Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

معارف جہاد ۔ 668

معارف جہاد

مولانا محمد مسعود ازہر (شمارہ 668)

آسمان جہاد کاروشن ستارا

آجکل کے کئی دانشور ’’صلح حدیبیہ‘‘ کا حوالہ دیکر مسلمانوں کو جہاد سے روکتے ہیں۔ اور کافروں کے سامنے ذلت کے ساتھ رہنے کا مشورہ دیتے ہیں۔ کیا انہیں نظر نہیں آتا کہ واقعہ حدیبیہ تو جہاد کے آسمان پر چمکنے والا ایک روشن ستارہ ہے۔ صلح حدیبیہ سے پہلے بیعت رضوان ہے جو مرتے دم تک جہاد کرنے کی بیعت تھی اور صلح حدیبیہ کے بعد خیبر کا جہاد اور مکہ مکرمہ کی جہادی فتح ہے۔ وہ لوگ جنہوں نے جہاد کو بالکل بھلا رکھا ہے وہ کس منہ سے ’’صلح حدیبیہ‘‘ کی بات کرتے ہیں۔ صلح حدیبیہ تو اسلام کی عزت کا معاہدہ تھا جبکہ یہ لوگ غلامی کے ذلت ناک معاہدوں کو نعوذباﷲ صلح حدیبیہ سے تشبیہ دیتے ہیں۔ ایسے دانشوروں کو اﷲ تعالیٰ سے ڈرنا چاہیے۔(فتح الجواد جلد۴:ص۴۵/۴۶)

دشمنوں پرغلبہ کیسے ملے؟

مسلمان اگر چاہتے ہیں کہ انکی بخشش ہو، ان کے انفرادی اور اجتماعی گناہ معاف ہوں۔ ان کو نعمت اسلام پر مکمل عمل کرنے کی توفیق ملے اور ہدایت کاراستہ ان کے لئے آسان ہو اور ان کو اپنے دشمنوں پر غلبہ ملے تو وہ ’’جہاد فی سبیل اﷲ ‘‘ اور بیعت علی الجہاد کے عمل کو زندہ کریں۔ (فتح الجواد جلد۴:ص۵۵)

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor