Bismillah

631

۲۹جمادی الاولیٰ تا۵جمادی الثانی۱۴۳۹ھ  بمطابق ۱۶تا۲۲فروری۲۰۱۸ء

حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہ کا مرتدین اور مانعینِ زکوٰۃ سے جنگ کا اہتمام کرنا (تابندہ ستارے۔631)

حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہ کا مرتدین اور مانعینِ زکوٰۃ سے جنگ کا اہتمام کرنا

تابندہ ستارے ۔حضرت مولانا محمدیوسفؒ کاندھلوی (شمارہ 631)

اللہ کے راستہ میں نیزے یا کسی اور چیز سے زخمی ہونا

حضرت جندب بن سفیان رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ ایک دفعہ حضورﷺ پیدل جارہے تھے کہ اچانک ایک پتھر سے آپﷺ کو ٹھوکر لگی جس سے آپﷺ کی انگلی مبارک خون آلود ہوگئی ۔ آپﷺ نے یہ شعر پڑھا:

ھل انت الااصبع دمیت

وفی سبیل اللّٰہ مالقیت

تو ایک انگلی ہی تو ہے جو خون آلود ہوگئی ہے اور تجھے تکلیف آئی ہے یہ اللہ کے راستہ میں ہی آئی ہے۔

 اور حضورﷺ کے سختیوں اور تکلیفوں کے برداشت کرنے کے باب میں حضرت انس رضی اللہ عنہ کی حدیث گزرچکی ہے کہ جنگ اُحد کے دن حضورﷺ کا رباعی دندان مبارک شہید ہوگیا تھا اور آپﷺ کا سرمبارک زخمی ہوگیا تھا۔ آگے اور حدیث بھی ذکر کی ہے۔

 اور حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کی حدیث گزر چکی ہے کہ وہ فرماتی ہیں کہ جب حضرت ابو بکر رضی اللہ عنہ جنگ اُحد کا ذکر فرماتے تو یہ ارشاد فرماتے کہ یہ دن سارے کا سارا حضرت طلحہ رضی اللہ عنہ کے حساب میں ہے پھر تفصیل سے بیان کرتے۔ آگے اور حدیث بھی ہے جس میں یہ مضمون بھی ہے کہ ہم دونوں حضورﷺ کے پاس پہنچے تو ہم نے دیکھا کہ آپﷺ کا رباعی دندان مبارک شہید ہوچکا ہے اور آپﷺ کا چہرئہ مبارک زخمی ہے اور خود کی دوکڑیاں آپﷺ کے رخسار مبارک میں گھس گئی ہیں۔

آپﷺ نے فرمایا: اپنے ساتھی طلحہ کی خبر لو جو زیادہ خون نکلنے کی وجہ سے کمزور ہوچکے تھے، آگے اور حدیث بھی ہے جس میں یہ ہے کہ ہم حضورﷺ کی خدمت سے فارغ ہو کر حضرت طلحہ رضی اللہ عنہ کے پاس آئے وہ ایک گڑھے میں پڑے ہوئے تھے اور ان کے جسم پر نیزے اور تیرو تلوار کے ستر سے زیادہ زخم تھے ان کی انگلی بھی کٹ گئی تھی، ہم نے ان کی دیکھ بھال کی۔

حضرت ابراہیم بن سعد کہتے ہیں کہ مجھے یہ بات پہنچی ہے کہ حضرت عبدالرحمن بن عوف رضی اللہ عنہ کو جنگ اُحد کے دن اکیس زخم آئے تھے اور ان کاایک پائوں بھی زخمی ہوا تھا جس کی وجہ سے وہ لنگڑا کر چلا کرتے تھے۔

حضرت انس بن مالک رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ میرے چچا حضرت انس بن نضر رضی اللہ عنہ بدر کی لڑائی میں شریک نہیں ہو سکے تھے، انہوں نے عرض کیا:یارسول اللہ! آپ نے مشرکین سے جو سب سے پہلے لڑائی لڑی میںاس میں شریک نہیں ہو سکا، اب آیندہ اگر اللہ تعالیٰ نے مجھے مشرکین سے لڑائی میں شریک ہونے کا موقع دیا تو اللہ تعالیٰ دیکھ لیں گے کہ میں کیا کرتا ہوں۔

چنانچہ جنگِ اُحد کے دن جب مسلمانوں کو شکست ہونے لگی تو انہوں نے کہا:اے اللہ!صحابہ نے جو کچھ کیا میں تجھ سے اس کی معذرت چاہتا ہوں اور مشرکین نے جو کچھ کیا میں اس سے برأت کا اظہار کرتا ہوں۔ یہ کہہ کر وہ آگے بڑھے تو سامنے سے حضرت سعد بن معاذ رضی اللہ عنہ ان کو آتے ہوئے ملے تو انہوں نے کہا: اے سعد بن معاذ!( میرے باپ) نضر کے رب کی قسم ! اُحد پہاڑ کے پیچھے سے مجھے جنت کی خوشبو آرہی ہے۔ حضرت سعد نے ( بعد میں یہ قصہ بیان کرتے ہوئے) حضورﷺسے کہا: یا رسول اللہ! حضرت انس نے جو کر دکھایا ( اور جس بہادری سے وہ لڑے) وہ میں نہ کر سکا۔ حضرت انس رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ ہم نے ان کے جسم پر تلوار اور نیزے و تیر کے اسّی سے زیادہ زخم پائے، ہم نے دیکھا کہ وہ شہید ہوچکے ہیں اور مشرکوں نے ان کے کان، ناک وغیرہ بھی کاٹ رکھے ہیں جس کی وجہ سے کوئی ان کو نہ پہچان سکا۔ صرف ان کی بہن نے ان کو ان کے ہاتھ کے پوروں سے پہچانا، حضرت انس رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ ہمارا خیال ہے کہ یہ آیت حضرت انس بن نضراور ان جیسے لوگوں کے بارے میں نازل ہوئی ہے:

’’من المومنین رجال صدقوا ماعاھدوااللّٰہ علیہ‘‘

ایمان والوں میں کتنے مرد ہیں کہ سچ کردکھلایا جس بات کا عہد کیا تھا اللہ سے۔

حضرت انس رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ میرے چچا( حضرت انس بن نضر) جن کے نام پر میرا نام انس رکھا گیا۔ وہ غزوئہ بدر میں حضورﷺ کے ساتھ شریک نہیں ہوئے تھے اوریہ شریک نہ ہونا ان پر بڑا گراں تھا، ا س لیے انہوں نے کہا کہ حضورﷺ کا یہ پہلا غزوئہ ہوا ہے اور میں اس میں شریک نہیں ہو سکا۔ اگر آیندہ اللہ تعالیٰ نے مجھے حضورﷺ کے ساتھ کسی غزوہ میںشریک ہونے کا موقع دیا تو اللہ تعالیٰ دیکھ لیں گے کہ میں کیا کرتا ہوں۔ اس کے علاوہ مزید کچھ اور کہنے کی ان کو ہمت نہ ہوئی۔ چنانچہ وہ حضورﷺ کے ساتھ غزوئہ احد میں شریک ہوئے۔ (جنگ کے دوران) ان کو حضرت سعد بن معاذ رضی اللہ عنہ سامنے سے آتے ہوئے ملے تو حضرت انس رضی اللہ عنہ نے ان سے کہا: اے ابو عمرو! تم کہاں ہو، واہ واہ !جنت کی خوش بودار ہوا کیا ہی عمدہ ہے جو مجھے احد کے پیچھے سے آرہی ہے، پھرانہوں نے کافروں سے جنگ شروع کردی یہاں تک کہ شہید ہوگئے اور ان کے جسم میں تلوار اور نیزے و تیر کے اسّی سے زیادہ زخم پائے گئے۔

(جاری ہے)

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online