Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

نفیس پھُول ۔ 614

نفیس پھُول

امام جمال الدین ابن الجوزیؒ

(شمارہ 614)

تو اپنی صحت پر غرور کرتا ہے اور اچانک آنے والی بیماری کو بھلائے ہوئے ہے، اپنی عافیت و سلامتی پر خوش ہورہا ہے اور آفت کے سر پر آجانے سے غافل ہے، دوسروں کی موت نے تجھے تیری موت دکھادی ہے اور دوسروں کی آرام گاہ( قبر) نے مرنے سے پہلے تیری قبر دکھادی ہے، لذتوں کے حصول نے اپنی ذات کے فنا ہونے کی یاد سے تجھے مصروف کر رکھا ہے کہ گویا مرنے والوں کی کوئی خبر تو نے سنی ہی نہیںہے اور پیچھے رہنے والوں میں زمانہ کاروائیاں کرتا ہے جو تونے دیکھی ہی نہیں، سو اگر تو نہیں جانتا تولے یہ ان کے مکانات ہیں جنہیں تیرے بعد ہوائوں کے چکروں نے کھنڈربنادیا ہے اور یہ ان کی قبریں ہیں۔

کتنے محلات والے تو نے دیکھے ہوںگے جو ابھی اپنی لحد میں نہ اُترے تھے مگر اتر گئے اور کتنے محلات کے مالک تو نے دیکھے ہیں جن کے دشمن ان عہدوں پر فائز ہوئے جہاں سے وہ معزول ہوئے تھے۔

 اے وہ شخص جو ہر لمحہ ان حالات کی طرف بڑھ رہا ہے اور اس کا عمل ایسے شخص کا سا ہے جو کچھ بھی سمجھ بوجھ نہیں رکھتا۔

 اور وہ آنکھ چین سے کیسے سو سکتی ہے جسے کچھ پتہ نہیں کہ اچھے اور برے ٹھکانے میں سے اس نے کہاں اُترنا ہے۔

 جو چراگاہ کے آس پاس گھومتا ہے قریب ہے کہ اس میں داخل ہوجائے، جو فتنہ کے قریب ہوتا ہے سلامتی اس سے دور ہو جاتی ہے، جو صبر کا دعویٰ کرتا ہے اپنے نفس کے حوالہ کردیا جاتا ہے، بہت سی نگاہیں اپنی مثال نہیں رکھتیں سب سے بڑھ کر محفوظ اور قابو میں رکھنے کی چیز زبان اور آنکھ ہیں۔ ہر گز ہرگز فتنوں کے ہجوم میں پڑ کر ترک خواہش کے عزم سے دھوکہ نہ کھانا کیونکہ خواہش خود مکرو فریب کا مجموعہ ہے۔ بہت سے بہادر میدان جنگ میں کام آئے اور ان پر وہ نادیدنی واقعات گزرے جو وہم و گمان میں بھی نہ تھے، حضرت حمزہ رضی اللہ عنہ کا اور وحشی رضی اللہ عنہ کا قصہ ہی دیکھ لیجئے۔

(جاری ہے)

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor