Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

افادات اکابر۔ 630

 افادات اکابر

(شمارہ 630)

علوم دینیہ کی اشاعت دُنیاوی ترقیات کے منافی نہیں

غرض اسلام مقصد کی تعیین، نیت کی تصحیح، نفوس کے تزکیہ کی اہم ترین ضرورت کو پورا کرتا اور مقدس ترین فرض کو انجام دیتا ہے تاکہ عمل خود بخود صحیح ہوجائے ، حاصل یہ ہے کہ نظامِ عالم کو برقرار رکھنے کے لئے دونوں قسم کے علوم ، عقلی اور نظری علوم ، دینی اور آسمانی علوم کا بقا اور تحفظ ضروری اور ناگزیر ہے ، عقلی اور صناعی علوم و فنون کے بقائ، تحفظ اور ارتقاء کی کفیل انسان کی نو بنو حوائج و ضروریات ہیں اور وہ خود انسان کو معاشی، اقتصادی، سیاسی اور حربی امور میں وقت اور زمانہ کے تقاضوں کے تحت نوبنو فنون و صنائع، ایجادات و اختراعات اور مصنوعات کو عدم سے وجود میں لانے پر مجبور کرتی رہیں گی، علوم دینیہ الہٰیہ کو دنیا میں لانے اور محفوظ رکھنے والے انبیاء علیہم السلام ہیں اور ان کے بعد ان انبیاء کے ورثاء یعنی حاملین علوم انبیاء علماء حق ہیں، اس لئے کہ انبیاء علیہم السلام دینار و درہم ، مال و متاع، جائداد و جاگیر ترکہ میں نہیں چھوڑتے بلکہ علوم نبوت کی وراثت چھوڑتے ہیں جو ان کے نقش قدم پرچلنے والے حاملینِ علوم نبوت یعنی ’’علماء دین‘‘ کے طبقہ میں قرناً بعد قرن ٍمنتقل ہوتی چلی آتی ہے اور نظامِ عالم کے توازن کو برقرار رکھتی ہے، خاص کر خاتم النبیین سیدالاولین و الآخرینﷺ کی امت کے علماء اور حاملین علوم کتاب و سنت کہ ان کے متعلق تو سرکارِ کائنات ﷺ کا ارشاد ہے:العلماء ورثۃ الا نبیاء اس حدیث کے پیش نظر علماء ِ امت کا کام وہی ہے جو انبیاء کا کام ہے۔

(بصائر و عبر:ص۲۵۷،۲۵۸)

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor