Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

نفیس پھُول ۔ 611

نفیس پھُول

امام جمال الدین ابن الجوزیؒ

(شمارہ 611)

سب تعریفیں اللہ تعالیٰ کے لئے ہیں جو اس کے مقام رضا کو پاسکیں اور رحمت کاملہ ہو ایسی ذات پر جو اس کے تمام منتخب بندوں کے اشرف و اعلیٰ ہیں اور اُن لوگوں پر جنہوں نے آپ کی رفاقت اختیار کی اور ساتھ دیا اور ایسا سلام ہو جس کی انتہاء نہیں۔

جبکہ خیالات درپیش آنے والی اشیاء میں غور و فکر کرتے ہیں اور اُن سے اعراض نہیں کرتے تو سب سے پہلے اُن کی حفاظت ضروری ہے تاکہ بھول نہ جائیں۔ آپﷺ کا ارشاد مبارک ہے: علم کو تحریر کے ذریعے قید کرلو۔ بسااوقات مجھے ایک چیز ذہن میں آتی ہے اور میں اپنی مصروفیت کی وجہ سے اسے لکھ نہیں پاتا تو وہ جاتی رہتی ہے اور افسوس باقی رہ جاتا ہے اور میں خود محسوس کرتا ہوں کہ جب بھی میں چشم خیال وا کرتا ہوںتو اس قدر عجائبات پردہ غیب سے سامنے آتے ہیں جن کا شمار نہیں اور عقل و فہم کی بلندیوں سے اس پر وہ بارش ہوتی ہے جس سے غفلت و کوتاہی جائز نہیں، تو میں نے علوم کے شکار کو اس کتاب میں قید کیا ہے اور نفع کے مالک تو اللہ ہی ہیں جو قریب بھی ہیں اور قبول کرنے والے بھی۔

مدو جزر کے مابین

وعظ سنتے وقت سامع کو کبھی فکر اور بیداری پیدا ہوتی ہے اور مجلس سے اُٹھ جانے کے بعد پھر وہی جمود اور غفلت لوٹ آتی ہے میں نے اس کا سبب تلاش کیا اور پا بھی لیا۔ میں نے دیکھا کہ لوگ اس معاملہ میں مختلف قسم کے ہیں ۔عام لوگوں کی حالت یہ ہے کہ اُن کا دھیان اور توجہ وعظ سنتے وقت اور اس کے بعد ایک طرح پر نہیں ہوتا جس کے دوسبب ہیں:

 ایک یہ کہ پندو نصیحت کی باتیں کوڑے کی مانند ہیں کہ برستار ہے تو درد محسوس ہوتا ہے بند ہو جائے تو درد کا احساس نہیں رہتا جو پہلے تھا۔

 دوسرا یہ کہ وعظ سنتے وقت انسان اپنی بیماری( کوتاہی) کے ازالہ کی فکر میں ہوتا ہے، اپنی ذات اور فکرو سوچ کے لحاظ سے اسباب دنیا سے کٹ کردلی توجہ کے ساتھ خاموش ہوتا ہے۔

(جاری ہے)

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor