Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

نفیس پھُول ۔ 642

نفیس پھُول

امام جمال الدین ابن الجوزیؒ

(شمارہ 642)

خواہشات کے پیچھے لگنا دل کو مردہ کرتا ہے

میں نے دنیا اور آخرت کے معاملہ میں غور کیا تو دیکھا کہ دنیا کے حوادث حسّی،مادی، طبعی ہیں اور آخرت کے حوادث ایمان ویقین سے متعلق ہیں اور جس کسی کا علم و یقین قوی نہ ہو اس کے لئے جذ ب وکشش میں حسّی امور زیادہ قوی ثابت ہوتے ہیں، اپنے اسباب کی کثرت کی وجہ سے حوادث کا تسلسل بھی قائم رہتا ہے چنانچہ لوگوں سے ملنا جلنا ،حسینوں کو دیکھنا،اپنی مرغوبات اور لذیذچیزوں کے پیچھے پڑنا حسّی حوادث کو قوی کرتا ہے اور تنہائی، سوچ اور فکر اور علم و دلائل میں نظررکھنا حوادث آخرت کو قوت دیتا ہے کہ اس کی وضاحت یوں ہوسکتی ہے کہ انسان جب گھر سے نکل کر بازاروں میں چلتا پھرتا ہے دنیا کی چمک دمک دیکھتا ہے اور پھر قبر ستان کی طرف سے گذرتا ہے اور کچھ فکر کرتا ہے اور سوچتا ہے دل میں رقت اور گداز محسوس کرتا ہے تووہ ان دونوں حالتوں میں واضح فرق محسو س کرتا ہے اور اس کا سبب یہی اسباب حوادث کے ساتھ تعلق اور جوڑ ہے، لہٰذا تجھے تنہائی اختیار کرنا،ذ کر کرنا، علم میں نظر رکھنا لازم و ضروری ہے کیونکہ خلوت میں تحفظ ہے یا کہئے خلوت پرہیز ہے، فکر و علم دوا ہیں اور دوا میل ملاقات کی بدپرہیزی کے ساتھ ساتھ نفع نہیں دیتی اورانسان میں یہ مخلوق کے ساتھ خلط ملط رکھنا چڑ پکڑچکا ہے اور ایسا ہی افعال ہیں اشتغال اور خلط بھی، لہٰذا اس کی دوا وہی ہے جو بیان کردی گئی ہے پھر بھی جب تولوگوں سے خلط رکھے گا اور خواہشات کے پیچھے بھاگے گا اور ارادہ دل کی اصلاح کا رکھے گا تو یہ ایک ناممکن ومحال کا ارادہ ہے۔

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor