Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

معارف جہاد ۔ 660

معارف جہاد

مولانا محمد مسعود ازہر (شمارہ 660)

فرض کفایہ کا مقام

فرض ایک بہت بڑی اور بھاری چیز ہے، اس کے ساتھ کفایہ کا لفظ لگنے سے اس کی اہمیت کم یاہلکی نہیں ہوجاتی، بعض ناواقف لوگ فرض کفایہ کو سنت اور نفل سے بھی ہلکا سمجھتے ہیں، لیکن فرض تو ایک قطعی اور لازمی حکم ہوتا ہے اور اس کے ساتھ ’’کفایہ‘‘ کا لفظ لگنے کا مطلب یہ ہوتا ہے کہ مسلمانوں میں سے اتنے لوگ اس فرض کو ضرور ادا کریں کہ ’’کفایت‘‘ ہوجائے۔(فتح الجواد جلد۳:ص۱۳۹)

اگرجہادکاحکم نہ ہوتا تو!

اگر جہاد کا حکم نہ ہوتا تو ظالم کافر مسلمانوں کو ستاتے رہتے اور انہیں کفر اختیار کرنے پر مجبور کرتے۔

اگر جہاد کاحکم نہ ہوتا تو بہت سے افراد کی سمجھ میں اسلام نہ آتا۔

اگر جہاد کاحکم نہ ہوتا تو مکہ مکرمہ اورجزیرۃ العرب پر اسلام کی حکومت قائم نہ ہوتی۔

آپ صلی اﷲ علیہ وسلم کی اس امت پر خاص شفقت کہ آپ نے اﷲ تعالیٰ کے فرمانے پر اسے جہاد کا حکم دیا جس کی وجہ سے…ان پر سے ظلم اور تکلیفیں دور ہوئیںان کو دنیا آخرت کی بھلائیاں ملیں۔ملک فتح ہوئے اورقوموں کی قومیں مسلمان ہوئیںاور مسلمانوں نے جہاد کے ذریعہ آخرت کی کامیابی اور دنیا کی خلافت پالی۔(فتح الجواد جلد۳:ص۱۵۵)

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor