Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

افادات اکابر۔ 670

 افادات اکابر

(شمارہ 670)

وحیِ آسمانی اور تعلیمات ِ نبویﷺ کا مرکزی نقطہ

خلاصہ یوں سمجھ لیجئے کہ حق تعالیٰ نے اس دنیا میں جہاں عقلاء و جکماء فلاسفہ و سائنسدان پیدا کئے ساتھ ہی ساتھ انبیاء و رسل کا سلسلہ بھی جاری فرمادیا تاکہ عقل کی طغیانی حد سے نہ بڑھ جائے، حضرت ادریس علیہ السلام کے عہد ہی سے حکماء وعقلا کا سلسلہ جاری ہوگیا۔ حضرت ادریس علیہ السلام کا عہد حضرت ابراہیم علیہ السلام سے بھی پہلے ہے اس لحاظ سے و ہ تاریخی دور سے بہت پہلے کی شخصیت ہیں تو گویا حکماء کا دور بھی اسی وقت سے شروع ہے اور کچھ بعید نہیں کہ انبیاء کرام علیہم السلام کی رہنمائی میں ابتدائً حکماء کام کرتے ہوں گے لیکن انبیاء کی رہنمائی سے استغنا کیا ہوگا، تو ٹھوکریں کھانا شروع کی ہوں گی فیثا غورث و بطلیموس، پھر وادی بابل و نینوی میں حکماء صائبین پھر ہندوستان میں ارجہد سے لے کر رویا دیونان کے سقراط و بقراط، افلاطون وارسطو، ابرخس و ارسطر اطیس وغیرہ وغیرہ سینکڑوںحکماء عالم کے گوشے گوشے میں پیداکئے تاکہ ملکوت کے مشاہدات سے کائنات کے اسرار کا انکشاف ہوتا رہے لیکن حیات بعد الممات کے حقائق کے ادراک سے یہ حکماء وعقلاء عاجز رہے اگرچہ یونان کے حکماء نے الہٰیات کی طرف بڑی توجہ دی لیکن ظاہر ہے کہ یہ حقائق عقل کے دائرئہ ادراک و امکان سے باہر تھیں اس لئے ٹھوکریں کھائیں اور ناکام رہے۔

(بصائر و عبرص،۴۲۴)

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor