Bismillah

656

۲۸ذوالقعدہ تا ۴ ذوالحجہ ۱۴۳۹ھ  بمطابق    ۱۷تا۳۰اگست۲۰۱۸ء

افادات اکابر۔ 643

 افادات اکابر

(شمارہ 643)

اصلی علم کیا ہے؟

اگر بنظر غائر دیکھا جائے تو بآسانی واضح ہوگا کہ اصلی علوم وہی ہیں جو صرف وحیِ الہٰی کے ذریعہ اور انبیاء کرام علیہم السلام کی تعلیمات کے واسطہ سے ظہور میں آتے ہیں ،یہ وہ علوم ہیں جن کے ادراک سے عقلی انسانی نہ صرف قاصر ہے بلکہ عقلِ انسانی کے دائر ے سے ہی یہ علوم خارج ہیں، علوم وفنون کی اصطلاح میں ان کو ماوراء الادراک اور ماوراء العقل کہاجاتاہے۔

 اس لئے انبیاء کرام علیہم الصلوٰۃ والسلام کا دائرہ تعلیم وتربیت انہی علوم الہٰیہ میں منحصر ہونا چاہئے جوعقل انسانی کی رسائی  سے بالاتر ہیں، قرآنِ کریم اور تعلیمات نبویہ میں ان علوم طبعیہ وعقیلہ اور ان کے ذریعہ وجود میں آنے والی ایجادات و اخترعات کی نہ تو تعلیم دی گئی ہے اور نہ ہی ان کی طرف توجہ کی گئی ہے نہ ہی اس کی ضرورت تھی۔

 ظاہر ہے کہ جب اللہ تعالیٰ نے عقل و ادراک جیسی خود کفیل نعمت اور قوتِ اختراع جیسی خود کار طاقت انسان کو عطا فرمادی جو ان تمام ضرورتوں کو پورا کرنے کے لئے کافی ووافی ہے تو پھر کسی مزید تفصیل کی ضرورت باقی نہیں رہتی، چنانچہ اسلامی تاریخ اس کی شہادت دیتی ہے کہ ہردور میںعقلِ انسانی یہ خدمت انجام دیتی رہی ہے اور آج اس دورِ ترقی میں بھی جو کچھ نتائج سامنے آ رہے ہیں اور آئندہ آتے رہیں گے وہ سب اسی کے کرشمے ہیں۔

(بصائر وعبر:ص ۲۸۸)

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

  • القلم کے گذشتہ شمارے و مضامین
  • کارٹون
TAKWIR Web Designing (www.takwir.com) Copyrights Alqalam Weekly Online