Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

معارف جہاد ۔ 672

معارف جہاد

مولانا محمد مسعود ازہر (شمارہ 672)

شدت پسندی ایک فطری عمل ہے

انسان کی فطرت ہی ایسی ہے کہ کسی نہ کسی معاملہ میں وہ ضرور شدت اور تعصب اختیار کرتا ہے ۔ لوگوں کو دیکھ لیں کیسی فضول اور بے کار چیزوں پر شدت کرتے ہیں اور تعصب رکھتے ہیں۔ کوئی زبان پر، کوئی اپنے علاقے پر ،کوئی اپنی قوم پر اور کوئی اپنے خاندان پر۔حالانکہ ان میں سے کوئی بھی رشتہ بغیر ایمان کے قیامت کے دن کام آنے والا نہیں ہے، اس دن تو رشتہ دار ایک دوسرے سے بھاگیں گے اور گہرے دوست جنکی دوستی تقویٰ پر نہیں ہوگی ایک دوسرے کے دشمن بن جائیں گے ، اس دن صرف ایمان کام آئے گا تو جو چیز اصل زندگی میں کام آنے والی ہے انسان کو اپنی طبعی اور فطری شدت کا رخ اسی کی طرف موڑ لینا چاہیے۔ اﷲ تعالیٰ کے دشمنوں سے دشمنی رکھنی چاہیے ،رسول اﷲ صلی اﷲ علیہ وسلم کے دشمنوںسے دشمنی رکھنی چاہیے اور دین اسلام کے مخالفین سے دشمنی رکھنی چاہیے۔اس دشمنی کی برکت سے جہاں اور بہت سے انعامات ملتے ہیں وہاں ایک فائدہ یہ ہوتاہے کہ انسان کا ایک فطری تقاضا صحیح جگہ پر پورا ہوجاتا ہے اور یوں انسان کے اخلاق بہت عمدہ ہوجاتے ہیں۔ (فتح الجواد جلد۴:ص۲۵۸)

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor