Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

حضرت ابراہیم علیہ السلام (عہد زریں۔678)

حضرت ابراہیم علیہ السلام

عہد زریں (شمارہ 678)

حرم کعبہ پر سب سے پہلے جس نے غلاف چڑھایا وہ یمن کا حمیری بادشاہ اسعد تبع تھا۔نبی کریمﷺ کی عمر جب ۳۵ بر س تھی اور سیلاب سے کعبہ کی عمارت کو نقصان پہنچا تھا، قریش نے اسے گرا کر دوبارہ تعمیر کیا۔ عبداللہ بن زبیررضی اللہ عنہ خلیفہ ہوئے تو انہوں نے کعبہ کو ابراہیمی بنیادوں پر ازسر نوتعمیر کیا لیکن دس سال بعد ۷۴ھ میں حجاج بن یوسف نے پھر اسے قریش کی بنیادوں پر تعمیر کردیا۔ شعبان۱۰۳۹ھ میں موسلادھاربارش سے کعبہ زمین بوس ہوگیاتوعثمانی خلیفہ مراد چہارم نے اسے نئے سرے سے تعمیر کرایا، چنانچہ کعبہ کی موجودہ عمارت عثمانی تعمیر ہے، اس کی اونچائی۱۵میٹر،لمبائی تقریباً ۱۲ میٹر اور چوڑائی تقریباً ۱۱ میٹر ہے۔

 صفا اورمروہ:

یہ وہ دو پہاڑیاں ہیں جن کے درمیان حضرت اسمٰعیل علیہ السلام کی والدہ ہاجرہ علیہاالسلام پانی کی تلاش میںسعی( بھاگ دوڑ) کرتی رہی تھیں اور انہی کی یاد تازہ کرنے کے لیے حاجی ان دونوں کے درمیان سعی کرتے ہیں۔

٭…٭…٭

Ehad-e-Zareen Naqsha-678

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor