Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

حضراتِ صحابۂ کرام رضی اللہ عنہم کی بہادری (تابندہ ستارے۔654)

حضراتِ صحابۂ کرام رضی اللہ عنہم کی بہادری

تابندہ ستارے ۔ حضرت مولانا محمدیوسفؒ کاندھلوی (شمارہ 654)

حضرت عروہ رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ رسول اللہﷺ کے صحابہ رضی اللہ عنہم نے غزوئہ یرموک کے دن حضرت زبیر رضی اللہ عنہ سے کہا:

کیا تم( کافروں پر) حملہ نہیں کرتے ہوتاکہ ہم بھی تمہارے ساتھ حملہ کریں؟حضرت زبیر رضی اللہ عنہ نے کہا:اگر میں نے حملہ کیا تو تم اپنی بات پوری نہیں کر سکوگے اور میرا ساتھ نہیں دے سکوگے۔ انہوں نے کہا کہ ہم ایسا  نہیں کریں گے(بلکہ آپ کا ساتھ دیں گے)چنانچہ حضرت زبیررضی اللہ عنہ نے کافروں پر اس زور سے حملہ کیا کہ ان کی صفوں کو چیرتے ہوئے دوسری طرف نکل گئے اور صحابہ میں سے کوئی بھی ان کے ساتھ نہ تھا۔پھر وہ اسی طرح دشمن کی صفوں کو چیرتے ہوئے واپس آئے تو کافروں نے ان کے گھوڑے کی لگام پکڑ کر اُن کے کندھے پر تلوار کے دوایسے وار کیے جو اُن کو جنگ بدر والے زخم کے دائیں بائیں لگے ۔ حضرت عروہ رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ میں چھوٹا تھا اور ان زخموں کے نشانات میں انگلیاں دے کر کھیلا کرتا تھا اور(غزوہ یرموک کے)اس دن حضرت عبداللہ بن زبیررضی اللہ عنہ بھی اُن کے ساتھ تھے اور ان کی عمر اس وقت دس سال تھی اور حضرت زبیررضی اللہ عنہ نے ان کو ایک گھوڑے پر سوار کرکے ایک آدمی کے سپرد کردیا تھا۔

’’البدایہ‘‘ میں اس جیسی روایت ہے جس میں یہ ہے کہ حضرات صحابہؓ دوبارہ وہی درخواست لے کر حضرت زبیررضی اللہ عنہ کے پاس آئے تو انہوں نے وہی کارنامہ کردکھایا جو پہلے دکھایا تھا۔

حضرت سعد بن ابی وقاص رضی اللہ عنہ کی بہادری

حضرت زہریؒ فرماتے ہیں کہ حضور اقدسﷺ نے حجاز کے علاقہ رابغ کی جانب ایک جماعت کو بھیجا جس میں حضرت سعد بن ابی وقاص رضی اللہ عنہ تھے۔ مشرکین مسلمانوں پر ٹوٹ پڑے۔اس دن حضرت سعد رضی اللہ عنہ نے اپنے تیروں سے مسلمانوں کی خوب حفاظت کی اور حضرت سعد رضی اللہ عنہ سب سے پہلے مسلمان ہیں جنہوں نے اللہ کے راستے میں تیر چلایا اور یہ اسلام کی سب سے پہلی جنگ تھی اور حضرت سعدرضی اللہ عنہ نے اپنے تیر چلانے کے بارے میں یہ اشعار کہے:

ألا ھل أتی رسول اللّٰہ انی

حمیت صحابتی بصدور نبلی

ذرا غور سے سنو! کیا حضورﷺ کو یہ بات پہنچ گئی ہے کہ میں نے اپنے تیروں کی نوک سے اپنے ساتھیوں کی حفاظت کی ہے؟

أذود بھاعدوّھم زیادا

بکل حزونۃ وبکل سہل

ہر سخت اور نرم زمین میں،میں نے مسلمانوں کے دشمنوں کو تیروں کے ذریعے خوب اچھی طرح بھگایا ہے۔

فما یعتد رام فی عدو

بسھم یارسول اللّٰہ قبلی

یارسول اللہ!کوئی بھی مسلمان مجھ سے پہلے دشمن پر تیر چلانے والا شمار نہیں کیا جاتا(کیونکہ میں نے سب سے پہلے تیر چلایا)

حضرت ابن شہابؒ فرماتے ہیں کہ حضرت سعد رضی اللہ عنہ نے غزوہ احد کے دن ایک تیر سے تین کافروں کو قتل کیا اور اس کی صورت یہ ہوئی کہ دشمن نے ان کی طرف تیر پھینکا انہوں نے وہ تیر کافروں پر چلایا اور ایک کو قتل کردیا۔کافروں نے وہ تیر پھر ان پرچلایا،انہوں نے اس تیر کولے کر کافروں پردوبارہ چلادیا اور ایک کافر کو قتل کردیا۔کافروں نے وہ تیر ان پر تیسری مرتبہ چلایا،انہوں نے پھر وہ تیر لے کر ان کافروں پر چلایا اور تیسرے کافر کو قتل کردیا۔حضرت سعدرضی اللہ عنہ کے اس کارنامے سے مسلمان بہت خوش ہوئے اور بڑے حیران ہوئے۔حضرت سعدرضی اللہ عنہ نے بتایا کہ یہ تیر مجھے حضورﷺنے دیا تھا۔(کافروں کی طرف سے آیا ہوا یہ تیر حضورﷺ نے ان کو پکڑایا ہوگا) راوی کہتے ہیں کہ(اس دن)حضورﷺ نے حضرت سعدرضی اللہ عنہ سے فرمایا تھا : میرے ماں باپ تم پر قربان ہوں۔

حضرت ابن مسعودرضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ غزوہ بدر کے دن حضرت سعدرضی اللہ عنہ حضورﷺ کے ساتھ کبھی سوار ہوکر لڑتے اور کبھی پیادہ،یا یہ مطلب ہے کہ وہ تھے تو پیادہ لیکن دوڑتے سوار کی طرح تھے۔

حضرت حمزہ بن عبدالمطلب رضی اللہ عنہ کی بہادری

حضرت حارث تمیمی رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ غزوہ بدر کے دن حضرت حمزہ بن عبدالمطلب رضی اللہ عنہ نے شتر مرغ کے پَر کی نشانی لگارکھی تھی۔ایک مشرک نے پوچھا کہ یہ شترمرغ کے پَر کی نشانی والا آدمی کون ہے؟لوگوں نے اسے بتایا کہ یہ حضرت حمزہ بن عبدالمطلب ہیں۔تواس مشرک نے کہا:یہی تو وہ آدمی ہے جنہوں نے ہمارے خلاف بڑے بڑے کارنامے کیے ہیں۔

حضرت عبدالرحمن بن عوف رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ اُمیہ بن خلف نے مجھ سے کہا: اے اللہ کے بندے! غزوہ بدر کے دن جس آدمی نے اپنے سینے پر شتر مرغ کے پَر کا نشان لگارکھا تھا وہ کون تھا؟ میں نے کہا: وہ رسول اللہ کے چچا حضرت حمزہ بن عبدالمطلب رضی اللہ عنہ تھے۔ اُمیہ نے کہا:انہوں نے ہی تو ہمارے خلاف بڑے بڑے کارنامے کررکھے ہیں۔

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor