Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

حضرت ہود علیہ السلام (عہد زریں۔633)

حضرت ہود علیہ السلام

عہد زریں (شمارہ 633)

حضر موت والے کہتے ہیں کہ عاد اولیٰ کی ہلاکت کے بعد حضرت ہود علیہ السلام حضر موت کے علاقے میں رہنے لگے تھے حتی کہ وہیں فوت ہوئے اور انہیں مشرقی علاقے میں وادیٔ برہوت کے قریب تریم سے ۳۲ میل کے فاصلے پر دفن کیا گیا۔

 فلسطین کے علاقے میں بھی ایک قبر حضرت ہود علیہ السلام کی قبر کے نام سے مشہور ہے مگر اس کی نسبت حضرت ہود علیہ السلام کی طرف صحیح نہیں۔

ہود علیہ السلام اورقوم عاد کا مسکن احقاف

قوم عاد کو قرآن مجید میں( من بعد قوم نوح) یعنی قومِ نوح کے خلفاء میں شمار کیا گیا ہے۔ حضرت ہود علیہ السلام عاد کی سب سے معزز شاخ خلود کے ایک فرد تھے، عاد کا سلسلۂ نسب یوں ہے:

عاد بن عوص بن ارم بن سام بن نوح علیہ السلام

 یوں عاد بنو سام میں سے تھے۔

قوم ہود یا عاد، عرب کا ایک قدیم قبیلہ تھا۔ یہ اُمم سامیہ( سامی اقوام) کے صاحب قوت و اقتدار افراد تھے۔ تاریخ عرب کی قدیم اقوام کو عرب عاربہ(خالص عرب) یا عرب بائدہ(مٹ جانے والے عرب) کہتی ہے اور ان کے مختلف گروہوں کو عاد، ثمود، طسم اور جدے کے نام دیتی ہے۔ مستشرقین یورپ انہیں امم سامیہ کہتے ہیں۔ قرآن مجید میں حضرت ہود علیہ السلام کی قوم کو عاد اولیٰ کہا گیا ہے۔ عاد کا زمانہ تقریباً ساڑھے چھ ہزار قبل مسیح جانا جاتا ہے۔

 احقاف:عادِ اولی کا مسکن احقاف تھا جو جزیرئہ نمائے عرب کے جنوب میں ربع الخالی اور حضر موت کے درمیان واقع ہے۔

اس کے مشرق میں عمان ،مغرب میں یمن ،شمال میں ربع الخالی اور جنوب میں حضر موت ہے۔ بعض مؤرخین کے مطابق عاد اولیٰ، عرب کے بہترین حصے حضرموت اور یمن سے لے کر خلیج فارس اور عراق تک آباد ہوگئے تھے۔ ان کے معبود ان باطل بھی قوم نوح کی طرح و د، سواع، یغوث، یعوق اور نسر تھے۔ ابن عباس رضی اللہ عنہما کے مطابق ان کے ایک بت کانام صمود اور ایک نام ہتار بھی تھا۔

٭…٭…٭

Ehad-e-Zareen Naqsha-633

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor