنے پاس کچھ نہیں رکھوں گا۔ آپﷺ نے فرمایا:نہیں اپنے پاس بھی کچھ رکھ لو، یہ تمہارے لئے زیادہ بہتر ہے۔ میں نے کہا :میرا جو حصہ خیبر میں ہے میں وہ اپنے پاس رکھ لیتا ہوں۔پھر میں نے کہا:یا رسول اللہ! اللہ تعالیٰ نے مجھے سچ بولنے کی وجہ سے نجات دی ہے ،لہٰذا میری توبہ کی تکمیل یہ ہے کہ میں عہد کرتا ہوں کہ جب تک زندہ رہوں گا ہمیشہ سچ بولوں گا۔

 جب سے میں نے حضورﷺ کے سامنے سچ بولا ہے اس وقت سے لے کر اب تک میرے علم کے مطابق کوئی مسلمان ایسا نہیں ہے جس پر اللہ تعالیٰ نے ایسا بہترین انعام کیا ہو جیسا بہتر ین مجھ پر کیا ہے اور جب سے میں نے حضورﷺ سے سچ بولنے کا عہد کیا ہے اس دن سے لے کر آج تک میں نے کبھی جھوٹ بولنے کا ارادہ بھی نہیں کیا اور مجھے امیدہے کہ آیندہ بھی اللہ تعالیٰ مجھے جھوٹ سے بچائیں گے اور اللہ تعالیٰ نے اپنے رسول ﷺ پر اس موقع پر یہ آیتیں نازل فرمائیں:

(لقد تاب اللّٰہ علی النبی والمھٰجرین و الانصار) سے لے کر (وکونوا مع الصدقین) تک

اللہ کی قسم! ہدایتِ اسلام کی نعمت کے بعد میرے نزدیک اللہ کی سب سے بڑی نعمت مجھے یہ نصیب ہوئی کہ میں نے حضورﷺ کے سامنے سچ بولا اور جھوٹ نہیں بولا۔ اگر میں جھوٹ بول دیتا تو میں بھی دوسرے جھوٹ بولنے والوں کی طرح ہلاک ہوجاتا، کیونکہ اللہ تعالیٰ نے وحی اترتے وقت جھوٹ بولنے والوں کے متعلق بڑے سخت کلمات ارشاد فرمائے۔اللہ تعالیٰ نے فرمایا:

(سیحلفون باللّٰہ لکم اذا انقلبتم الیھم لتعرضوا عنھم) سے لے کر( فان  اللّٰہ لایرضی عن القوم الفسقین) تک

(اب قسمیں کھائیں گے اللہ کی تمہارے سامنے جب تم پھر کر جائو گے ان کی طرف تاکہ تم ان سے درگزر کرو۔ سو تم درگزر کرو ان سے ، بے شک وہ لوگ پلید ہیں اور ان کا ٹھکانا دوزخ ہے ، بدلہ ہے ان کے کاموں کا۔ وہ لوگ قسمیں کھائیں گے تمہارے سامنے تاکہ تم ان سے راضی ہو جائو۔ سو اگر تم راضی ہوگئے ان سے تو اللہ راضی نہیں ہوتا نا فرمان لوگوں سے)

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online