Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

افادات اکابر۔ 619

 افادات اکابر

(شمارہ 619)

علم کی اقسام اور ان کے حصول کا راستہ

 علم دنیا میں دوراستوں سے آیا ہے: ایک علم الہٰی ہے جو بذریعہ وحی انبیاء کرام علیہم السلام کے توسط سے دنیا والوں کو پہنچا ہے، اس علم کی معلم اول خود حضرت حق سبحانہ و تعالیٰ شانہ کی ذاتِ گرامی صفات ہے اور اس کے اولین شاگرد حضرات انبیاء کرام علیہم السلام ہیں، اس مقدس سلسلہ تلامذہ میں پہلے شاگرد ابو البشرسیدنا آدم علیہ السلام ہیں جن کے علم و فضل کا لوہا ملائکہ مقربین تک نے مانا ہے اور اس لحاظ سے حضرت آدم علیہ السلام کے ذریعہ ہی اس علم الہٰی کا پہلا درس حظیرئہ قدس کی درسگاہ میں ملأ اعلیٰ کے فرشتوں کو ہی دیا گیا ہے۔یہ علم الہٰی وہ علم ہے جس کے ادراک و معرفت سے عقلِ انسانی قاصر و عاجز ہے۔ اس لئے کہ یہ حقائق الہٰیہ اور علوم غیبیہ عقل انسانی کی دسترس سے بالاتر اور وراء الوراء ( دور سے دورتر) ہیں۔ ارشاد ہے:

ولایحیطون بشیء من علمہ الابما شاء

(اور وہ( انسان) نہیں احاطہ کر سکتے اس کے علم کے کسی حصہ پر بھی بجز اس کے جو وہ خود( عطا فرمانا) چاہے)

 اور اس بماشاء کے استثناء کے تحت ان علوم کا جو حصہ انسانوں کو دیا گیا ہے وہ علم الا ولین و الآخرین (اگلوں اور پچھلوں سب کا علم) ہونے کے باوجود بھی’’قدرِ قلیل‘‘ گویا بحرزِ خار کے ایک قطرہ کا مصداق ہے، ارشاد ہے:

ومااوتیتم من العلم الا قلیلا(اور جو علم تم کو دیا گیا ہے وہ تو بہت ہی تھوڑا علم ہے)

(بصائر وعبر:ص۲۴۹)

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor