Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

حضرت نوح علیہ السلام (عہد زریں۔625)

حضرت نوح علیہ السلام

عہد زریں (شمارہ 625)

۳۔ وادیٔ رافدین میں پتھر اور پیتل کا مشترکہ دور: اس دور کی شہریت کے تین بڑے مرکز اس ترتیب سے تھے۔

٭ علاقۂ رافدین کے جنوب میں شہر قدیم ’’اُوْر‘‘ کے قریب تل العبید: اس مرکز کا انکشاف برطانوی عجائب گھر کے وفد نے کیا جن کی قیادت ڈاکٹر ہول کررہے تھے۔ پھر مشہور مؤرخ لیونارڈوولی نے تفتیش جاری رکھی۔ انہیں ’’اُور‘‘ کے مقام پر مٹی کی مورتیاں ملیں جو دینی مقاصد کے لئے بنائی گئی تھیں۔

٭ اوروک یعنی ورکاء کے زمانہ کی تہذیب: اس کا انکشاف ایک جرمن ٹیم نے کیا۔

٭ جمدۂ نصر کے دور کی تہذیب: اس دور کے آثار کا انکشاف آثار قدیمہ کے ایک ماہر لکنڈن نے ۱۹۲۰ء میں ایک چھوٹے سے ٹیلے میں کیا جو’’کیش‘‘ شہر کے قریب واقع ہے جسے قدیم دور میں جمدۂ نصر کہا جاتا تھا۔

تاریخی کتابوں کے مطابق اس دور کے آخر میں عظیم طوفان آیا جس نے دجلہ وفرات کے درمیانی علاقے کو لپیٹ میں لیا۔ اُور ، اوروک،کیش اور شورباک کے مقامات پر مختلف جگہوں کی کھدائی سے ثابت ہوا کہ دور عبید اور ابتدائی نسلِ انسانی کے دور کے مابین ایک بہت بڑا سیلاب آیا تھا۔ اسی طرح جمدۂ نصر کے آخری دور میں بھی ایک عظیم سیلاب آیا۔ آثار قدیمہ کے ایک ماہر لیونارڈوولی نے اُور شہر میں اڑھائی میٹر کی گہرائی میں چکنی مٹی کی موٹی موٹی تہوں کا انکشاف کیا۔ نیز اس (وولی) کو ان تہوں کے اوپر اور نیچے انسانی رہائش کے آثار بھی ملے۔ اس لیے اس نے اس سے نتیجہ نکالا کہ یہ چکنی مٹی دجلہ اور فرات کے سیلابی پانیوں سے بنی۔

٭…٭…٭

Ehad-e-Zareen Naqsha-625

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor