Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

صحابۂ کرام رضی اللہ عنہم کا باہمی اتحادواتفاق (تابندہ ستارے۔683)

صحابۂ کرام رضی اللہ عنہم کا باہمی اتحادواتفاق

تابندہ ستارے ۔ حضرت مولانا محمدیوسفؒ کاندھلوی (شمارہ 683)

اللہ عزوجلّ کے علاوہ تم میں سے کوئی بھی( اس دنیا میں) باقی نہیں رہے گا۔ اللہ تعالیٰ نے(قرآن میں) فرمایا ہے:

’’وما محمد الارسول قد خلت من قبلہ الرسل‘‘(آل عمران:۱۴۴)

(اور محمد(ﷺ) نرے رسول ہی تو ہیں اور آپ سے پہلے اور بھی بہت سے رسول گزر چکے ہیں ،سوا گر آپ کا انتقال ہوجاوے یا آپ شہید ہی ہو جائیں تو کیا تم لوگ اُلٹے پھر جائو گے؟)

حضرت عمر رضی اللہ عنہ نے فرمایا:(میںاس آیت کو بالکل ہی بھول گیا تھا اور حضرت ابو بکررضی اللہ عنہ کے پڑھنے سے مجھے یہ یاد آئی اور مجھے ایسا لگا کہ جیسے) قرآن کی یہ آیت آج ہی نازل ہوئی ہے اور آج سے پہلے نازل نہیں ہوئی۔ اور اللہ تعالیٰ نے حضرت محمدﷺ سے فرمایا ہے:

انک میت وانھم میتون

آپ کو بھی مرنا ہے اور ان کو بھی مرنا ہے

اور اللہ تعالیٰ نے فرمایا ہے:

’’سب چیزیں فناہونے والی ہیں بجز اس کی ذات کے۔ اسی کی حکومت ہے( جس کا ظہورِ کامل قیامت میں ہے) اور اسی کے پاس تم سب کو جانا ہے ( پس سب کو ان کے کیے کی جزادے گا)‘‘

اور اللہ تعالیٰ کاارشاد ہے:

’’جتنے( ذی روح) روئے زمین پر موجود ہیں سب فنا ہوجائیں گے اور آپ کے پروردگار کی ذات جو کہ عظمت والی احسان والی ہے باقی رہ جائے گی۔‘‘

 اور اللہ تعالیٰ کاارشاد ہے:

’’ہر جان کو موت کامزہ چکھنا ہے اور تم کو پوری پاداش تمہاری قیامت کے روزملے گی۔‘‘

اور پھر حضرت ابو بکر نے فرمایا کہ اللہ تعالیٰ نے حضرت محمدﷺ کو اتنی عمر عطاء فرمائی اور ان کو اتنا عرصہ دنیا میں باقی رکھا کہ اس عرصہ میں آپﷺ نے اللہ کے دین کو قائم کردیا،  اللہ کے حکم کو غالب کردیا، اللہ کا پیغام پہنچادیا اور اللہ کے راستہ میں جہاد کیا۔ پھر آپﷺ کو اللہ تعالیٰ نے اسی حالت پر وفات دی اور حضورﷺ تمہیں ایک( صاف اور کھلے) راستے پر چھوڑ کر گئے ہیں۔اب جو بھی ہلاک ہوگا وہ اسلام کی واضح دلیلوں اور (کفرو شرک سے) شفا دینے والے قرآن کو دیکھ کر ہی ہلاک ہوگا۔ جس آدمی کے رب اللہ تعالیٰ ہیں تو اللہ تعالیٰ ہمیشہ زندہ ہیں جن پر موت نہیں آسکتی اور جو حضرت محمدﷺ کی عبادت کیاکرتا تھا اور ان کو معبودکا درجہ دیا کرتا تھا تو ( وہ سن لے کہ) اس کا معبود مرگیا۔

اے لوگو! اللہ سے ڈرو اور اپنے دین کو مضبوط پکڑو اور اپنے رب پر توکل کرو، کیونکہ اللہ تعالیٰ کا دین موجود ہے اور اللہ تعالیٰ کی بات پوری ہے اور جو اللہ( کے دین ) کی مدد کرے گا اللہ اس کی مدد فرمائیں گے اور اپنے دین کو عزت عطاء فرمائیں گے اور اللہ تعالیٰ کی کتاب ہمارے پاس ہے جو کہ نوراور شفا ہے، اسی کتاب کے ذریعہ اللہ تعالیٰ نے حضرت محمدﷺ کو ہدایت عطاء فرمائی اور اسی کتاب میں اللہ کی حلال اور حرام کردہ چیزیں مذکور ہیں۔ اللہ کی قسم! اللہ کی مخلوق میں سے جو بھی ہمارے اوپر لشکر لائے گا ہم اس کی کوئی پروانہیں کریں گے۔بے شک اللہ کی تلواریں ستی ہوئی ہیں ہم نے ان کو ابھی رکھا نہیں ہے اور جو ہماری مخالفت کرے گا ہم اس سے جہاد کریں گے جیسے کہ ہم حضورﷺ کے ساتھ ہو کر جہاد کیا کرتے تھے ۔ اب جو بھی زیادتی کرے گا وہ حقیقت میں اپنے اوپر ہی زیادتی کرنے والا ہے۔ پھر ان کے ساتھ مہاجرین حضورﷺ کی طرف( تکفین اور تدفین کے لیے) چلے گئے۔

حضرت انس رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ انہوں نے حضرت عمررضی اللہ عنہ کا وہ آخری خطبہ سنا جو انہوں نے منبر پر بیٹھ کر بیان فرمایا تھا۔ یہ حضورﷺ کی وفات سے اگلے دن کی بات ہے اور اس وقت حضرت ابو بکر رضی اللہ عنہ بالکل خاموش تھے اور کوئی بات نہ فرمارہے تھے۔ حضرت عمررضی اللہ عنہ نے فرمایا:

مجھے امید تھی کہ حضورﷺ اتنا زیادہ عرصہ زندہ رہیں گے کہ ہم دنیا سے چلے جائیں گے اور حضورﷺ ہمارے بعد تشریف لے جائیں گے( لیکن اللہ کو ایسا منظور نہیں تھا، اب) اگر حضرت محمدﷺ کاانتقال ہوگیا ہے تو (گھبرانے کی کوئی بات نہیں ہے) اللہ تعالیٰ نے تمہارے درمیان ایک نور( یعنی قرآن) باقی رکھا ہوا ہے جس کے ذریعہ سے تم ہدایت پا سکتے ہو اور اسی کے ذریعہ سے اللہ تعالیٰ نے حضرت محمدﷺ کو ہدایت نصیب فرمائی تھی اور (دوسری بات یہ ہے کہ) حضرت ابو بکررضی اللہ عنہ حضورﷺ کے (خاص) صحابی ہیں اور ( ان کی امتیازی صفت اور بڑی فضیلت یہ ہے کہ جب حضورﷺ ہجرت کی رات میں مکہ سے چل کر غارِ ثور میںچھپ گئے تھے تو اس وقت صرف ابو بکر رضی اللہ عنہ ہی حضورﷺ کے ساتھ جس کی وجہ سے قرآنِ مجید کے الفاظ کے مطابق ) یہ( ثانی اثنین) یعنی دو میں سے دوسرے ہیں۔ اور یہ تمہارے کاموں کے لیے تمام مسلمانوں میں سب سے زیادہ مناسب ہیں ،لہٰذا کھڑے ہو کر ان سے بیعت ہوجائو اور اس سے پہلے سقیفۂ بنی ساعدہ میں ایک جماعت حضرت ابو بکر رضی اللہ عنہ سے بیعت ہوچکی تھی اورعام مسلمانوں کی بیعت ( مسجد میں) منبر پر ہوئی۔(جاری ہے)

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor